سیکس ورکرس ریڈ لائٹ ایریا چھوڑ کر جانے کو مجبور، یہ ہے وجہ: جانیں یہاں

نیوز ایجنسی اے این آئی کی خبر کے مطابق سوشل ایکٹوٹیز انٹریگیشن(ایس اے آئی) این جی او کے ڈائریکٹر ونے وتس نے بتایا، 'کماٹھی پورا اور فالک لینڈ کی سیکس ورکرس کی کمائی کم ہے۔

Aug 17, 2019 03:25 PM IST | Updated on: Aug 17, 2019 03:25 PM IST
سیکس ورکرس ریڈ لائٹ ایریا چھوڑ کر جانے کو مجبور، یہ ہے وجہ: جانیں یہاں

علامتی تصویر

ممبئی میں واقع کماٹھی پورہ ریڈ لائٹ ایریا کی سیکس ورکرس اس جگہ کو چھوڑ کر جارہی ہیں۔ ریئل اسٹیٹ کی بڑھتی قیمتوں نے انہیں اس علاقے کو چھوڑنے پر مجبور کردیا ہے۔ ایک این جی او کے ڈائریکٹر نے بتایا کہ کماٹھی پورہ کی سیکس ورکرس اب مہانگر کے علاقوں میں شفٹ ہورہی ہیں۔

نیوز ایجنسی اے این آئی کی خبر کے مطابق سوشل ایکٹوٹیز انٹریگیشن(ایس اے آئی)  این جی او کے ڈائریکٹر ونے وتس نے بتایا، 'کماٹھی پورا اور فالک لینڈ کی سیکس ورکرس کی کمائی کم ہے۔ یہ حقیقت ہے کہ ریئل اسٹیٹ کا اثر ان پر پڑ رہا ہے اور یہ لوگ یہاں سے دوسری جگہ جارہے ہیں۔ اس وجہ سے کئی کوٹھے بند ہورہے ہیں۔ کئی بہنیں یہاں کا بڑھا ہوا کرایہ (رینٹ) نہیں چکا پا رہی ہیں اس لئے وہ نالا سوپارا، تربھے اور واشی میں شفٹ ہو گئی ہیں'۔

ونے نے بتایا کہ وہ سیکس ورکروں کے ساتھ 90 کی دہائی سے کام کر رہے ہیں۔ یہاں (کماٹھی پورہ) گزشتہ  20 سالوں میں کرایہ میں بے تحاشا اضافہ کیا گیا ہے۔ اس وقت 25 روپئے کرایہ تھا لیکن آج کم سے کم 200 روپئے ہے اور مہینے بھر کا کرایہ 10 سے 15 ہزار تک پہنچ جاتا ہے۔

آرتی نام کی ایک سیکس ورکر نے کماٹھی پورہ کی پریشانیوں اور ونے وتس کی باتوں پر اپنا اتفاق ظاہر کیا ہے۔ آرتی نے کہا کہ 'میں تھانے کے ایک علاقے سے کماٹھی پورہ آتی ہوں۔ میں کئی سالوں سے اس کاروبار سے جڑی ہوں۔ کرایہ مسلسل بڑھتا ہی جارہا ہے لیکن کمائی نہیں بڑھ رہی ہے۔ فیملی کا گزر بسر چلانا مشکل ہوگیا ہے'۔

Loading...

Loading...