ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جموں وکشمیر: 48 گھنٹے میں دوسرا بڑا حملہ، فوج نے پورے علاقے کو کردیا سیل

ملی ٹینٹ حملےکے بعد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔ اس دوران فوج نے پورے علاقےکو سیل کردیا ہے اورملی ٹینٹوں کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔ سی آر پی ایف نے تین اہلکاروں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔

  • Share this:
جموں وکشمیر: 48 گھنٹے میں دوسرا بڑا حملہ، فوج نے پورے علاقے کو کردیا سیل
جموں وکشمیر کے ہند واڑہ میں 48 گھنٹے کے اندر دوسرا بڑا حملہ، تین جوان شہید ہوگئے۔

کپواڑہ: جموں وکشمیر کے ہندواڑہ خوفناک حملے کے محض 24 گھنٹوں بعد وانگام کرالہ گنڈ ہندواڑہ میں آج دن دہاڑے ملی ٹینٹوں نے سی آر پی ایف کی ناکہ پارٹی پر اندھا دھند فائرنگ کی، جس کے نتیجے میں 3 سی آر پی ایف اہلکار مارے گئے ہیں جبکہ گولیوں کے تبادلے میں ایک عام شہری بھی مارا گیا ہے۔ تاہم ملی ٹینٹ حملےکے بعد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔ اس دوران فوج نے پورے علاقےکو سیل کردیا ہے اورملی ٹینٹوں کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔ سی آر پی ایف نے تین اہلکاروں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔ ٹھیک پونے سات بجے کے قریب کرالہ ہندواڑہ میں ملیٹنٹ اچانک نمودار ہوئے اور انہوں نے ناکے پر بیٹھے سی آر پی ایف اہلکاروں پر اچانک فائرنگ شروع کردی۔


فائرنگ اس قدر شدید تھی کہ سی آر پی ایف اہلکارکچھ سمجھ پاتےتب تک ملی ٹینٹوں کی اندھا دھند فائرنگ کی زد میں آکر تین سی آر پی ایف اہلکارخون میں لت پت ہو کر زمین پرگرپڑے تھے اور وہ موقع پرہی ہلاک ہوگئےجبکہ فائرنگ کی زد میں آنے والے ایک اور شخص کی لاش کو بھی جائے واردات پر دیکھا گیا۔ اس دوران گولی باری کی زد میں آکر ایک شہری بھی مارا گیا ہے، جس کی شناخت دیرشام گئے 15 سالہ محمد حازم ساکن کھئی پورہ قاضی آباد کے بطور ہوئی ہے۔ اس ضمن میں ڈپٹی کمشنر کپواڑہ انشل گرک نےنیوز 18 کے ساتھ بات کرتے ہوئے تصدیق کی ہے، کرالہ گنڈ ہندواڑہ میں جنگجوئیانہ حملے میں تین سی آر پی ایف اہلکار مارے گئے ہیں۔


ہندواڑہ کے ہی کرال گنڈ علاقے کے ونگم میں سیکورٹی اہلکاروں کے ایک قافلے پردہشت گردانہ حملہ میں تین سی آرپی ایف جوان شہید ہوگئے ہیں۔
ہندواڑہ کے ہی کرال گنڈ علاقے کے ونگم میں سیکورٹی اہلکاروں کے ایک قافلے پردہشت گردانہ حملہ میں تین سی آرپی ایف جوان شہید ہوگئے ہیں۔


تاہم ڈپٹی کمشنر کے مطابق جائے واردات پر ایک اور لاش بھی ملی ہے، جس کی شناخت دیرشام گئے ایک عام شہری کے بطورکی گئی ہے۔ واردات کی اطلاع ملتے ہی فورسزکی ایک بھاری تعداد جائے واردات کی جانب روانہ ہوگئی اور انہوں نے پورے علاقے کو سیل کردیا۔ اس دوران سی آر پی ایف کے ترجمان کے بیان میں تین سی آر پی ایف اہلکاروں کی ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے، جن کی سپاہی سنتوش مشرا، چندرا شیکھر اور اشونی کمار یادو کے طور پر ہوئی ہے۔

سی آر پی ایف نے لاشیں اپنی تحویل میں لےلی ہیں جبکہ مارے گئے نوجوان کوپوسٹ مارٹم کے لئے اسپتال منتقل کیا گیا ہے اور اس سلسلے میں پولیس نے بھی تحقیقات کا عمل شروع کر دیا ہے۔ واضح رہےکہ ہندواڑہ کے اس علاقے میں محض 48 گھنٹوں کے اندر اندر فورسزپرجنگجووں کا یہ دوسرا بڑا حملہ تھا۔ پہلےحملے میں راجوارجنگلات میں جنگجووں کے ایک حملے میں فوج کا میجر،کرنل، دو اہلکار اور ایک پولیس سب انسپکٹر مارے گئےجبکہ دوسرے حملے میں تین سی آر پی ایف اہلکار مارے گئے۔
First published: May 05, 2020 12:56 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading