ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ: قتل کی سنسنی خیز واردات کا انکشاف، جہیز کے لالچی شوہر نے بیوی کا قتل کر خالی پلاٹ میں چھپائی لاش

معاملہ میرٹھ کے سرور پور تھانہ علاقے کے جین پور گاؤں کا ہے، گاؤں کے رہنے والے محمد عامر سے ڈھائی سال پہلے دہلی کی رہنے والی سمرن نے کورٹ میرج کی تھی۔ لڑکی کے اہل خانہ کے مطابق، شادی کے کچھ وقت بعد سے ہی عامر نے اپنی بیوی پر جہیز کے لیے دباؤ بنانا شروع کر دیا اور جان سے مارنے کی دھمکی دینے لگا۔

  • Share this:
میرٹھ: قتل کی سنسنی خیز واردات کا انکشاف، جہیز کے لالچی شوہر نے بیوی کا قتل کر خالی پلاٹ میں چھپائی لاش
میرٹھ: قتل کی سنسنی خیز واردات کا انکشاف، جہیز کے لالچی شوہر نے بیوی کا قتل کر خالی پلاٹ میں چھپائی لاش

میرٹھ: اترپردیش کے میرٹھ میں قتل کی ایک اور واردات کا سنسنی خیز معاملہ سامنے آیا ہے، جہاں جہیز میں اسکارپیو گاڑی کی خواہش رکھنے والے ایک شخص نے اپنی بیوی کے قتل کرکے اس کی لاش کو ایک پلاٹ میں دبا کر چھپا دیا تھا، لیکن چار روز سے غائب لڑکی کے اہل خانہ نے جب لڑکی کے ساتھ کسی انہونی کے پیش آنے کا شک ظاہر کرتے ہوئے پولیس میں شکایت کی تو قتل کی اس دل دہلا دینے والی واردات کا انکشاف ہوا۔


معاملہ میرٹھ کے سرور پور تھانہ علاقے کے جین پور گاؤں کا ہے، گاؤں کے رہنے والے محمد عامر سے ڈھائی سال پہلے دہلی کی رہنے والی سمرن نے کورٹ میرج کی تھی۔ لڑکی کے اہل خانہ کے مطابق، شادی کے کچھ وقت بعد سے ہی عامر نے اپنی بیوی پر جہیز کے لیے دباؤ بنانا شروع کر دیا اور جان سے مارنے کی دھمکی دینے لگا۔ مقتول سمرن کی والدہ کا کہنا ہے کہ ڈھائی برس پہلے سمرن اور محمد عامر نے لو میریج کی تھی۔ عامر پہلے دہلی میں ہی رہا، لیکن کچھ وقت پہلے آکر سرور پور کے ہرّہ گاؤں میں رہنے لگا۔ جہیز کے مطالبے کو لے کر محمد عامر، سمرن کو پریشان کرنے لگا تھا اور طعنہ دینے لگا تھا، لڑائی جھگڑے کی وجہ سے دونوں کے تعلقات بھی خراب تھے۔


اطلاعات کے مطابق گزشتہ 25 نومبر کو جب سمرن کے اہل خانہ نے سمرن سے رابطہ کرنے کی کوشش کی تو دونوں کا فون بند ہونے سےگھر والوں نے کسی انہونی کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے پولیس میں رپورٹ کی۔ پولیس نے معاملہ درج کرنے کے بعد سمرن کے شوہر کو حراست میں لے کر پوچھ گچھ کی تو قتل کی اس واردات کا انکشاف ہوا۔ پولیس نے محمد عامر کی نشان دہی پر پلاٹ میں دبا کر چھپائی گئی لاش کو برآمد کر لیا ہے اور دیگر ملزمین کی تلاش کر رہی ہے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 30, 2020 11:59 PM IST