ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

کورونا ویکسینیشن کا دوسرا دور جانے رجسٹریشن سے لےکر ویکسینیشن تک کا سارا عمل

ملک میں کورونا ویکسینیشن کا دوسرا مرحلہ پیر (یکم مارچ) سے شروع ہو رہا ہے۔ ویکسینیشن کے قطرے 60 سال سے زائد عمر کے افراد کے ساتھ ساتھ 45 سے 60 سال کی عمر کے افراد کو بھی دیئے جائیں گے، جو سنگین بیماریوں میں مبتلا ہیں۔

  • Share this:
کورونا ویکسینیشن کا دوسرا دور جانے رجسٹریشن سے  لےکر ویکسینیشن تک کا سارا عمل
کورونا ویکسینیشن کا دوسرا دور جانے رجسٹریشن سے لےکر ویکسینیشن تک کا سارا عمل

وسیم انصاری


ملک میں کورونا ویکسینیشن کا دوسرا مرحلہ پیر (یکم مارچ) سے شروع ہو رہا ہے۔ ویکسینیشن کے قطرے 60 سال سے زائد عمر کے افراد کے ساتھ ساتھ 45 سے 60 سال کی عمر کے افراد کو بھی دیئے جائیں گے، جو سنگین بیماریوں میں مبتلا ہیں۔ لوگ سرکاری اسپتالوں کے ساتھ ساتھ نجی اسپتالوں میں بھی کورونا ویکسین لگاسکیں گے۔ ایسی صورتحال میں، ویکسینیشن سے متعلق تمام سوالات آپ کے ذہن میں ہوں گے۔ اس خبر میں کورونا ویکسینیشن سے متعلق ہر سوال کا جواب جانئے۔

کورونا ویکسین کے لئے کیسے کریں رجسٹریشن؟


اندراج کے لئے، کوئن ایپ، آروگیہ سیتو ایپ کی مدد لی جاسکتی ہے۔ یا آپ cowin.gov.in پر بھی لاگ ان کرسکتے ہیں۔ یہاں آپ کو اپنا موبائل نمبر داخل کرنا ہوگا۔ موبائل پر ایک او ٹی پی (ون ٹائم پاس ورڈ) آئے گا۔ اس مدد سے ایک اکاؤنٹ بنائیں۔ پھر رجسٹریشن کرنے والے شخص کا نام، عمر، جنس کا اندراج کریں۔ شناخت کے لئے ثبوت لگائیں، اگر وہ شخص جو ویکسین کے لئے اندراج کروا رہا ہے، اس کی عمر 45 سال سے زیادہ ہے اور اسے کوئی اور بیماری ہے تو اسے بتانا ہوگا۔ اس کے لئے کامورڈیٹی پروف کا استعمال کرنا پڑے گا۔ کس دن اور کہاں لینا ہے، اس کے لئے، آپ خود تاریخ اور ویکسینیشن سینٹر کا انتخاب کریں۔ یہاں، ہم آپ کو بتائیں کہ ایک موبائل نمبر کے ساتھ چار افراد کا اندراج ہوسکتا ہے۔ مزید معلومات کے لئے 1507 پر فون کیا جاسکتا ہے۔
تین طریقوں سے کیا جاسکتاہے ہے رجسٹریشن

پہلا طریقہ خود رجسٹریشن ہے۔ آپ یکم مارچ (پیر) سے Co-WIN 2.0 اپلیکیشن ڈاؤن لوڈ کرکے یا آروگیہ سیتو ایپ کے ذریعہ اندراج کرا سکتے ہیں۔ ایپ میں سرکاری اور نجی کووڈ ویکسین مراکز دیکھے جائیں گے۔ اس میں، آپ کو نظام الاوقات اور دیگر اہم معلومات نظر آئیں گی۔ اس کے علاوہ، سائٹ پر رجسڑیشن کا مطلب یہ ہے کہ آپ ویکسین سینٹر جاکر اپنے آپ کو رجسٹر کرسکتے ہیں۔ یہ سہولت ان لوگوں کے لئے ہے، جن کے پاس اسمارٹ فون یا انٹرنیٹ کی سہولت موجود نہیں ہے، جو لوگ پیشگی رجسٹریشن نہیں کراسکتے تھے، انہیں بھی یہ سہولت ملے گی۔ اس کے علاوہ ریاستیں اور مرکزی وسائل بھی کچھ لوگوں کو ویکسینیشن کے لئے ریجسٹریشن کریں گے۔ ان میں وہ لوگ شامل ہوں گے، جن کی انتظامیہ ہی منتخب کرے گی۔ اس میں آشا، اے این ایم کارکنان، پنچایت راج کے نمائندے، خواتین کے خود مدد گروپ شامل ہوں گے۔

