உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اذان کے مواد آرٹیکل 25 / 26 کے تحت دیگر مذاہب کے حقوق کی خلاف وزری نہیں کرتے: کرناٹک HC

    اذان کے مواد آرٹیکل 25 / 26 کے تحت دیگر مذاہب کے حقوق کی خلاف وزری نہیں کرتے: کرناٹک HC

    اذان کے مواد آرٹیکل 25 / 26 کے تحت دیگر مذاہب کے حقوق کی خلاف وزری نہیں کرتے: کرناٹک HC

    Karnataka News: کرناٹک ہائی کورٹ نے کہا کہ آرٹیکل 25 اور آرٹیکل 26 کے تحت اذان کے مواد دیگر مذاہب کے حقوق کی خلاف ورزی نہیں کرتے ہیں ۔ عرضی میں الزام لگایا گیا تھا کہ اذان کے مود دیگر مذاہب کے ماننے والوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچاتے ہیں ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Karnataka | Bangalore | Mysore
    • Share this:
      بنگلورو: کرناٹک ہائی کورٹ نے پیر کو اذان سے متعلق ایک مفاد عامہ کی عرضی کا نمٹارہ کرتے ہوئے بڑا فیصلہ سنایا اور کہا کہ آئین ہند کے آرٹیکل 25 اور آرٹیکل 26 مذہبی رواداری کے اصول کی علامت ہیں جو ہندوستانی تہذیب کی ایک خاصیت ہے ۔ کورٹ نے کہا کہ آرٹیکل 25 اور آرٹیکل 26 کے تحت اذان کے مواد دیگر مذاہب کے حقوق کی خلاف ورزی نہیں کرتے ہیں ۔ عرضی میں الزام لگایا گیا تھا کہ اذان کے مود دیگر مذاہب کے ماننے والوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچاتے ہیں ۔

      عرضی گزارچندر شیکھر آر کی جانب سے پیش وکیل منجوناتھ ایس ہلوار نےکہا کہ اگرچہ اذان مسلمانوں کا ایک ضروری مذہبی عمل ہے۔ لیکن اذان میں استعمال ہونے والے اللہ اکبر کے الفاظ (ترجمہ : اللہ سب سے بڑا ہے) دوسروں کے مذہبی عقائد کو متاثر کرتے ہیں ۔ انہوں نے ریاست کی مساجد کو لاؤڈ اسپیکر کے ذریعہ اذان کے مواد کا استعمال کرنے سے روکنے کیلئے حکام سے کو ہدایت دینے کا بھی مطالبہ کیا ۔

       

      یہ بھی پڑھئے:  کسان لیڈروں کی وارننگ، 15 دن میں مطالبات نہیں ہوئے تسلیم تو تیزکریں گے آندولن


      عرضی میں اذان کے دوسرے الفاظ بھی تھے ۔ تاہم بنچ نے وکیل کو اس کو پڑھنے سے روک دیا ۔ بینچ نے زبانی ریمارکس کیے کہ اپنے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی نہ کریں، آپ نے یہ الفاظ سن کر کہا ہے کہ آپ کا حق پامال ہوا ہے تو آپ اسے کیوں پڑھ رہے ہیں ؟

       

      یہ بھی پڑھئے:  کیجریوال نے ٹویٹ کرکے لگایا بڑا الزام، کہا : 'دہلی میں آپریشن لوٹس فیل'


      بنچ نے کہا کہ آئین ہند کا آرٹیکل 25 (1) سبھی افراد کو اپنے مذہب کو آزاد طور پر ماننے ، اس پر عمل کرنے اور تشہیر کرنے کیلئے بنیادی حقوق فراہم کرتا ہے ۔ حالانکہ یہ حق مطلق حق نہیں ہے، لیکن امن عامہ ، اخلاقیات اور صحت کے ساتھ ساتھ  ہندوستان کے آئین کے حصہ 3 میں دیگر دفعات کے تابع ہے ۔

      اس کے ساتھ ہی عدالت نے افسران کو اس بات کو یقینی بنانے کی ہدایت دی کہ لاوڈ اسپیکر ، پی اے سسٹم اور آواز پیدا کرنے والے آلات و دیگر ساونڈ پروڈیوسنگ انسٹرومنٹس اور میوزیکل انسٹرومنٹس کو قابل اجازت ڈیسیبل سے زیادہ رات دس بجے سے صبح چھ بجے تک استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: