உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Amit Shah Interview: امت شاہ نے کہا- ڈھائی سال پہلے آتی تھیں پتھر بازی کی خبریں، اب کشمیر کے امن میں کوئی خلل نہیں ڈال سکتا

    مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ ڈھائی سال پہلے کشمیر سے تشدد اور کشیدگی کی خبریں آتی تھیں، لیکن اب کشمیر میں بڑی تبدیلی دیکھنے کو مل رہی ہے۔ کشمیر کا نوجوان اب ترقی کی بات کر رہا ہے اور کشمیر سے پتھراو اب ختم ہوچکا ہے۔

    مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ ڈھائی سال پہلے کشمیر سے تشدد اور کشیدگی کی خبریں آتی تھیں، لیکن اب کشمیر میں بڑی تبدیلی دیکھنے کو مل رہی ہے۔ کشمیر کا نوجوان اب ترقی کی بات کر رہا ہے اور کشمیر سے پتھراو اب ختم ہوچکا ہے۔

    مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ ڈھائی سال پہلے کشمیر سے تشدد اور کشیدگی کی خبریں آتی تھیں، لیکن اب کشمیر میں بڑی تبدیلی دیکھنے کو مل رہی ہے۔ کشمیر کا نوجوان اب ترقی کی بات کر رہا ہے اور کشمیر سے پتھراو اب ختم ہوچکا ہے۔

    • Share this:

      نئی دہلی: مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ ڈھائی سال پہلے کشمیر سے تشدد اور کشیدگی کی خبریں آتی تھیں، لیکن اب کشمیر میں بڑی تبدیلی دیکھنے کو مل رہی ہے۔ کشمیر کا نوجوان اب ترقی کی بات کر رہا ہے اور کشمیر سے پتھراو اب ختم ہوچکا ہے۔ اس کے علاوہ ملک کے پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات، پولرائزیشن کی سیاست، حجاب تنازعہ، سی اے اے کا موضوع، کورونا کا بحران، دہشت گردی، یوگی آدتیہ ناتھ کے وزیر اعلیٰ بننے سے متعلق تعطل جیسے کئی ایسے موضوع ہیں، جن پر اس وقت پورے ملک میں بحث چل رہی ہے۔ دوسری طرف یوپی میں انتخابی تشہیر اب آخری دور میں پہنچ چکا ہے۔ الزام تراشی اور جوابی الزام تراشی کا دور بھی عروج پر ہے۔ ان تمام موضوعات پر نیٹ ورک 18 کے ایڈیٹر ان چیف راہل جوشی نے مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ سے ایکسکلوزیو بات کی۔


       وزیر داخلہ امت شاہ نے دعویٰ کیا کہ اترپردیش میں بی جے پی حکومت کی مدت کے دوران سبھی مذاہب اور ذات پات کے لئے ترقی کے منصوبوں پر کام ہوا۔ انہوں نے مرکز اور ریاست کے منصوبوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی نے کسانوں، نوجوانوں، خواتین سبھی طبقات کے لئے کام کیا۔ وزیر داخلہ نے یوپی کے ساتھ ساتھ ملک کے چار دیگر ریاستوں میں ہو رہے اسمبلی انتخابات میں بھی بی جے پی کے اچھی کارکردگی کی وجہ بتائی۔ آپ کو بتادیں کہ یوپی کے علاوہ اتراکھنڈ، گوا، پنجاب اور منی پور میں بھی اسمبلی انتخابات کرائے جا رہے ہیں۔ امت شاہ کے ساتھ یہ پورا انٹرویو آپ آج شام 8 بجے نیوز 18 نیٹ ورک کے سبھی چینلوں پر دیکھ سکتے ہیں۔ مرکزی وزیر داخلہ نے یوپی الیکشن سے جڑے اہم سوالوں پر کیا جواب دیا، آئیے ایک نظر ڈالتے ہیں۔
      یوگی جی نے 80-20 کا ذکر کیا، کیا ہندو بنام مسلم ہے؟


      میں نہیں مانتا کہ ہندو-مسلم کی تقسیم ہے۔ پولرائزیشن ضرور ہو رہا ہے۔ غریب، کسان بھی پولرائز ہو رہا ہے۔ بی جے پی کے دور اقتدار میں کسانوں کو کسان کلیان ندھی کا پیسہ مل رہا ہے۔




      ہندو مسلمان پولرائزیشن نہیں دیکھ رہے ہیں؟

      ووٹ بینک کے حساب سے ہم لوگوں کو نہیں دیکھتے ہیں، جن کا بیشتر، ان کے ساتھ حکومت، وزیر اعظم کے ہرمنصوبہ کا لوگوں کو فائدہ ملے، بی جے پی حکومتیں اس جذبے کے ساتھ کام کرتی ہیں۔ 2 کروڑ 62 لاکھ گھروں میں بیت الخلا نہیں تھا، ہماری حکومت نے یہ سہولت دی۔ یوپی میں بی جے پی کی حکومت نے ایک کروڑ 41 لاکھ گھروں میں بجلی پہنچائی، دو کروڑ 68 لاکھ ایل ای ڈی بلب بانٹے گئے، 15 کروڑ غریبوں کو دو سال سے مفت راشن، 42 لاکھ لوگوں کی رہائش گاہ (آواس) دینے کا کام ہوا۔ 2024 تک ہر آدمی کو گھر دینے کا ہدف ہماری حکومت نے طے کیا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: