உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    تعلیم اور عوامی فلاح و بہبود خاندانِ آصف جاہی کا مقصد حیات : ترک قونصل جنرل ڈاکٹر عدنان

    تعلیم اور عوامی فلاح و بہبود خاندانِ آصف جاہی کا مقصد حیات : ترکی قونصل جنرل

    تعلیم اور عوامی فلاح و بہبود خاندانِ آصف جاہی کا مقصد حیات : ترکی قونصل جنرل

    ڈاکٹر عدنان آلتے التینورس نے خاندانِ آصف جاہی کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے مکرم جاہ اسکول کے ڈسپلن، معیارِ تعلیم اور اکیڈیمک اسٹاف کی فعالی پر مسرت کا اظہار کیا۔

    • Share this:
      حیدرآباد : خاندانِ آصف جاہی کے ہر حکمران کا مقصد حیات ایک ہی رہا ہے ”عوامی فلاح و بہبود اور تعلیمی ترقی“۔ نظام ہفتم نواب میر عثمان علی خاں کی علمی، تعلیمی اور رفاہِ عامہ کے لئے بے مثال خدمات کے ذکر سے تاریخ کے اوراق بھرے پڑے ہیں۔ جبکہ ان کے جانشین و آٹھویں نظام نواب میر برکت علی خاں مکرم جاہ بہادر انہی کے نقش قدم پر گامزن رہے ہیں۔ مختلف مقررین نے ان خیالات کا اظہار 6 اکتوبر کی صبح مکرم جاہ اسکول کے فاؤنڈرس ڈے کے موقع پر کیا۔ اسکول جو اپنے بانی مکرم جاہ بہادر کے نام سے قائم ہے‘ ہر سال 6 اکتوبر کو ان کی یوم ولادت کے موقع پر فاؤنڈرس ڈے کا اہتمام کرتا ہے۔ اس سال شہزادہ والا شان کی 88 ویں سالگرہ کے موقع پر منعقدہ فاؤنڈرس ڈے میں حیدرآباد میں ترکی قونصل جنرل ڈاکٹر عدنان آلتے التینورس نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔

      ایک دلچسپ اور تاریخی حقیقت ہے کہ پرنس مکرم جاہ بہادر کے نانا اور پرنسس درشہوار سلطان صاحبہ کے والد ترکی آخری سلطان خلیفہ عبدالمجید دوم تھے ۔ (شہزادی درشہوار سلطان ترکی کے آخری سلطان خلیفہ عبدالمجید دوم کی دختر تھیں)۔ اس طرح شہزادہ والا شان کا ننہیال ترک ہے۔ اس موقع پر تقریر کرتے ہوئے ڈاکٹر عدنان آلتے التینورس نے خاندانِ آصف جاہی کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے مکرم جاہ اسکول کے ڈسپلن، معیارِ تعلیم اور اکیڈیمک اسٹاف کی فعالی پر مسرت کا اظہار کیا۔ انہوں نے اس بات پر بھی مسرت کا اظہار کیا کہ اسکول نے اپنے آپ کو بدلتے ہوئے وقت اور حالات سے ہم آہنگ کرلیا ہے۔ انہوں نے ٹرسٹی نواب فیض خاں کے حوالے سے کہا کہ انہیں خوشی ہے کہ کووڈ کے پیش نظر اسکول میں ڈیجیٹل کلاس روم کے نظریے کو اپنایا ہے۔

      پرانی حویلی میں منعقدہ اس یادگار تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ٹرسٹی نواب ایم اے فیض خاں نے جو خاندانِ امرائے پائیگاہ کے چشم و چراغ ہیں ، بتایا کہ اسکول مکرم جاہ ٹرسٹ فار ایجوکیشن اینڈ لرننگ کے تحت قائم کیا گیا ہے۔ اور یہ ٹرسٹ کا گولڈن جوبلی سال ہے۔ انہوں نے بتایا کہ شہزادہ والا شان نواب میر برکت علی خاں پرانی حویلی کی بیش قیمت جائیداد کو تعلیمی سرگرمیوں کے لئے بالخصوص اعلیٰ معیاری، کفایتی تعلیم کے مقصد سے عطیہ دیا ہے۔ مکرم جاہ اسکول پرانے شہر میں قائم ہے اور اپنے معیار کی بدولت ہندوستان کی آئی سی ایس ای اسکولس میں دوسرے نمبر پر ہے۔ یہ رینک اسے اس کے انفراسٹرکچر اور کفایتی تعلیم کی بنیاد پر حاصل ہوا ہے۔

      نواب فیض خاں نے بتایا کہ شہزادہ مکرم جاہ بہادر ماشاء اللہ مکمل صحت مند ہیں اور ہمیشہ ان کا دل حیدرآبادی عوام کے لئے دھڑکتا اور تڑپتا ہے۔ انہوں نے اس موقع پر اعلان کیا کہ اگر کووڈ کی وجہ سے کسی طالب علم کے کفیل کی موت واقع ہوئی ہے تو اُس کے پہلے دو بچوں کو جو اسکول میں زیر تعلیم ہیں‘ دسویں جماعت تک مفت تعلیم دی جائے گی۔ اور اس کے خاندان کے تیسرے بچے کو ایک سال کے لئے مفت تعلیم دی جائے گی۔

      پرنسپل ریکھا وادھے نے اسکول کی سالانہ رپورٹ پیش کیں۔ ٹرسٹی خلیل احمد، سکریٹری محمد ہاشمی دیگر کونسل اور اڈوائزر ڈاکٹر ای پی شیلیجا اور مسز کوثر بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ جبکہ ممتاز ماہر تعلیم گیتا شیام سندر نے تعلیم کی اہمیت اور عصر حاضر میں نئے تقاضوں پر تفصیل سے روشنی ڈالی۔ تقریب کا آغاز قرأت کلام پاک سے ہوا۔ اس سے پہلے اسکول کے طلبہ نے مارچ پاسٹ کیا اور مہمانوں کو سلامی دی۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: