ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

حیدرآباد: کورونا سے چھٹکارا پانے والے مسلم شخص کا آرتی اُتار کر کیا گیا استقبال

محمد رفیع اسپتال سے روبہ صحت ہونے کے بعد جب گھر واپس ہوئے تو ان کا ایک ہیرو کا طرح شاندار استقبال کیا گیا۔ ان کے محلہ سے گزرتی سڑک کے دونوں جانب لوگوں نے تالیاں بجاکر ان کا استقبال کیا۔

  • Share this:
حیدرآباد: کورونا سے چھٹکارا پانے والے مسلم شخص کا آرتی اُتار کر کیا گیا استقبال
حیدرآباد: کورونا سے چھٹکارا پانے والے مسلم شخص کا آرتی اُتار کر کیا گیا استقبال

حیدر آباد کے علاقہ بورا بنڈہ سے تعلق رکھنے والے محمد رفیع نئی دہلی میں تبلیغی جماعت کے اجتماع میں شرکت کرکے واپس آنے کے بعد ان میں کورونا کے علامات پائے گئے تھے۔ انہیں  پانچ  اپریل کو  حیدرآباد میں کورونا کے علاج کے لیے مختص گاندھی اسپتال میں داخل کروایا گیا۔ وہ کورونا پوزیٹیو پائے گئے اور تقریبا  43دن ہسپتال میں زیرعلاج رہے۔ اس دوران ہسپتال میں شریک محمد رفیع  اپنے علاج کو لے کر اتنے زیادہ فکر مند نہیں تھے کیونکہ گاندھی ہسپتال میں انکے علاج کے ساتھ  ان  کی حالت تیزی سے بہتر ہوتی جا رہی تھی لیکن محمد رفیع جب بھی علاج کے بعد گھر واپس ہونے کے بارے میں سوچتے تو مختلف خدشات میں مبتلا ہو جاتے۔


رفیع جس علاقہ میں مقیم ہیں وہاں بڑی تعداد میں غیر مسلم بھی رہتے ہیں ۔ انہیں یہ شدید احساس ندامت تھا کہ انہیں کورونا پو زیٹیو ہونے کے بعد پورے محلہ کو کوارنٹین کردیا گیا تھا اور اس علاقہ  میں رہنے والوں کو تکلیف ہوئی تھی۔ وہ اپنے مکانات  سے باہر نہیں نکل پارہے تھے۔ لیکن محمد رفیع  کے تمام خدشات غلط ثابت ہوئے ۔ اسپتال سے روبہ صحت ہونے کے بعد جب وہ گھر واپس ہوئے تو  ان کا ایک ہیرو کا طرح شاندار استقبال کیا گیا۔ ان کے محلہ سے گزرتی سڑک   کے دونوں جانب لوگوں نے تالیاں بجاکر ان کا استقبال کیا۔ صرف یہی نہیں آن کے محلہ کی ایک ہندو خاتون نے آگے آکر  ان کی آرتی اُتاری اور روایتی طریقہ سے خوش آمدید کہتے ہوئے انکے مستقبل کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔  اس کے بعد ان کے ایک اور پڑوسی نے جو  عیسائی پادری ہیں بہ آواز بلند  ان کی صحت اور لمبی عمر کے لیے دعاء کی۔ اس موقع پر مقامی مسجد کے امام  بھی  دعا کے لیے موجود تھے۔


محمد رفیع اسپتال سے روبہ صحت ہونے کے بعد جب گھر واپس ہوئے تو ان کا ایک ہیرو کا طرح شاندار استقبال کیا گیا۔
محمد رفیع اسپتال سے روبہ صحت ہونے کے بعد جب گھر واپس ہوئے تو ان کا ایک ہیرو کا طرح شاندار استقبال کیا گیا۔


اسپتال میں علاج کے دوران کورونا سے متعلق خبریں پڑھتے ہوئے محمد رفیع کو  یہ احساس تھا کہ روبہ صحت ہونے کے بعد اس بیماری کے تعلق سے پیدا شدہ غلط فہمی کی وجہ سے انہیں مشکلات ہو سکتی ہیں۔ ان کا کہنا ہے  " کیونکہ عالمی سطح پر اس وائرس سے متاثرہ مریضوں کے ساتھ نامناسب رویہ اختیار کیا جارہا ہے اور سماجی فاصلہ کے نام پر دور رہنے کی بات کہی جارہی ہے لیکن جب  لوٹ کے اپنے محلہ پہنچا تو تالیوں کے ساتھ میرا جس طرح استقبال کیاگیا اور اس پر مجھے جتنی مسرت ہوئی وہ نا قابل بیان ہے "۔
First published: May 22, 2020 02:54 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading