உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کیا ہندوستان کو بوسٹر ڈوز پر فوکس کرنا چاہئے؟ جانئے کیا ہے آئی سی ایم آر کے میڈیکل ایکسپرٹس کی رائے

    Corona Vaccination, Covid-19, Corona Booster : آئی سی ایم آر کی ڈاکٹر سمیرن پانڈا نے کہا کہ اگر آپ اس معاملہ پر میری رائے پوچھیں گے تو میرا یہ ماننا ہے کہ جلد سے جلد دو خوراک ویکسین لینے والوں کی تعداد 80 فیصد کے پار پہنچایا جاسکے ۔

    Corona Vaccination, Covid-19, Corona Booster : آئی سی ایم آر کی ڈاکٹر سمیرن پانڈا نے کہا کہ اگر آپ اس معاملہ پر میری رائے پوچھیں گے تو میرا یہ ماننا ہے کہ جلد سے جلد دو خوراک ویکسین لینے والوں کی تعداد 80 فیصد کے پار پہنچایا جاسکے ۔

    Corona Vaccination, Covid-19, Corona Booster : آئی سی ایم آر کی ڈاکٹر سمیرن پانڈا نے کہا کہ اگر آپ اس معاملہ پر میری رائے پوچھیں گے تو میرا یہ ماننا ہے کہ جلد سے جلد دو خوراک ویکسین لینے والوں کی تعداد 80 فیصد کے پار پہنچایا جاسکے ۔

    • Share this:

      نئی دہلی : کورونا وائرس انفیکشن سے بچنے کیلئے دنیا کے کئی ممالک نے کووڈ ویکسین کی بوسٹر ڈوز کی شروعات کردی ہے ۔ ہندوستان میں ویکسین کی بوسٹر ڈوز کو دیا جائے یا نہیں ، ابھی اس کو لے کر سائنسدانوں کے درمیان مباحثہ چل رہا ہے ۔ اس درمیان ایک اعلی طبی سائنسدانوں نے اتوار کو کہا کہ سرکار کو اس بارے میں ابھی زیادہ دھیان دینا چاہئے کہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو جلد سے جلد ویکسین لگائی جاسکے نہ کے بوسٹر ڈوز پر ۔


      آئی سی ایم آر کی ڈاکٹر سمیرن پانڈا نے کہا کہ اگر آپ اس معاملہ پر میری رائے پوچھیں گے تو میرا یہ ماننا ہے کہ جلد سے جلد دو خوراک ویکسین لینے والوں کی تعداد 80 فیصد کے پار پہنچایا جاسکے ۔ اس وقت پبلک ہیلتھ پرائریٹی یہ ہے کہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ویکسین کی دوسری ڈوز لگائی جاسکے ۔

      اب تک ملک گیر ٹیکہ کاری مہم کے تحت ملک میں ۔۔۔ بلین سے زیادہ لوگوں کو ویکسین کی کم سے کم ڈوز لگائی جاچکی ہے ۔ ڈاکٹر پانڈا نے کہا کہ بوسٹر شاٹ دینے جیسے فیصلے فورا نہیں لئے جاتے بلکہ یہ پالیسی سازی اور سائنسی ثبوت پر مبنی ہوتے ہیں ۔ ایسے قدم کسی کو دیکھ کر نہیں اٹھائے جاسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کے سائنسدان ابھی بوسٹر شاٹ دینے کے فیصلہ پر کوئی ٹھوس مقصد میں نہیں پہنچ پائے ہیں ۔

      انہوں نے کہا کہ مرکزی وزارت صحت سائنسدانوں کے ذریعہ ڈائریکٹیڈ ایوڈینس پر کام کرتا ہے ۔ وزارت این ٹی اے جی آئی کے ذریعہ دئے گئے مشوروں پر بھی غور کرتا اور جب ایک ٹھوس ثبوت سامنے آتا ہے تو پھر ایک پالیسی بنائی جاتی ہے ۔

      ڈاکٹر پانڈا نے کہا کہ فی الحال ہندوستان میں کورونا انفیکشن کی صورتحال قابو میں ہے ۔ یہاں یومیہ 11000 کے کووڈ کے معاملہ درج کئے جارہے ہیں ۔ سرکاری اعداد و شمار سے یہ معلوم چلتا ہے کہ نئے کووڈ انفیکشن کے معاملات 44 دنوں سے 20000 سے کم درج کئے جارہے ہیں اور لگاتار 147 دنوں میں 50000 سے کم یومیہ نئے معاملات سامنے آئے ہیں ۔

       

      آپ کو بتادیں کہ وزارت صحت کے مطابق اتوار کو ملک میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں 10488 نئے انفیکشن درج کئے ، جس کے بعد کل کورونا 19 معاملات کی کل تعداد 34510413  ہوگئی ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: