உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش میں جونیئر ڈاکٹروں کی ہڑتال کے سامنے جھکی شیوراج حکومت

    مدھیہ پردیش میں جونیئر ڈاکٹروں کی ہڑتال کے سامنے جھکی شیوراج حکومت

    مدھیہ پردیش میں جونیئر ڈاکٹروں کی ہڑتال کے سامنے جھکی شیوراج حکومت

    مدھیہ پردیش میں 7 نکاتی مطالبات کو لے کر جونیئر ڈاکٹروں کی تین روزہ ہڑتال ختم ہوگئی ہے۔ سات نکاتی مطالبات کو لے کر ریاست کے ساڑھے تین ہزار سے زیادہ جونیئر ڈاکٹروں کے ذریعہ تین روز سے جاری ہڑتال حکومت کےذریعہ تحریری مطالبات کو لے کر تحریری منظوری دیئے جانے کے بعد جونیئر ڈاکٹروں نے اپنی ہڑتال ختم کرتے ہوئے کام شروع کردیا ہے۔ واضح رہے کہ جونیئر ڈاکٹروں کے ذریعہ اپنے 7 نکاتی مطالبات کو لے کر 31 مئی 2020 کو ہڑتال شروع کی گئی تھی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
    بھوپال: مدھیہ پردیش میں 7 نکاتی مطالبات کو لے کر جونیئر ڈاکٹروں کی تین روزہ ہڑتال ختم ہوگئی ہے۔ سات نکاتی مطالبات کو لے کر ریاست کے ساڑھے تین ہزار سے زیادہ جونیئر ڈاکٹروں کے ذریعہ تین روز سے جاری ہڑتال حکومت کےذریعہ تحریری مطالبات کو لے کر تحریری منظوری دیئے جانے کے بعد جونیئر ڈاکٹروں نے اپنی ہڑتال ختم کرتے ہوئے کام شروع کردیا ہے۔ واضح رہے کہ جونیئر ڈاکٹروں کے ذریعہ اپنے 7 نکاتی مطالبات کو لے کر 31 مئی 2020 کو ہڑتال شروع کی گئی تھی۔

    جونیئر ڈاکٹروں کی ہڑتال کو جبلپور ہائی کورٹ کے ذریعہ غیر قانونی قرار دیئے جانے کے ساتھ عدالت نے حکومت کو کمیٹی بناکر جونیئر ڈاکٹروں کے مطالبات کو پورا کرنے کی ہدایت دی تھی۔ عدالت کے احکام کے بعد جونیئر ڈاکٹروں نے چھ جون کو ہڑتال ختم کرتے ہوئے کام تو شروع کردیا تھا مگر حکومت کی جانب سے جونیئر ڈاکٹروں پر کاروائی کرتے ہوئے 21  جونیئر ڈاکٹروں کو نوٹس جاری کرنے کے ساتھ تین ڈاکٹروں کے رجسٹریشن کو کینسل کرنے کے لئے میڈیکل کونسل آف انڈیا کو خط لکھ دیا گیا تھا۔ حکومت کے اقدام سے ناراض جونیئر ڈاکٹروں کے ذریعہ پہلے مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن سے ملاقات کرکے حکومت کے احکام کو واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا تھا، مگر جب حکومت نے ان کے مطالبات پر عمل نہیں کیا تو جونیئر ڈاکٹروں نے 8 ستمبر کو اپنے مطالبات کو لے کرکام بند کرکے ہڑتال شروع کردی۔

    جونیئر ڈاکٹروں کی ہڑتال کو جبلپور ہائی کورٹ کے ذریعہ غیر قانونی قرار دیئے جانے کے ساتھ عدالت نے حکومت کو کمیٹی بناکر جونیئر ڈاکٹروں کے مطالبات کو پورا کرنے کی ہدایت دی تھی۔
    جونیئر ڈاکٹروں کی ہڑتال کو جبلپور ہائی کورٹ کے ذریعہ غیر قانونی قرار دیئے جانے کے ساتھ عدالت نے حکومت کو کمیٹی بناکر جونیئر ڈاکٹروں کے مطالبات کو پورا کرنے کی ہدایت دی تھی۔


    حکومت کے ذریعہ پہلے جونیئر ڈاکٹروں کی ہڑتال کو لے کر سحت رخ اپنایا گیا اور آج 22 جونیئر ڈاکٹروں کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 24 گھنٹے کے اندر ہاسٹل خالی کرنے کا نوٹس جاری کیا گیا۔ یہی نہیں نوٹس کی تعمیل نہیں ہونے پر حکومت کے ذریعہ ایسما کے تحت کارروائی کرنے کا بھی انتباہ دیا گیا تھا، لیکن جب جونیئر ڈاکٹروں پر حکومت کے سخت رخ کا اثر نہیں پڑا تو حکومت نے جونیئر ڈاکٹروں کے وفد کو بلاکر میٹنگ کی اور دونوں کے بیچ تحریری رضا مندی ہونے کے بعد جونیئر ڈاکٹروں نے ہڑتال ختم کرتے ہوئے کام شروع کردیا۔

    جونیئر ڈاکٹر ایسوسی ایشن کے ترجمان ڈاکٹر شبھم چورسیا کہتے ہیں کہ گاندھی میڈیکل کالج کے ڈین اور کونسل کے اراکین کے ساتھ جونیئر ڈاکٹر ایسو سی ایشن کی میٹنگ ہوئی اور ان کے ذریعہ تحریری طور پر مطالبات کو منطور کئے جانے کے بعد جونیئر ڈاکٹر ایسوسی ایشن نے اپنی ہڑتال کو ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے اور سبھی ڈاکٹر پہلے کی طرح مستعدی سے کام کریں گے۔ وہیں مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایسوسی ایشن وشواس سارنگ کہتے ہیں کہ ہماری سرکار بات کرنے اور مسائل کا حل کرنے میں یقین رکھتی ہے۔ جوڈا کے مطالبات پہلے ہی پورے کردیئے گئے تھے۔ کسی بھی ڈاکٹر کوئی رجسٹریشن کینسل نہیں ہوگا اور بھی ان کے جو مطالبات ہیں حکومت اس پرکام کرے گی۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: