உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    حج بھون کا نام سابق صدر عبد الکلام کے نام پر رکھنا چاہتی ہے بی جے پی

    کرناٹک حج بھون ۔ فائل فوٹو

    کرناٹک حج بھون ۔ فائل فوٹو

    یسور ریاست کے 18ویں صدی کے حکمراں ٹیپو سلطان کے نام پر رکھے گئے’ حج بھون‘ کا نام بدلنے کے منصوبہ پر مخالفت جاری ہے۔

    • Share this:
      میسور ریاست کے 18ویں صدی کے حکمراں  ٹیپو سلطان کے نام پر رکھے گئے’ حج بھون‘ کا نام بدلنے کے منصوبہ پر مخالفت جاری ہے۔ دریں اثنا بی جے پی لیڈر کے جی بوپا نے بنگلورو میں کہا کہ ان کی پارٹی سابق صدر جمہوریہ عبد الکلام کے نام پر ’حج بھون‘ کا نام رکھنا چاہتی ہے۔بوپیا نے نیوز ایچنسی پی ٹی آئی سے کہا ’ ریاستی صدر بی ایس یدورپا اور تمام دیگر لیڈران چاہتے ہیں کہ حج بھون کا نام ٹیپو سلطان کے بجائے سابق صدرعبد الکلام جی کے نام پر رکھا جانا چاہئے‘‘۔تاہم، بوپیا کو اس بات کا ڈر بھی ہے کہ اگر کرناٹک حکومت ٹیپو سلطان کے نام پر رکھے گئے حج بھون کا نام بدلے گی تو پوری ریاست میں فرقہ وارانہ تشدد پیدا ہو سکتا ہے۔

      قابل غور ہے کہ بنگلورو میں بی جے پی کی رکن پارلیمان شوبھا کارندلاجے نے کہا تھا کہ اگر حج بھون کو ٹیپوسلطان کا نام دیاجاتاہے ، تو اس کے خلاف احتجاج کیاجائےگا ۔ شوبھا کارندلاجے نے  یہ بھی کہا تھا کہ حج بھون کی بنیاد سابقہ بی جے پی حکومت میں رکھی گئی تھی۔ اس مقدس جگہ کوعازمین حج کے قیام کیلئے بنایاگیا ہے ، نہ کہ ٹیپوسلطان کا نام دینے کیلئے۔

       

      First published: