ہوم » نیوز » No Category

ایم آئی ایم لیڈر اویسی کا مہاگٹھ بندھن اور این ڈی اے پر نشانہ ، کہا :بی جے پی کے ساتھ کوئی خفیہ سمجھوتہ نہیں

حیدرآباد: بہار اسمبلی انتخابات میں زور آزمائی کرنے جا رہی ایم آئی ایم نے مهاگٹھ بندھن اور این ڈی اے پر زوردار حملہ کیا ہے۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ایم آئی ایم لیڈر اویسی کا مہاگٹھ بندھن اور این ڈی اے پر نشانہ ، کہا :بی جے پی کے ساتھ کوئی خفیہ سمجھوتہ نہیں
حیدرآباد: بہار اسمبلی انتخابات میں زور آزمائی کرنے جا رہی ایم آئی ایم نے مهاگٹھ بندھن اور این ڈی اے پر زوردار حملہ کیا ہے۔

حیدرآباد: بہار اسمبلی انتخابات میں زور آزمائی کرنے جا رہی ایم آئی ایم نے مهاگٹھ بندھن اور این ڈی اے پر زوردار حملہ کیا ہے۔ پارٹی کے سربراہ اسدالدین اویسی نے کہا کہ ان پارٹیوں کے ٹریک ریکارڈ میں زیادہ کچھ بولنے کیلئے نہیں ہے ۔ ساتھ ہی انہوں نے ان الزامات کو بھی مسترد کردیا کہ انہیں بھارتیہ جنتا پارٹی کی طرف سے میدان میں اتارا جا رہا ہے۔


آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے صدر نے کہا کہ ان کی پارٹی بہار کے سیمانچل کے علاقے میں انتخابات جیتنے کو لے کر سنجیدہ ہے اور یہ انتخابی ریاست میں حیدرآباد کی اس پارٹی کی مقبولیت کو پرکھنے کے لئے نہیں ہے۔


بہار میں اپنی پارٹی کے الیکشن لڑنے کے فیصلے کے بارے میں حیدرآباد سے لوک سبھا کے ایم پی نے کہا کہ سیاسی پارٹیوں نے انصاف اور ترقی نہیں کی ہے اور ان کا ٹریک ریکارڈ صاف طور پر بتاتا ہے کہ اصل خوشحالی یا انصاف نہیں ہوا ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہم نے اپنے آپ کو صرف سیمانچل کے علاقے تک محدود رکھنے کا فیصلہ کیا ہے اور ہمیں اب بھی اس بارے میں فیصلہ کرنا ہے کہ علاقے کی 24 سیٹوں میں سے ہم کتنی نشستوں پر انتخاب لڑیں ۔ جن حلقوں میں ایم آئی ایم انتخاب نہیں لڑ رہی ہے، وہاں پارٹی نے لوگوں سے بی جے پی کو شکست دینے اور کسی سیکولر امیدوار یا سیکولر اتحاد کو کامیاب بنانے کی اپیل کی ہے۔


اویسی نے یہ بھی کہا کہ اگر آپ سیمانچل کے علاقے کو دیکھتے ہیں تو 24 سیٹوں میں سے بی جے پی نے 2010 میں 13 سیٹیں جیتی تھیں۔کیا اس کے لئے میں ذمہ دار ہوں؟ اور مسلم نمائندگی کا اعداد و شمار کیا ہے؟ لہذا وہ بری طرح بے نقاب ہو رہے ہیں۔


انہوں نے کہا کہ ایم آئی ایم کا موقف بالکل واضح ہے کہ وہ سیمانچل کے علاقے کی ترقی اور انصاف کے معاملے پر لڑنا چاہتی ہے ۔ سیمانچل یا بہار میں کہیں بھی جہاں ہم الیکشن نہیں لڑ رہے، وہاں ہم بہار کے لوگوں سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ سیکولر امیدوار یا سیکولر خیمے کو ووٹ دیں۔ سیمانچل كے مسلم اکثریتی حلقوں میں قسمت آزمانے یا علاقے میں الیکشن جیتنے کے بارے میں سنجیدہ ہونے کے معاملے پر انہوں نے کہا کہ بے شک ہم سنجیدہ ہیں۔ ہم جہاں لڑ رہے ہیں وہاں جیتنا چاہتے ہیں اور ہمیں بہت محنت کرنی پڑے گی اور ہم لوگوں کا اعتماد جیتنے کے لئے سخت محنت کریں گے۔

First published: Sep 20, 2015 07:39 PM IST