ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

شاہین باغ میں آج بھی دفعہ 144نافذ:پورے علاقے میں اب بھی فورس تعینات

پولیس افسران نے بتایاکہ شمال مشرقی ضلع میں پُرتشدد بھیڑکو دیکھتے ہوئے شاہین باغ میں احتیاطاً دفعہ144 نافذ کردی گئی ہے۔

  • Share this:

شاہین باع بھی علاقےمیں دفعہ144 نافذ ہے۔پورےعلاقےمیں کل سےبھاری تعدادمیں سکیورٹی اہلکارتعینات ہیں۔پولیس انتظامیہ مظاہرین کوہٹانےکےتعلق سےپرعزم ہے۔دھرنےکےتعلق سےسپریم کورٹ میں مذاکرات کاروں کی ٹیم نے مہر بند لفافےمیں رپورٹ داخل کردی ہے۔اس سےپہلےوجاہت حبیب اللہ نےکورٹ میں حلف نامہ داخل کیاتھا۔جس میں دھرنےکوپرامن بتایاتھا۔


اتوار کی شام دارالحکومت کے چار اضلاع اور ان کے آس پاس کے علاقوں میں تشدد کی افواہ پھیلنے سے لوگوں میں افراتفری مچ گئی ، جس کے بعد دہلی پولیس کو واضح کرنا پڑا کہ حالات پرامن ہیں۔ اس دوران تشدد کی افواہوں کے پیش نظر سیکورٹی وجوہات سے ڈی ایم آر سی نے اپنے کچھ میٹرو اسٹیشنوں بند کر دیئے۔ اگرچہ کچھ دیر بعد سبھی اسٹیشنوں کو کھول دیا گیا۔بعد میں افواہ پھیلنے والے مشتبہ افراد کو حراست میں لیکر پوچھ تاچھ شروع کردی ہے۔


 شاہین باغ کےمظاہرین
شاہین باغ کےمظاہرین


شاہین باغ معاملے میں دہلی پولیس کےجوائنٹ کمشنرڈی سی شریواستو نےکہا کہ احتیاط کے طورپربڑی تعداد میں پولیس اہلکاروں کی تعیناتی کی گئی ہے۔ پولیس کا مقصد ہےکہ امن وامان اورلاء اینڈ آرڈر برقرار رہے۔ کسی بھی طرح کی ناگہانی حادثہ کےلئے پولیس نے یہ تیاریاں کی ہیں۔ دراصل، ہندو سینا نےیکم مارچ کو شاہین باغ میں احتجاجی مظاہرہ کا اعلان کیا تھا۔ کئی اور چھوٹی تنظیموں نےاس کا اعلان کیا تھا۔ پولیس نےبتایا کہ اس اعلان کےبعد انہوں نے ہندو سینا سمیت دیگر متعلقہ تنظیموں سے اس بابت بات چیت کرکے انہیں احتجاجی مظاہرہ نہ کرنےکےلئے راضی کرلیا ہے۔ پولیس افسران نے بتایاکہ شمال مشرقی ضلع میں پُرتشدد بھیڑکو دیکھتے ہوئے شاہین باغ میں احتیاطاً دفعہ144 نافذ کردی گئی ہے۔

یاد رہےکہ شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) اور این آرسی کی مخالفت میں ملک کی راجدھانی دہلی کے شاہین باغ علاقے میں دو ماہ سے بھی زیادہ وقت سےلوگ احتجاجی مظاہرہ کر رہے ہیں۔ اس درمیان، ہندو سینا نےشاہین باغ میں جوابی احتجاجی مظاہرہ کا اعلان کیا تھا۔ حالانکہ، ہندو سینا نے29 فروری کو اس اعلان کو واپس لےلیا تھا۔ اس کےباوجود دہلی پولیس کی جانب سے احتیاطاً علاقے میں پورےدن کےلئےدفعہ 144 نافذکردی گئی ہے۔ تاکہ ایک جگہ زیادہ لوگ جمع نہ ہوسکیں۔ واضح رہےکہ شمال مشرقی دہلی میں فسادات کےخلاف شاہین باغ کےمظاہرین نے یکم مارچ کو ہی امن مارچ نکالنےکا اعلان کیا تھا۔
First published: Mar 02, 2020 10:47 AM IST