ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

گلبرگہ : ڈاکٹر رکن الدین ناصب قریشی کی دوسری کتاب مسیحا کیسے کیسے منظر عام پر

اردو ادب اور میڈیکل سائنس دو الگ الگ میدان ہیں۔ دونوں میدانوں میں خود کو بہت کم لوگوں نے ہی منوایا ہے۔

  • ETV
  • Last Updated: Feb 22, 2018 11:11 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
گلبرگہ : ڈاکٹر رکن الدین ناصب قریشی کی دوسری کتاب مسیحا کیسے کیسے منظر عام پر
اردو ادب اور میڈیکل سائنس دو الگ الگ میدان ہیں۔ دونوں میدانوں میں خود کو بہت کم لوگوں نے ہی منوایا ہے۔

گلبرگہ : اردو ادب اور میڈیکل سائنس دو الگ الگ میدان ہیں۔ دونوں میدانوں میں خود کو بہت کم لوگوں نے ہی منوایا ہے۔ ان میں گلبرگہ کے ڈرمیٹالوجسٹ ڈاکٹر ناصب قریشی کا نام شامل کیا جا سکتا ہے، جو دونوں میدانوں میں متوازی کام کر رہے ہیں۔ ڈاکٹر ناصب قریشی کی دوسری کتاب ’’ مسیحا کیسے کیسے ‘‘ کی رسم اجرا عمل میں آیا۔

ڈاکٹر رکن الدین ناصب قریشی کا نام گلبرگہ کے اردو حلقوں میں محتاج تعارف نہیں ہے۔ کہنے کو تو وہ ایم بی بی ایس، ایم ڈی ڈرمیٹالوجسٹ ہیں ، لیکن ساتھ ہی اردو شعرو ادب سے بھی کافی لگاؤ ہے۔ طبی تحقیق پر اردو اخبارات میں مسلسل لکھتے رہتے ہیں۔ اپنی دوسری تصنیف ’’ مسیحا کیسے کیسے‘‘ میں ڈاکٹر قریشی نے گلبرگہ و کرناٹک کے ماہر و مشہور ڈاکٹرس کی زندگیوں پر روشنی ڈالی ہے۔

بارگاہ بندہ نوازؒ کے جانشین سجادہ نشین سید علی حسینی کے ہاتھوں اس کتاب کا رسم اجرا عمل میں آیا۔ مختلف شعبہ حیات سے تعلق رکھنے والوں نے اس موقع پر اظہار خیال کیا۔ مقررین نے ڈاکٹر ناصب قریشی کو طبیب کے ساتھ ادیب قرار دیا۔ ڈاکٹر ناصب قریشی ان دنوں پیشہ درس وتدریس سے وابستہ ہیں۔ اس تقریب میں ان کے شاگردوں کی بھی ایک بڑی تعداد موجود تھی۔

First published: Feb 22, 2018 11:11 PM IST