ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

سپریم کورٹ نے کی کرناٹک حکومت کی سرزنش ، تمل ناڈو کو چھ ہزار مکعب پانی دینے کا حکم

سپریم کورٹ نے کاویری پانی تنازعہ میں کرناٹک حکومت کے موقف پر آج شدید ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے اسے یکم تا چھ اکتوبر تمل ناڈو کو روزانہ 6000 مکعب پانی دینے کا حکم دیا

  • UNI
  • Last Updated: Sep 30, 2016 07:40 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سپریم کورٹ نے کی کرناٹک حکومت کی سرزنش ، تمل ناڈو کو چھ ہزار مکعب پانی دینے کا حکم
سپریم کورٹ نے کاویری پانی تنازعہ میں کرناٹک حکومت کے موقف پر آج شدید ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے اسے یکم تا چھ اکتوبر تمل ناڈو کو روزانہ 6000 مکعب پانی دینے کا حکم دیا

سپریم کورٹ نے کاویری پانی تنازعہ میں کرناٹک حکومت کے موقف پر آج شدید ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے اسے یکم تا چھ اکتوبر تمل ناڈو کو روزانہ 6000 مکعب پانی دینے کا حکم دیا۔

جسٹس دیپک مشرا اور جسٹس ادے امیش للت پر مشتمل بنچ نے کرناٹک حکومت کو آج پھٹکار لگاتے ہوئے خبردار کیا کہ وہ ایسے حالات پیدا نہ کرے کہ قانون کا پیمانہ لبریز ہوجائے۔ ہر حال میں کورٹ کے احکامات پر عمل ہونا ہی چاہئے۔

اس کے ساتھ ہی عدالت نے مرکزی حکومت کو 4اکتوبر تک کاویری منیجمنٹ بورڈ کا قیام کرنے کا حکم دیا ہے۔ عدالت نے کرناٹک، تمل ناڈو، کیرالہ اور پڈوچیري کو کل تک اپنے نمائندوں کے نام مرکزی حکومت کو پیش کرنے کو کہا ہے۔ بورڈ کے ارکان ہی دورہ کر کے عدالت کو چھ اکتوبر تک رپورٹ دیں گے۔

اس سے پہلے تمل ناڈو حکومت نے دلیل دی تھی کہ اس کے ساتھ اس معاملے میں برا سلوک کیا جا رہا ہے۔تمل ناڈو حکومت نے کہاکہ ہم اس مقدمے میں کچھ نہیں کہنا چاہتے۔ عدالت جو حکم کرے، ہم اسے تسلیم کرنے کو تیار ہیں۔

First published: Sep 30, 2016 07:40 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading