ہوم » نیوز » وطن نامہ

Twitter کے دفتر پر چھاپے ماری کے بعد کمپنی نے کہا، ہم ملازمین کیلئے فکر مند ہیں

ٹویٹر نے کہا کہ دہلی، گروگرام میں واقع دفتر میں حالیہ پولیس کارروائی کے بعد وہ ہندستان میں ملازمین کے بارے میں فکر مند ہیں۔

  • Share this:
Twitter کے دفتر پر چھاپے ماری کے بعد کمپنی نے کہا، ہم ملازمین کیلئے فکر مند ہیں
ٹویٹر نے کہا کہ دہلی، گروگرام میں واقع دفتر میں حالیہ پولیس کارروائی کے بعد وہ ہندستان میں ملازمین کے بارے میں فکر مند ہیں۔

کانگریس  (Congress)  کے ذریعے مبینہ طور پر ملک کی شبیہ خراب کرنے اور مرکزی حکومت کو بدنام کرنے کیلئے بنائے گئے مبینہ ٹول کٹ کے معاملے میں دفتر پر چھاپہ ماری کے بعد ٹویٹر (Twitter)  نے پہلی بار صفائی دی ہے۔ ٹویٹر نے کہا کہ دہلی، گروگرام میں واقع دفتر میں حالیہ پولیس کارروائی کے بعد وہ ہندستان میں ملازمین کے بارے میں فکر مند ہیں۔


کمپنی نے کہا کہ آئی ٹی قوانین کے ایسے میں تبدیلی کی وکالت کرنے کی یوجنا جو آزاد، کھلی عوامی بات چیت کو روکتے ہیں۔ ٹویٹر نے کہا کہ بی جے پی لیڈر کے ٹویٹ میں مینیوپلیتیڈ میڈیا کا ٹیگ لگانے کے جواب میں پولیس کے ذڑیعے ڈرانے دھمکانے کی حکمت عملی سے وہ فکرمند ہے۔


ٹویٹر کے ترجمان نے کہا ہندستان اور دنہا بھر میں شہری سماج کے کئی لوگوں کے ساتھ ہی ہم پولیس کے ذریعے دھمکانے کی حکمت عملی کے استعمال سے فکر مند ہیں۔ ٹویٹر نے کہا کہ وہ قانون کے دائرے میں رہ کر شفافیت کے اصول ، ہر آواز کو مضبوط بنانے اور اظہار رائے کی آزادی اور رازداری کی حفاظت کے لئے پرعزم ہے۔


ٹول کٹ تنازعہ سے متعلق اس ہفتے کی شروعات میں دہلی اور گروگرام میں ٹویٹر دفتر پر پولیس نے چھاپے مارے تھے۔

اس بات پر زور دیتے ہوئے کمپنی ہندستان میں نافذ قانون کی پیروی کرنے کی کوشش کرے گی۔ ٹویٹر ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ ابھی ہم ہندستان میں اپنے ملازمین کے بارے میں حالیہ واقعات اور ان لوگوں کیلئے اظہار رائے کی آزادی کے امکان خطرے فکر مند ہیں جن کی ہم خدمت کرتے ہیں۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 27, 2021 07:03 PM IST