உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اسد الدین اویسی نے وزیر اعظم مودی سے پوچھا۔ مسلم ارکان پارلیمنٹ کی تعداد کب بڑھے گی؟

    اسد الدین اویسی: فائل فوٹو

    اسد الدین اویسی: فائل فوٹو

    لوک سبھا کے آخری اجلاس کے آخری دن وزیر اعظم نے کہا کہ ’’ ہمیں اس سیشن پر فخر ہے کیونکہ یہ سب سے زیادہ خواتین ارکان پارلیمنٹ کے لئے جانا جائے گا جس میں 44 خواتین ارکان پارلیمنٹ پہلی بار منتخب ہو کر آئی تھیں

    • Share this:
      وزیر اعظم نریندر مودی نے بدھ کے روز 16 ویں لوک سبھا کے آخری اجلاس کے آخری دن کہا کہ ’’ ہمیں اس سیشن پر فخر ہے کیونکہ یہ سب سے زیادہ خواتین ارکان پارلیمنٹ کے لئے جانا جائے گا جس میں 44 خواتین ارکان پارلیمنٹ پہلی بار منتخب ہو کر آئی تھیں۔ تین دہائی بعد کسی حکومت کو مکمل اکثریت ملی ۔ اس پر آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اور رکن پارلیمنٹ اسدالدین اویسی نے وزیر اعظم مودی پر جم کر حملہ بولا۔

      دراصل، اسدالدین اویسی نے اس پر ٹویٹ کر کے کہا کہ ’’ یس سر، بی جے پی میں ایک بھی مسلم رکن پارلیمنٹ نہیں ہیں۔ اس لوک سبھا میں محض 23 مسلم ارکان پارلیمنٹ ہیں۔ یہ اب تک کہ دوسری سب سے کم تعداد ہے‘‘۔

      اویسی نے آگے کہا کہ ’’ تقریبا 14 فیصد ہندوستانی مسلمانوں کو سیاسی طور پر حاشیہ پر بھیج دیا گیا ہے۔ کیا ہم 17 ویں لوک سبھا میں مسلم ارکان پارلیمنٹ کی بڑھتی ہوئی تعداد دیکھیں گے‘‘۔
      First published: