سپریم کورٹ سے نہیں ملی راحت، پی چدمبرم کی رہائش گاہ پر پہنچی سی بی آئی کی ٹیم

Aug 20, 2019 06:35 PM IST | Updated on: Aug 20, 2019 07:16 PM IST
سپریم کورٹ سے نہیں ملی راحت، پی چدمبرم کی رہائش گاہ پر پہنچی سی بی آئی کی ٹیم

سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم پر لٹکی گرفتار کی تلوار: نیوز 18

آئی این ایکس معاملے میں  بدعنوانی کےالزام اورمنی لانڈرنگ معاملے میں ملزم سابق مرکزی وزیرداخلہ اورکانگریس کے سینئرلیڈر پی چدمبرم کی پیشگی ضمانت کی عرضی پر سپریم کورٹ نے فوری سماعت کرنے سے انکار کردیا ہے۔ اس کے بعد سی بی آئی کی ٹیم چدمبرم کی رہائش گاہ پر پہنچ گئی ہے۔ میڈیا میں آنے والی خبروں کے مطابق 6 رکنی سی بی آئی کی ٹیم چدمبرم کے جورباغ واقع رہائش گاہ پرپہنچ گئی ہے۔ اس طرح سے انہیں گرفتارکیا جاسکتا ہے۔

سپریم کورٹ میں فوری سماعت نہ ہونے سے پی چدمبرم پرگرفتاری کی تلوارلٹک گئی ہے۔ وہیں اب چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی بینچ بدھ کواس معاملے میں سماعت کرے گی۔ اب دہلی ہائی کورٹ کے ذریعہ پی چدمبرم کی عرضی مسترد کئے جانے کے کچھ ہی گھنٹے بعد ان کی گرفتاری کے امکانات میں اضافہ ہوگیا ہے۔ سینئروکیل کپل سبل نے پی چدمبرم سے ملاقات کرنے اوردہلی ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد حالات پرغوروخوض کرنے کے بعد سپریم کورٹ میں عرضی داخل کی۔ سینئروکیل سلمان خورشید اورابھیشیک منو سنگھوی بھی سپریم کورٹ میں بحث کے لئے شامل ہوئے تھے۔ اب بدھ کو چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی بینچ کے ذریعہ عرضی پرسماعت کی جائے گی۔

Loading...

اس سے قبل سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم کو منگل کے ہی روزدہلی ہائی کورٹ سے بڑا دھچکا لگا، جب عدالت نے آئی این ایکس معاملے میں ان کی پیشگی ضمانت کی عرضی مسترد کردی۔ عدالت نےچدمبرم کواس معاملے میں گذشتہ سال 25 جولائی کو گرفتاری سے بچنے کےلئےعبوری راحت دی تھی۔عدالت نے اس میں کئی مرتبہ توسیع بھی کی تھی۔

چدمبرم ساڑھے تین ہزار کروڑ روپئے کے ایرسیل میکسس سودے اورآئی این ایس میڈیا کے تین سو پانچ کروڑروپئے سے متعلق معاملات میں مختلف تفتیشی ایجنسیوں کے نشانے پرہیں۔ یہ سودے اس وقت کے ہیں جب وہ یو پی اے حکومت میں وزیرخزانہ تھے اورغیرملکی سرمایہ کاری پروموشن بورڈ (ایف آئی پی بی) کےتحت ان سودوں کی منظوری دی تھی۔

Loading...