ویکسینیشن کے لئے لے جانے ھوں گے یہ کاغذات
اگر آپ ویکسین لینے جارہے ہیں تو، اپنی شناختی کارڈ لانا نہ بھولیں۔ شناختی کارڈ میں آدھارکارڈ، ووٹرکی شناخت وغیرہ لے سکتے ہیں۔ دراصل، آپ کو ایک آفیشل شناختی ثبوت دکھانا ہوگا، جس پر آپ کی تصویر کے ساتھ آپ کی تاریخ پیدائش بھی لکھی ہوئی ہوگی۔ اس کے علاوہ، 45 سال سے زیادہ عمر اور 60 سال سے کم عمر افراد کو ویکسین کی خوراک لینے کے لئے سنگین بیماری میں مبتلا ہونے کا ثبوت دکھانا ہوگا۔ ویکسین کی پہلی خوراک اور دوسری خوراک (آخری خوراک) حاصل کرنے کے بعد، مستفید افراد کے لئے ایک QR کوڈ تیارکیا جائے گا۔ اسے ایس ایم ایس لنک کے ذریعہ ڈاؤن لوڈ کیا جاسکتا ہے۔ کورونا ویکسین کی خوراک لینے کا سرٹیفکیٹ بھی ویکسینیشن سنٹر سے لیا جاسکتا ہے۔
ویکسین کے لئے کتنے پیسے دینے ہوں گے؟

ہمیں بتائیں کہ ویکسین کی خوراک سرکاری ویکسین مراکز میں مفت دستیاب ہوگی۔ تاہم، نجی اسپتالوں کو اس ویکسین کی قیمت ادا کرنا ہوگی۔ ویکسین کی ایک خوراک کے لئے 250-250 روپئے لئے جائیں گے، جس میں 150 روپئے بطور ویکسین اور 100 روپے بطور سروس چارج دیئے جائیں گے۔ کورونا ویکسین کی دو خوراک لینا پڑتی ہیں۔ یعنی، نجی اسپتالوں میں کورونا ویکسین لگانے میں 500 روپئے لاگت آئے گی۔ جبکہ سرکاری اسپتالوں میں کورونا ویکسین مفت دی جائے گی۔
كتنی عُمر والوں کو لگائی جائے گی ویکسین؟

جیسا کہ ہم نے بتایا کہ ویکسینیشن کے دوسرے مرحلے میں، 60 سال سے زیادہ عمرکے لوگوں کو قطرے پلائے جائیں گے۔ 45 سال سے 60 سال کی عمر کے لوگوں کو بھی ویکسین کی خوراک دی جائے گی، لیکن اس عمر گروپ کے لوگوں کو یہ ویکسین مل جائے گی، جو پہلے ہی کسی سنگین بیماری میں مبتلا ہیں۔ حکومت نے شدید بیماری کی فہرست بھی جاری کردی ہے۔ تشویشناک ڈاکٹر کے سرٹیفیکیٹ کی ضرورت ہوگی۔ مرکز نے اس سرٹیفکیٹ کا فارمیٹ بھی جاری کیا ہے۔

کن بیماریوں کا دیکھانا ہوگا ثبوت؟

آپ کو بتادیں کہ 45 سے 59 سال کے لوگوں کو بھی قطرے پلانے کیلئے بیماری کا سرٹیفکیٹ دینا ہوگا۔ مرکزی وزارت صحت نے 20 بیماریوں کی فہرست جاری کی ہے ، جن میں ذیابیطس (شوگر) ، ہائی بلڈ پریشر ، لیوکیمیا بون میرو ، گردے ، جگر اور دل سے متعلق امراض شامل ہیں۔ کینسر میں مبتلا افراد کو بھی اس میں شامل کیا گیا ہے۔

ویکسین کا دوسرا ڈوز کب؟

ویکسین کی دوسری خوراک پہلی دن لینے کے 28 دن بعد ہوگی۔ اگر آپ 28 دن گزرنے کے بعد ویکسین لینا بھول جاتے ہیں، تو پھر ماہرین صحت نے اس کے بارے میں مشورہ دیا ہے، جس کے مطابق، ویکسین کی دوسری خوراک کا بہترین جواب 4 ہفتوں کے بعد آتا ہے۔ تاہم، اگر کسی وجہ سے ٹھیک 4 ہفتوں کے بعد ویکسین کی ایک دوسری خوراک نہیں دی جاتی ہے، تو پھر اسے اگلے دن دیا جاسکتا ہے۔ اس معاملے میں قومی ہدایت نامہ پر عمل پیرا ہونا چاہئے۔ 4 ہفتوں کے بعد، 1 ہفتہ کے اندر کم ازکم ایک خوراک لی جانی چاہئے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Mar 01, 2021 09:56 PM IST