ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

حیدرآباد : کورونا وائرس سے فوت شخص کی غائب لاش کا معمہ حل ، جانئے کیا ہے اصل معاملہ

شناخت کی غلطی کی وجہ سے ایک متوفی کے ورثا نے دوسرے متوفی شخص کی نعش کو تکفین کیلئے منتخب کیا تھا ۔

  • Share this:
حیدرآباد : کورونا وائرس سے فوت شخص کی غائب لاش کا معمہ حل ، جانئے کیا ہے اصل معاملہ
علامتی تصویر

حیدرآباد کے علاقہ پہاڑی شریف کے ایک شخص محمد کو کورونا سے متاثر ہونے پر گاندھی اسپتال میں داخل کروایا گیا تھا ، جہاں ان کا انتقال ہوگیا ۔ اطلاع ملنے پر ان کے اراکین خاندان نے گاندھی ہاسپٹل پہنچ کر ان کی نعش کی شناخت کی ، جس کے بعد کووڈ پروٹوکول کے مطابق اسپتال اسٹاف کی مدد سے حیدرآباد کے مضافات میں بالا پور قبرستان میں انکی تدفین کر دی گئی ۔ لیکن دوسرے ہی دن مرحوم محمد کے گھر والوں کو  پھر ایک بار گاندھی ہاسپٹل طلب کیا گیا ، جہاں انہیں پتہ چلا کہ ایک دن پہلے انہوں نے جس نعش کی شناخت کی تھی ، وہ کسی اور کی تھی جبکہ ان کے سامنے محمد کی نعش رکھی تھی ۔


دراصل حیدرآباد کے علاقہ مہدی پٹنم کے ایک شخص راشد علی خان کو 9 جون کو سانس میں تکلیف کی شکایت پر پہلے ایک نجی اسپتال اور بعد میں گاندھی اسپتال میں داخل کروایا گیا ۔ دس جون کی شام کو راشد کا انتقال ہو گیا ۔ اسی رات کو راشد کے افراد خاندان کو اس کی اطلاع دی گئی ۔ غم سے نڈھال راشد کے افراد خاندان 11 جون کو نعش کی شناخت کے لئے اسپتال پہنچے ، تو انہیں معلوم ہوا کہ مردہ خانہ میں راشد علی خان کی نعش موجود نہیں ہے ۔ اس دن گاندھی اسپتال میں جونئیر ڈاکٹرس کی ہڑتال کی وجہ سے افرا تفری کی ماحول تھا ۔ اسپتال اسٹاف نے راشد علی خان کے گھر والوں سے کہا کہ وہ اس کی تحقیقات کریں گے ۔




اس کے بعد ہاسپٹل کے عملہ نے ان تمام متوفی اشخاص کے خاندانوں سے رابطہ قائم کیا ، جن کے اجسام کو شناخت کے بعد ایک دن پہلے تکفین یا آخری رسومات کیلئے اسپتال سے باہر بھیجا گیا تھا ۔ ہر ایک کو مرحوم کی  تصویر بھیجنے کے لئے کہا گیا تھا ۔ اس طرح 18 خاندانوں سے رابطہ کے بعد انہیں اس بات کا پتہ چلا کہ پہاڑی شریف کے محمد کی شکل ارشد علی خان سے ملتی جلتی ہے ، دونوں کے چہرے پر داڑھی ہونے کی وجہ سے محمد کے افراد خاندان نے غلط فہمی کی بنا ارشد کو محمد سمجھ لیا ، جس کے بعد ارشد علی خان کو بالا پور قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا ۔ جبکہ محمد کی نعش گاندھی اسپتال کے مردہ خانہ میں محفوظ تھی۔

گہرے صدمے اور غم میں ڈوبے ارشد علی خان کے افراد خاندان کو بالاپور قبرستان لے جا کر ان کی قبر کا دیدار کروایا گیا ، جبکہ محمد کو بھی آج  12 جون کو اسی قبرستان میں شام کو تدفین کردیا گیا ۔ اس طرح ارشد علی خان کی گم شدہ نعش کا پتہ تو چل گیا ، لیکن ان کے افراد خاندان ان کی تدفین سے پہلے ان کا دیدار نہیں کرسکے ۔
First published: Jun 12, 2020 06:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading