ہوم » نیوز » وطن نامہ

ٹالی گنج سے ہارنے کے بعد بنگال کے عوام پر بھڑکے بابل سپریو، کہا : بے رحم خاتون کو اقتدار سونپ دی

BJPs Babul Supriyo On TMC Bengal Win: مرکزی وزیر اور بی جے پی لیڈر نے ایک پوسٹ لکھ اسمبلی الیکشن کے نتائج کو بنگال کے عوام کی تاریخی غلطی قرار دیا ۔

  • Share this:
ٹالی گنج سے ہارنے کے بعد بنگال کے عوام پر بھڑکے بابل سپریو، کہا : بے رحم خاتون کو اقتدار سونپ دی
ٹالی گنج سے ہارنے کے بعد بنگال کے عوام پر بھڑکے بابل سپریو، کہا : بے رحم خاتون کو اقتدار سونپ دی ۔ @SuPriyoBabul

کولکاتہ : مغربی بنگال کی ٹالی گنج اسمبلی سیٹ پر انتخابی مات کھانے کے بعد بابل سپریو کا غصہ سوشل میڈیا پر باہر نکلا ہے ۔ مرکزی وزیر اور بی جے پی لیڈر نے ایک پوسٹ لکھ اسمبلی الیکشن کے نتائج کو بنگال کے عوام کی تاریخی غلطی قرار دیا ۔ انہوں نے لکھا : یہ بنگال کے عوام کی تاریخی غلطی ہے ، جنہوں نے بدعنوان ، نااہل اور بے رحم خاتون کو پھر سے اقتدار سونپ دئے ۔ حالانکہ بعد میں بابل سپریو نے اپنی اس پوسٹ کو ڈیلیٹ کردیا ۔


سپریو نے یہاں تک کہہ دیا کہ وہ ٹی ایم سی سپریمو اور مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی کو اسمبلی انتخابات میں جیت کی مبارکباد بھی نہیں دیں گے ۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے عوام کو بی جے پی کو ایک موقع نہیں دینے کیلئے بھی آڑے ہاتھوں لیا ۔




اپنی فیس بک پوسٹ میں بابل سپریو نے لکھا : میں نہ تو ممتا بنرجی کو بنگال میں ملی اس جیت کیلئے مبارکباد دینا چاہتا ہوں اور نہ یہی یہ کہنا چاہتا ہوں کہ عوام کے فیصلہ کا احترام کرتا ہوں ، مجھے ایسا لگتا ہے کہ بنگال کے عوام نے بھارتیہ جنتا پارٹی کو ایک موقع نہ دے کر ایک بدعنون ، نااہل ، بے ایمان سرکار اور ایک بے رحم خاتون کا انتخاب کرکے تاریخی غلطی کی ہے ۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے لکھا : ہاں ایک شہری ہونے کے ناطے میں لوگوں کے اس فصلہ کو تسلیم کروں گا ، بس اتنا ہی ۔ نا اس سے زیادہ اور نہ اس سے کم ۔


بابل سپریو کی اس پوسٹ پر جموں و کشمیر کے وزیر اعلی عمر عبداللہ نے چٹکی لیتے ہوئے کہا کہ کوشش کریں اور ایک چھوٹے بچے کی طرح رونا بند کریں ۔

دراصل بابل سپریو کا یہ غصہ اس وقت سامنے آیا جب وہ ٹی ایم سی کے قداور لیڈر اور پی ڈبلیو ڈی وزیر اروپ بسواس کے ہاتھوں ٹالی گنج سیٹ سے اسمبلی الیکشن ہار گئے ۔ بابل سپریو آسنسول سے ممبر پارلیمنٹ ہونے کے باوجود اسمبلی الیکشن میں بسواس کے سامنے ٹالی گنج سے امیدوار تھے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 02, 2021 11:38 PM IST