உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ِSonu Sood in Politics: عام آدمی پارٹی میں شامل ہوسکتے ہیں بالی ووڈ اداکارسونوسود

    بالی ووڈ اداکار سونو سود

    بالی ووڈ اداکار سونو سود

    اگست میں ، دہلی میں برسر اقتدار AAP نے سود کو 'دیش کے مینٹر' پروگرام کا برانڈ ایمبیسڈر بنایا تھا۔روزنامہ بھاسکر کی رپورٹ کے مطابق سونو سود عام آدمی پارٹی کے رکن بن سکتے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق دہلی کے ایک دفتر میں ان کی رکنیت کے حوالے سے عام آدمی پارٹی کے عہدیداروں کی ایک میٹنگ بھی منعقد ہوئی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی: بالی ووڈ کےمشہور اداکار سونو سود (Sonu Sood)جلد ہی عام آدمی پارٹی (AAP) میں شمولیت اختیار کرسکتے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ انہوں نے بدھ کو پارٹی کے بعض رہنماؤں سے ملاقات کی۔ اگست میں ، دہلی میں برسر اقتدار AAP نے سود کو 'دیش کے مینٹر' پروگرام کا برانڈ ایمبیسڈر بنایا تھا۔روزنامہ بھاسکر کی رپورٹ کے مطابق سونو سود عام آدمی پارٹی کے رکن بن سکتے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق دہلی کے ایک دفتر میں ان کی رکنیت کے حوالے سے عام آدمی پارٹی کے عہدیداروں کی ایک میٹنگ بھی منعقد ہوئی۔ خاص بات یہ ہے کہ گجرات کے مشہور تاجر بھی اس میٹنگ میں شامل تھے۔ عآپ 2022 میں گجرات میں اسمبلی انتخابات میں داخل ہونے کی تیاری کر رہی ہے۔

      بالی ووڈ اداکار سونو سود
      بالی ووڈ اداکار سونو سود


      بتایا جاتا ہے کہ دہلی ہیڈ کوارٹر میں سونو سود (Sonu Sood)کے ساتھ پارٹی رہنماؤں کی میٹنگ کی تصدیق ہوگئی ہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے کچھ عرصہ قبل دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال سے ملاقات کی تھی۔

      یادر ہے کہ دیش کے مینٹر پروگرام میں سلسلہ میں منعقدہ پریس کانفرنس میں بات کرتے ہوئے سونو نے کہا تھا کہ ’’جب ہم جوان تھے تو صرف دو ہی آپشن تھے۔ یا تو انجینئرنگ یا میڈیسن اب طلبا کے لیے بہت سارے اختیارات ہیں۔ ملک میں کچھ نہیں بدلا ۔ ہم اکثر یہ سوچتے ہیں کہ جب ہم کچھ حاصل کر لیں گے تو ہم کچھ کریں گے لیکن یہ پروگرام نوجوانوں کو ملک میں اپنا کردار ادا کرنے کے قابل بناتا ہے۔ سود نے کہا کہ اس سے بڑی حب الوطنی نہیں ہو سکتی۔

      پروگرام کا اعلان کرتے ہوئے دہلی کے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ تعلیم کو ایک عوامی تحریک بنایا جائے۔ واضح رہے کہ سونو سود وہ اداکار جو لاک ڈوان کے دوران اپنے انسان دوست کاموں کی وجہ سے مشہور ہوئے۔ انھوں نے کہا کہ ’’دہلی حکومت نے آپ سب کے سامنے آنے کے لیے ایک پلیٹ فارم بنایا ہے، یہ ایک بہت اچھا موقع ہے۔ ایک ملک تب ہی ترقی کرسکتا ہے جب تعلیم کی سطح میں اضافہ ہوگا‘‘۔

      تاہم ، ایک انٹرویو کے دوران انہوں نے انکشاف کیا تھا کہ دو سیاسی جماعتوں نے راجیہ سبھا میں نشستوں کی پیشکش کی تھی ، جسے انہوں نے ٹھکرا دیا۔ کچھ دن پہلے ، محکمہ انکم ٹیکس کے سوڈ کے ٹھکانوں پر چھاپوں کی خبر آئی تھی۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: