ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

گلبرگہ میں پولیس کے ذریعہ مسجد کے امام کی پٹائی سے لوگوں میں ناراضگی ، پولیس کمشنر نے کی معذرت خواہی

اقلیتی لیڈران نے پولیس کمشنر ستیش کمار سے ملاقات کی اور سخت برہمی کا اظہار کیا ۔ تحریر میں شکایت بھی درج کرائی اور قصوروار پولیس اہلکاروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ۔

  • Share this:
گلبرگہ میں پولیس کے ذریعہ مسجد کے امام کی پٹائی سے لوگوں میں ناراضگی ، پولیس کمشنر نے کی معذرت خواہی
گلبرگہ میں پولیس کے ذریعہ مسجد کے امام کی پٹائی سے لوگوں میں ناراضگی ، پولیس کمشنر نے کی معذرت خواہی

گلبرگہ میں ایک ایسا واقعہ پیش آیا ہے ، جس کو لے کر پولیس پر سوالات اٹھ رہے ہیں ۔ بتایا جاتا ہے کہ ایک امام کب پولیس نے کچھ پوچھے بغیر ہی پٹائی شروع کردی ، جس کی وجہ سے امام کو اپنی گاڑی اور چپل چھوڑ کر واپس گھر کی جانب جانا پڑگیا ۔ یہ واقعہ گلبرگہ یونیورسٹی پولیس اسٹیشن حدود میں ٹیپو چوک رنگ روڈ پر پیش آیا ، جہاں پر مسجد عائشہ واقع ہے ۔


بتایا جاتا ہے کہ مسجد کے امام مولانا ذاکر رشادی اپنے بھتیجے کے ساتھ گاڑی کی پیچھے والی سیٹ پر بیٹھ کر مغرب کی نماز کیلئے مسجد کی جانب جا رہے تھے ، تبھی ایک پولیس جیپ سے دو کانسٹبل اور ایک پولیس انسپکٹراتر ے اور بغیر کچھ پوچھے ہی امام کی پٹائی شروع کر دی ۔ بقول مولانا ذاکر نہ تو پولیس والے کچھ سن رہے تھے اور نہ سننا چاہتے تھے ، بس پٹائی شروع کر دی ۔


ادھر یہ واقعہ منظر عام پر آنے کے بعد بدھ کو کچھ اقلیتی لیڈران نے پولیس کمشنر ستیش کمار سے ملاقات کی اور سخت برہمی کا اظہار کیا ۔ تحریر میں شکایت بھی درج کرائی اور قصوروار پولیس اہلکاروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ۔ اقلیتی لیڈروں نے پولیس کی اس کارروائی کو مخصوص طبقہ کے خلاف دانستہ کارروائی قرار دیا ۔ جس پر پولیس کمشنر سے محکمہ کی جانب سے معذرت خواہی کر لی ۔ ساتھ ہی ذمہ دار پولیس افسران کے خلاف جانچ کرکے کارروائی کرنے کی بھی یقین دہانی کرائی ۔

First published: Apr 23, 2020 08:22 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading