راجستھان میں گئو کشی کی خبر کے بعد کشیدگی، چورو میں درجنوں دکانیں جلائی گئیں، دفعہ 144 نافذ

راجستھان کے چورو شہر میں جمعرات کو گئو کشی کی خبر کے بعد تشدد بھڑک اٹھا ہے ۔ دیر رات تک شہر میں ایک درجن سے زائد دکانوں میں آگ لگا دی گئی اور بس اور ٹرک نذر آتش کر دیئے گئے۔

Aug 28, 2015 12:32 PM IST | Updated on: Aug 28, 2015 02:12 PM IST
راجستھان میں گئو کشی کی خبر کے بعد کشیدگی، چورو میں درجنوں دکانیں جلائی گئیں، دفعہ 144 نافذ

چورو : راجستھان کے چورو شہر میں جمعرات کو گئو کشی کی خبر کے بعد تشدد بھڑک اٹھا ہے ۔ دیر رات تک شہر میں ایک درجن سے زائد دکانوں میں آگ لگا دی گئی اور بس اور ٹرک نذر آتش کر دیئے گئے۔ریاستی وزیر راجندر راٹھور کے آبائی شہر میں اس پرتشدد ماحول کے بعد دفعہ144 نافذ کردیا گیا ہے ، لیکن ماحول اب بھی کشیدہ ہے۔

پولیس ذرائع نے  بتایا کہ  لوگوں نے واٹس ایپ کے ذریعہ ایک دوسرے کو اشتعال انگیز پیغامات بھیجے جس سے تناؤ پھیل گیا۔ اس کے بعد کافی تعداد میں لوگ جمع ہوگئے اور ایک ٹرک اور سبزی منڈی میں کچھ دکانوں کو آگ لگا دی اور جم کر ہنگامہ کیا۔

ذرائع نے بتایا کہ مشتعل لوگ پولیس سے بھی الجھ پڑے اور پولیس جوانوں پر پتھراؤ کیا جنہیں منتشر کرنے کیلئے پولیس نے لاٹھی چارج کا سہارا لے کر صورتحال کو قابو میں کیا۔ شہر میں دفعہ 144 نافذ کردی گئی ہے۔ اسکول اور بازار بند ہیں۔ صورتحال کشیدہ مگر قابو میں بتائے جا رہے ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ چورو میں ایک گھر میں گائے کی کچھ باقیات ملنے کی خبر کے بعد جمعرات کی رات کو پیدا ہوئے تنازعہ نے پورے شہر کو اپنی زد میں لےلیا ۔ شرپسند عناضر پورے شہر میں جم کر ہنگامہ مچارہے ہیں ۔ مشتعل لوگوں نے پرانے بس اسٹینڈ پر تقریبا ایک درجن گمتیوں کو آگ کے حوالے کر دیا جبکہ پٹرول پمپ کے پاس کھڑی ایک پرائیویٹ بس اور ایک ٹرک کو بھی نذر آتش کردیا ۔ علاوہ ازیں مارکیٹ میں کھڑی دیگر گاڑیوں پر بھی پتھراؤ کر کے انہیں نقصان پہنچا یا ۔ پورا شہر دہشت کے سائے میں ہے۔

Loading...

پولیس بنی تماشہ بیں

پولیس کی آنکھوں کے سامنےشرپسند عناصر ہنگامہ آرائی کرتے رہے اور توڑ پھوڑ کی وارداتوں کو انجام دیتے رہے مگر پولیس نے کوئی کاررائی نہیں اوروہ صرف تماشہ بینوں کی طرح دیکھتی رہی ۔ یہی نہیں پولیس کے اعلی حکام کی موجودگی میں بھی شرپسندوں نے فساد مچایا ۔

آگ کی طرح پھیلی خبر

سوشیل میڈیا کے ذریعے یہ خبر آگ کی طرح چاروں طرف پھیل گئی ۔سوشیل میڈیا میں خبر آنے کے بعد آس پاس کے علاقوں سے بھی لوگ بازاروں میں جمع ہونے لگے اور دیکھتے ہی دیکھتے حالات بگڑ گئے اور مجمع بے قابو ہو گیا ۔ جب تک پولیس کچھ سمجھ پاتی اس سے پہلے ہی حالات بے قابو ہو چکے تھے اور ہجوم دکانوں اور گاڑیوں کو نذر آتش کرنے لگے ۔

دفعہ 144 نافذ

صورت حال کی سنگینی کےپیش نظر پورے چورو شہر میں دفعہ 144 نافذ کر دیا گیا ہے ۔ ضلع کلکٹر ارچنا سنگھ نے دفعہ 144 نافذ کرنے کے ساتھ ساتھ اسکولوں میں چھٹی کا اعلان کر دیا ہے۔ وہیں تاجروں نے بازار بند کا اعلان کیا ہے۔

ریاستی وزیر راجندر راٹھور چوروپہنچے

جمعہ کی صبح صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے ریاستی وزیر راجندر راٹھور چور و پہنچے اور پولیس اور متعلقہ حکام سے صورتحال کا جائزہ لیا ۔ راٹھور نے لوگوں سے امن برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے ۔

Loading...