உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    POCSO Case: چتردرگا مروگھا مٹھ کے چیف کی گرفتاری! کیا کرناٹک کی سیاست پر پڑے گا اثر

    اب یہ روم کیس کے سلسلے میں تحقیقات کا مرکز بن گیا ہے۔

    اب یہ روم کیس کے سلسلے میں تحقیقات کا مرکز بن گیا ہے۔

    POCSO Case: لنگایت کرناٹک کی ووٹنگ آبادی کا 17 تا 18 فیصد کے قریب ہیں۔ جب کوئی مٹھ کا دورہ کرتا ہے، تو لوگوں کی بھیڑ جمع ہوتی ہے۔ چیف شیومورتی مروگھا شرنارو (Shivamurthy Murugha Sharanaru) کا میٹنگ روم کرناٹک کے سابق وزرائے اعظم اور وزرائے اعلیٰ کے ساتھ ان کی فریم شدہ تصویروں سے بھرا ہوا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Karnataka | Mumbai | Delhi | Hyderabad | Telangana
    • Share this:
      روہنی سوامی

      ’چتردرگا مروگھا مٹھ کے چیف کی گرفتاری سے مذہب کے ذریعہ لوگوں کا استحصال کرنے کا اصل چہرہ سامنے آیا ہے، جس کی جتنی مذمت کی جائے، وہ کم ہے‘ یہ کہنا ہے بنگلورو کے شہری شیو کمار راجہ کا، جو کہ ایک مقامی کالج میں پی جی کے طالب علم ہیں۔ جب بھی کرناٹک میں انتخابات قریب آتے ہیں۔ اسی دوران پارٹی کے سیاست دان بااثر مٹھوں کے سربراہوں سے ملاقاتیں کرتے ہیں تاکہ ان کا آشیرواد حاصل کر سکیں، جس کے نتیجے میں ان کے پیروکاروں کو ایک مضبوط پیغام جاتا ہے کہ ان کے مذہبی رہنما کس کے حق میں ہیں اور کس کے خلاف ہیں۔

      یہ تصویریں سیاسی طور پر مٹھ کے اثر و رسوخ اور جنوبی ریاست میں اقتدار میں آنے والے لیڈر یا پارٹی کے لیے سازگار حالات پیدا کرنے میں اس کے کردار کے بارے میں بہت کچھ کہتی ہے۔ کرناٹک میں بی جے پی حکومت کو اس معاملے سے نمٹنے کے لیے سختی سے چلنا پڑا۔ جبکہ اسے شرنارو کی گرفتاری سے پہلے اپنے پاؤں گھسیٹنے پر تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔ اس واقعہ کے چھ دن بعد پارٹی کے اندرونی ذرائع نے نیوز 18 کو بتایا کہ یہ ایک انتقامی اقدام ہے۔

      پارٹی کے ایک ذریعے نے کہا کہ پارٹی یہ دیکھنا چاہتی ہیں کہ لنگایت برادری اس کیس پر کیا رد عمل ظاہر کرے گی؟ جو کافی سنگین ہے۔ اگر صحیح طریقے سے نہیں نمٹا گیا تو پاسکو کیس مٹھ اور بی جے پی کی شبیہ کو بھی نقصان پہنچا سکتا ہے۔ پارٹی یہ سمجھنا چاہتی ہیں کہ لنگایت مٹھ کے دیگر قائدین کیسا ردِ عمل ہے۔ پہلے تو ہم نے انہیں سادھو کی حمایت کرتے دیکھا لیکن جیسے جیسے تفتیش گہری ہوتی گئی، انہوں نے خود کو دور کرنا شروع کر دیا، جو پارٹی کے لیے ایک مضبوط موقف اختیار کرنے کا اشارہ بھی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      Relationship:نئے لوگوں سے دوستی کرنے کیلئے ایسے شروع کریں بات چیت، ہر کوئی ہوجائے گا متاثر

      چتردرگا کا مروگراجندر مٹھ (Chitradurga mutt) بھی ایسا ہی ایک ادارہ رہا ہے۔ چتردرگا مٹھ ایک لنگایت ادارہ ہے اور اس کمیونٹی میں بہت سے سادھو بااثر ہیں جس سے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو بے پناہ حمایت حاصل ہے۔ لنگایت کرناٹک کی ووٹنگ آبادی کا 17 تا 18 فیصد کے قریب ہیں۔ جب کوئی مٹھ کا دورہ کرتا ہے، تو لوگوں کی بھیڑ جمع ہوتی ہے۔ چیف شیومورتی مروگھا شرنارو (Shivamurthy Murugha Sharanaru) کا میٹنگ روم کرناٹک کے سابق وزرائے اعظم اور وزرائے اعلیٰ کے ساتھ ان کی فریم شدہ تصویروں سے بھرا ہوا ہے۔ اب یہ روم پروٹیکشن آف چلڈرن انسٹنٹ سیکسوئل آفنس (POCSO) کیس کے سلسلے میں تحقیقات کا مرکز بن گیا ہے۔
      یہ بھی پڑھیں: 

      Mohali fair: موہالی میلے میں ہر جگہ خوف ہی خوف! جوئرائیڈ ہوا تباہ، 5 بچوں سمیت 10 افراد زخمی

      بی جے پی نے سادھو کے معاملے کا جائزہ لینے کے لیے اپنی داخلی میٹنگ میں فیصلہ کیا تھا کہ اسے قانون کے ذریعے سزا دینے کی ضرورت ہے اور پارٹی رہنماؤں کو فی الحال اس کی حمایت میں کوئی بیان نہیں دینا چاہیے۔ کیس سے دوری اختیار کرنے سے پارٹی کو متوازن موقف اختیار کرنے میں مدد ملے گی۔ اگر اپوزیشن اسے آئندہ انتخابات میں انتخابی ایشو کے طور پر اٹھانے کا فیصلہ کرتی ہے، تو اس پر بعد میں غور کیا جاسکتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: