ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش: شیوراج حکومت نےمرغیوں کا کھانا انسانوں میں کیا تقسیم

مدھیہ پردیش حکومت کے محکمہ فوڈ سول سپلائی اینڈ کنزیومر پروٹیکشن کے ذریعہ عوام کو جو چاول تقسیم کیا گیا ہے وہ انسانوں کے استعمال کے قابل ہی نہیں ہے۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش: شیوراج  حکومت  نےمرغیوں کا کھانا انسانوں میں کیا تقسیم
مدھیہ پردیش: شیوراج حکومت نےمرغیوں کا کھانا انسانوں میں کیا تقسیم

بھوپال: مہذب حکومت کی یہ ذمہ داری ہوتی ہےکہ وہ اپنے شہریوں کو ضروریات زندگی کے وہ سامان مہیا کرائے جو قابل استعمال ہوں، مگر مدھیہ پردیش میں جو معاملہ سامنے آیا ہے، اس نے سبھی کو سوچنے پر مجبور کردیا ہے۔ مدھیہ پردیش حکومت کے محکمہ فوڈ سول سپلائی اینڈ کنزیومر پروٹیکشن کے ذریعہ عوام کو جو چاول تقسیم کیا گیا ہے وہ انسانوں کے استعمال کے قابل ہی نہیں ہے۔ 21 اگست کو کرشی بھون نئی دہلی کے ذریعہ مدھیہ پردیش کے محکمہ فوڈسپلائی اینڈ کنزیومر پروٹیکشن کے  پرنسپل سکریٹری لکھے گئے خط کے منظر عام پر عام کے بعد حساس شہریوں کے پیروں سے زمین نکل گئی ہے۔


رپورٹ میں واضح طور پر کہا گیا ہےکہ ان کے منڈلا اور بالا گھاٹ کے مختلف ویئر ہاؤس میں عوام کو تقسیم کئے جانے والے چاول کے جو 32 نمونے لئے گئے تھے وہ نہ صرف فیل ہوئے بلکہ وہ اتنے ناقص تھے۔ کیونکہ انہیں انسانوں کے ذریعہ استعمال بھی نہیں کیا جاسکتا ہے۔ رپورٹ کے منظر عام پر آنے کے بعد نہ صرف سیاسی  سطح پر گھمسان مچا ہوا ہے بلکہ عوام کے ساتھ دانشوروں نے بھی اس کی سخت مذمت کی ہے۔ سینئر صحافی ظفر عالم خان کہتے ہیں کہ اس سے زیادہ شرمناک اورکیا ہوگا کہ اپنے ذاتی فائدے کے لئے ایسا چاول جو مرغیوں کے کھانے کے لئے بھی لوگ استعمال نہیں کرتے ہیں، انہیں  کورونا کے قہر میں انسانوں کے کھانے کے لئےتقسیم کردیا گیا، جن لوگوں کے ذریعہ بھی کیا گیا ہے ان کے خلاف سخت کاروائی کی جانی چاہئے اور صوبہ کے جن بھی ویئر ہاؤس میں ناقص چاول موجود ہے، اسے وہاں سے نکال کر زمین دوز کیا جانا چاہئے۔


مدھیہ پردیش حکومت کے محکمہ فوڈ سول سپلائی اینڈ کنزیومر پروٹیکشن کے ذریعہ عوام کو جو چاول تقسیم کیا گیا ہے وہ انسانوں کے استعمال کے قابل ہی نہیں ہے۔
مدھیہ پردیش حکومت کے محکمہ فوڈ سول سپلائی اینڈ کنزیومر پروٹیکشن کے ذریعہ عوام کو جو چاول تقسیم کیا گیا ہے وہ انسانوں کے استعمال کے قابل ہی نہیں ہے۔


