உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    فاروق عبداللہ کو حراست میں لینا شرمناک، ڈی ایم کے سربراہ اسٹالن نے فوراً رہا کئے جانے کا مطالبہ کیا

    ڈی ایم کے سربراہ اسٹالن نے فاروق عبداللہ کو فوراً رہا کئے جانے کا مطالبہ کیا۔

    ڈی ایم کے سربراہ اسٹالن نے فاروق عبداللہ کو فوراً رہا کئے جانے کا مطالبہ کیا۔

    اسٹالن نے اتوارکوٹوئٹ کیا ’’82 سالہ سابق مرکزی وزیراورسابق وزیراعلی فاروق عبداللہ کو بغیرکسی بنیاد پرپی ایس اے قانون کے تحت حراست میں لینا ہماری جمہوری روایات اورآئینی اقدارکےلئے شرمناک ہے۔ میں ان کی فوری رہائی کا مطالبہ کرتا ہوں‘‘۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      چنئی: دراوڑمنتركشگم (ڈی ایم کے) سربراہ ایم کےاسٹالن نے جموں و کشمیرکے سابق وزیر اعلی فاروق عبداللہ کو پبلک سیفٹی ایکٹ (پی ایس اے) کےتحت حراست میں لئےجانےکوآئینی اقداراورجمہوری روایات کےلئےشرمناک قراردیتےہوئےان کی فوری طورپررہائی کا مطالبہ کیا ہے۔ اسٹالن نےاتوارکوٹوئٹ کیا ’’82 سالہ سابق مرکزی وزیراورسابق وزیراعلی فاروق عبداللہ کوبغیرکسی بنیاد پرپی ایس اے قانون کے تحت حراست میں لینا ہماری جمہوری روایات اورآئینی اقدارکےلئے شرمناک ہے۔ میں ان کی فوری رہائی کا مطالبہ کرتا ہوں‘‘۔

      قابل ذکرہےکہ پانچ اگست 2019 کو جموں و کشمیر کوخصوصی ریاست کا درجہ دینے والے والے آرٹیکل 370 اور 35 اے کو منسوخ کئے جانے کے بعد سے سابق وزیراعلیٰ فاروق عبداللہ کو پی ایس اے کے تحت حراست میں لیا گیا ہے۔ ان کےعلاوہ  سابق وزیراعلیٰ عمر عبداللہ اورپی ڈی پی سربراہ اورسابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کوحراست میں رکھا گیا ہے۔ واضح رہےکہ فاروق عبداللہ کی حراست کی مدت میں کل مزید تین ماہ کےلئے توسیع کردی گئی۔ کانگریس، ڈی ایم کے، مروملارچی دراوڑمنتركشگم سمیت مختلف سیاسی پارٹیاں فاروق عبداللہ کی رہائی کا مطالبہ کررہی ہیں۔ پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس میں بھی سابق وزیراعلی کےحراست میں لئے جانےکا مسئلہ زوروشورسےاٹھا تھا۔
      First published: