ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بنگال کی سیاست میں اسد الدین اویسی کے خلاف وزیر صدیق اللہ چودھری کو ملی اہم ذمہ داری

بنگال اسمبلی الیکشن میں حیدر آباد کے بھائی جان سے مقابلہ کے لئے ترنمول کانگریس نے صدیق اللہ چودھری کو میدان میں اتارا ہے۔ ریاستی وزیر صدیق اللہ چودھری جمعیۃ علماء ہند بنگال کے ریاستی چیئرمین ہیں ۔

  • Share this:
بنگال کی سیاست میں اسد الدین اویسی کے خلاف وزیر صدیق اللہ چودھری کو ملی اہم ذمہ داری
بنگال کی سیاست میں اسد الدین اویسی کے خلاف وزیر صدیق اللہ چودھری کو ملی اہم ذمہ داری

بنگال اسمبلی الیکشن میں حیدر آباد کے بھائی جان سے مقابلہ کے لئے ترنمول کانگریس نے صدیق اللہ چودھری کو میدان میں اتارا ہے۔ ریاستی وزیر صدیق اللہ چودھری جمعیۃ علماء ہند بنگال کے ریاستی چیئرمین ہیں ۔ مسلم ووٹ بینک کو پارٹی سے قریب رکھنے کے لئے صدیق اللہ چودھری کو ریاست بھر میں اقلیتی میٹنگ منعقد کرنے کی ذمہ داری دی گئی ہے۔ ریاست میں دوسری بار اقتدار حاصل کرنے کے بعد مولانا صدیق اللہ چودھری کو بھی ممتا حکومت نے وزارت میں شامل کیا تھا ۔ تاہم انہیں محکمہ لائبریری کی ذمہ داری دی گئی ۔ کہا جاتا ہے کہ یہ ایک ایسا دفتر تھا جہاں کرنے کے لئے کچھ نہیں تھا ۔ صدیق اللہ چودھری نے خود پارٹی پر انہیں نظرانداز کرنے کا الزام لگایا تھا ۔ گزشتہ دنوں انہوں نے وزیر اعلی ممتا بنرجی کو خط لکھ کر کہا تھا کہ انہیں اپنے اسمبلی حلقہ میں کام کرنے نہیں دیا جارہا ہے ۔


اب جب بنگال میں ایم آئی ایم کے الیکشن لڑنے کے اعلان سے ریاست میں مسلم ووٹ بینک کے بکھراؤ کا اندیشہ بڑھ رہا ہے ، ممتا حکومت نے صدیق اللہ چودھری کو اقلیتوں کی کمان سونپی ہے ۔ صدیق اللہ چودھری نے اسد الدین اویسی پر بنگال کی فضا بگاڑنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ بنگال کے عوام کو حیدر آباد کے لیڈر کی ضرورت نہیں ۔


انہوں نے مزید کہا کہ بنگال کی ترقی میں ایم آئی ایم نے اہم کردار ادا نہیں کیا ہے ، وہ بنگال کے عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ صدیق اللہ چودھری کو اسد الدین اویسی کے خلاف میدان میں اتارنے کا فیصلہ ممتا بنرجی کیلئے کتنا کارآمد ہوگا یہ دیکھنا اہم ہے ۔

Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jan 04, 2021 11:47 PM IST