وہیں بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی کے سکریٹری شیلندر شیلی کہتے ہیں کہ یہ بے شرمی کی انتہا ہے کہ جو چیزیں مرغیوں کو کھانے کے لئے تھیں، انہیں بی جے پی سرکار میں بیٹھے لوگوں نے انسانوں کو بیچ تقسیم کر کے منافع کمایا ہے۔ جن افسران کے ذریعہ یہ گھنونا کام کیاگیا ہے، ان کے خلاف جانچ کرکے سخت کارروائی کرنے کے ساتھ اس بات کی بھی جانچ کی جانا چاہئے کہ اس کے پیچھے کن سیاسی لوگوں کا ہاتھ رہا ہے۔ کیونکہ اتنا بڑا کام افسران بغیر سیاسی لوگوں کی ملی بھگت سے انجام نہیں دے سکتے ہیں۔ کورونا قہر میں عام انسان ہر طرح سے مجبور ہوگیا ہے اور یہ سرکار میں بیٹھے لوگ  افسران کے ساتھ مل کر ایسا گھنونا کام کام رہے ہیں اس کی جتنی بھی مذمت کی جائے وہ کم ہے اور حکومت کو جلد سے جلد اس پر سیاست کرنے کے بجائے عملی کارروائی کرنا چاہئے۔
مدھیہ پردیش کانگریس کمیٹی نے کرشی بھون دہلی کے لیٹر پر اپنے سخت رد عمل کا اظہارکیا ہے۔ مدھیہ پردیش کانگریس کمیٹی کے ترجمان بھوییندر گپتا نے اس معاملے میں مدھیہ پردیش حکومت کو خط لکھتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا قہر میں عام انسانوں کو محکمہ فوڈ سول سپلائی کے ذریعہ جو چاول تقسیم کیاگیا ہے وہ انسانوں کے لئے استعمال کے قابل نہیں تھا۔کورونا قہر میں مجبور شہریوں کو ناقص چاول تقسیم کرکے شیوراج سرکار واہ واہی لوٹ رہی تھی اور اس جھوٹی واہ واہی میں اس نے  شہریوں کو وہ ناقص چاول تقسیم کیا ہے، جو پولٹری فارم کی مرغیوں کے کھانے کےلئے ہوتا ہے۔ حکومت کے ذریعہ ایسا جرم کیا گیا، جس کی مذمت کے لئے لفظ چھوٹے محسوس ہوتے ہیں۔ مرکزی حکومت کی ٹیم کے ذریعہ 30 جولائی سے دو اگست کے بیچ بالا گھاٹ اور منڈلا کے مختلف فارم ہاؤس سے جو 32 سمپل جمع کئے گئے تھے وہ نہ صرف فیل ہوئے ہیں بلکہ انسانوں کے استعمال کے لائق بھی نہیں ہے۔  مدھیہ پردیش کے شہریوں کو خراب چاول تقسیم کرکے اچھا چاول بی جے پی حکومت نے باہر سپلائی کرنے کاکام کیا ہے۔ پچھلے مہینوں میں ٹرکوں سے بھرے کئے ٹرک مندسور اور شہڈول میں پکڑےبھی گئے تھے۔ اس کے باوجود شیو راج سرکار نے ان پر کارروائی نہ کر کے معاملے کو دبانے کا کام کیا تھا۔ اگر سرکار نے اس معاملے میں وقت پر کارروائی کی ہوتی ہے تو کروڑوں لوگوں کو ناقص چاول تقسیم کئے جانے سے روکا جا سکتا تھا اور افسران کو بے نقاب کیا جاسکتا تھا۔ کانگریس پارٹی پورے معاملے کی جانچ کی مانگ کرتی ہے اور اس معاملہ کو لیکر عوام کی عدالت میں بھی جائے گی تاکہ سودا خور سرکار کو بے نقاب کیا جا سکے۔
وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی نے اس معاملے میں کانگریس پر جوابی حملہ کرتے ہوئے ناقص چاول کے لئے سابقہ حکومت کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔ بی جے پی ترجمان رجنیش اگروال کا کہنا ہے کہ سابقہ کمل ناتھ حکومت میں جو ناقص چاول کا اسٹاک جمع کیا گیا تھا اس کی بد نظمی کی پول اب کھلی ہے۔ بی جے پی حکومت پورے معاملے کی اعلی سطحی جانچ کرائے گی اور جو لوگ بھی اس کے لئے ذمہ دار ہوں گے، ان کے خلاف سخت کارروائی بھی کی جائے گی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 02, 2020 11:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading