ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

تلنگانہ: ایویان انفلوئنزا کی نئی شکل، کسان اور پولٹری کا کاروبارکرنے والے خوفزدہ

راجستھان، مدھیہ پردیش، ہریانہ اور کیرالہ میں برڈ فلو کے معاملات کا پتہ چلا ہے۔کیرالہ نے پہلے ہی اس انفلوئنزا کو المیہ قراردیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Jan 10, 2021 12:07 PM IST
  • Share this:
تلنگانہ: ایویان انفلوئنزا کی نئی شکل، کسان اور پولٹری کا کاروبارکرنے والے خوفزدہ
علامتی تصویر

حیدرآباد۔ ایویان انفلوئنزا کی نئی شکل نے تلنگانہ کے کسانوں اور پولٹری کا کاروبارکرنے والوں کو خوفزدہ کردیا ہے۔ ان کو خدشہ ہے کہ اس فلو کے نتیجہ میں پولٹری کی صنعت کو کافی نقصان ہوگا کیونکہ چکن اور انڈوں کی قیمتیں روزانہ گرتی جا رہی ہیں تلنگانہ کی پولٹری صنعت جو کوویڈ19کے بحران سے باہر نکل رہی تھی، کو ایک اور نئے چیلنج کا سامنا کرناپڑرہا ہے۔


اس نئے بحران کی وجہ سے مرغیوں کو پالنے والوں کی تنظیموں نے اس انڈسٹری سے وابستہ افراد پرزور دیا کہ وہ قیمتوں میں کمی پر سرکاری کولڈ اسٹوریج کا استعمال کریں۔ ایسے کولڈ اسٹوریج کے مراکز میں کرایہ کم ہے۔ راجستھان، مدھیہ پردیش، ہریانہ اور کیرالہ میں برڈ فلو کے معاملات کا پتہ چلا ہے۔کیرالہ نے پہلے ہی اس انفلوئنزا کو المیہ قراردیا ہے۔ اس نے پولٹری کے انڈوں اور گوشت کی فروخت پر پابندی عائد کردی ہے۔ اس بیماری کو پھیلنے سے روکنے کے لئے احکام جاری کئے گئے ہیں۔


نیشنل ایگ کوآرڈی نیشن کمیٹی(این ای سی سی)حیدرآباد زون کے صدر نشین جی چندرشیکھر ریڈی نے کہا کہ انڈوں اور چکن کی قیمتوں میں کمی تشویش کی بات ہے۔ بدنیتی پر مبنی افواہوں کے کورونا لاک ڈاون کے دوران پھیلائے جانے سے پہلے ہی اس صنعت پر اثر پڑا اوراب ایک مرتبہ پھر موجودہ خوف کی وجہ سے اس کاروبار کو مشکل صورتحال کا سامناکرناپڑ رہا ہے۔


گذشتہ دو دنوں سے انڈوں کی فروخت میں بتدریج گراوٹ پیدا ہوگئی ہے۔ انڈے کی قیمت میں 60پیسے تک کمی ہوئی ہے۔اسی طرح چکن کی قیمت میں بھی بتدریج کمی ہوتی جارہی ہے۔ ذرائع نے کہا کہ یہ انڈسٹری جلد ہی اس انفلوئنزا سے باہر نکل پائے گی۔ یہ بحران عارضی نوعیت کا ہے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jan 10, 2021 12:07 PM IST