ہوم » نیوز » وطن نامہ

لکشایپ ایڈمنسٹریٹر پرفل پٹیل کو‘بائیو ہتھیار‘کہنے پر لکشایپ کی جہدکارعائشہ سلطانہ کےخلاف ملک سے بغاوت کا مقدمہ درج

لکشادیپ ساہتیہ پرورٹھاکا سنگم (Lakshadweep Sahitya Pravarthaka Sangam) نے عائشہ کی حمایت کی۔ انہوں نے کہا کہ اسے ملک دشمن قرار دینا مناسب نہیں ہے۔ اس نے منتظم کے غیر انسانی سلوک کے خلاف اپنا رد عمل ظاہر کیا تھا۔ یہ پٹیل کی مداخلت تھی جس نے لکشادیپ کو کووڈ سے متاثرہ علاقہ بنا دیا۔ تنظیم کے ترجمان کے بہیر نے کہا لکشادیپ میں تمام لوگ عائشہ کی حمایت کریں گے۔

  • Share this:
لکشایپ ایڈمنسٹریٹر پرفل پٹیل کو‘بائیو ہتھیار‘کہنے پر لکشایپ کی جہدکارعائشہ سلطانہ کےخلاف ملک سے بغاوت کا مقدمہ درج
اداکارہ اورمہشور جہدکارعائشہ سلطانہ

لکشایپ پولیس نے جمعرات کے روز مقامی شہری،اداکارہ اورمہشور سماجی جہدکارعائشہ سلطانہ (Aisha Sultana) کے خلاف یونین ٹیریٹری کے ایڈمنسٹریٹر پرفل کے پٹیل (Praful K Patel) کو ’’بائیو ہتھیار‘‘ کہنے پر ملک سے غداری کا مقدمہ درج کیا ہے۔یہ کیس بی جے پی کے لکشایپ یونٹ کے صدر سی عبد القادر حاجی (C Abdul Khader Haji) کی آئی پی سی (سیڈیشن) کی دفعہ 124 اے کے تحت کی گئی شکایت کی بنیاد پر تھانہ کیوراتی میں درج کیا گیا ہے۔


سی عبد القادر حاجی (C Abdul Khader Haji) کی شکایت میں لکشادیپ میں جاری متنازعہ اصلاحات کے بارے میں ملیالم چینل ‘میڈیا ون ٹی وی’ (MediaOne TV) پر حالیہ بحث کا حوالہ دیا گیا ہے ، جس میں عائشہ نے یہ ارادہ کیا تھا کہ مرکز ان جزیروں پر ’بائیو ہتھیار‘ (bio-weapon) کے طور پر پرفل پٹیل کو استعمال کررہا ہے۔ ان تبصروں نے بی جے پی کی لکشادیپ یونٹ کی طرف سے احتجاج کو جنم دیا ۔ بی جے پی کارکنان نے بھی عائشہ کے خلاف کیرالا میں شکایات کی تھیں۔عائشہ اصلاحات اور مجوزہ قانون سازی کے خلاف مہموں میں سرفہرست رہی ہے، جس نے لکشادیپ اور کیرالہ میں زبردست احتجاج کو جنم دیا ہے۔


منتظم کے بارے میں اپنے متنازعہ حوالہ کا جواز پیش کرتے ہوئے عائشہ نے فیس بک پر پوسٹ کیا کہ ’’میں نے ٹی وی چینل کی بحث میں بائیو ہتھیار کا لفظ استعمال کیا تھا۔ میں نے پٹیل اور ان کی پالیسیوں کو بائیو ہتھیار کہا ہے۔ پٹیل اور ان کی پالیسیوں کی وجہ سے ہی کووڈ۔19 لکشادیپ میں پھیل گیا۔ میں نے پٹیل کا مقابلہ بائیو ویپن سے کیا ہے۔ آپ کو سمجھنا چاہئے۔ میں اسے اور کیا کہوں…؟‘‘


جمعرات کو لکشادیپ ساہتیہ پرورٹھاکا سنگم (Lakshadweep Sahitya Pravarthaka Sangam) نے عائشہ کی حمایت کی۔ انہوں نے کہا کہ اسے ملک دشمن قرار دینا مناسب نہیں ہے۔ اس نے منتظم کے غیر انسانی سلوک کے خلاف اپنا رد عمل ظاہر کیا تھا۔ یہ پٹیل کی مداخلت تھی جس نے لکشادیپ کو کووڈ سے متاثرہ علاقہ بنا دیا۔ تنظیم کے ترجمان کے بہیر نے کہا لکشادیپ میں تمام لوگ عائشہ کی حمایت کریں گے۔

جب کہ یو ٹی انتظامیہ نے کہا ہے کہ پٹیل کی متنازعہ تجاویز کا مقصد مالدیپ کے مترادف جزیروں کو سیاحتی مقام کے طور پر فروغ دینے کے ساتھ ساتھ رہائشیوں کی حفاظت اور فلاح و بہبود کو یقینی بنانا ہے ، رہائشی انہیں جزیروں کے معاشرتی اور ثقافتی تانے بانے کو نقصان پہنچتے ہوئے دیکھتے ہیں۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jun 11, 2021 12:26 PM IST