ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

شہر گلستان بنگلورو میں پوری خوشیوں ، شادمانیوں ، مسرتوں کے ساتھ منایا گیا جشن میلاد

حکومت کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے کہیں بھی جلوس برآمد نہیں ہوئے ۔ لیکن شہر کی تمام مسجدوں میں عید میلاد النبی کی پرنور محفلیں منعقد ہوئیں ۔

  • Share this:
شہر گلستان بنگلورو میں پوری خوشیوں ، شادمانیوں ، مسرتوں کے ساتھ منایا گیا جشن میلاد
شہر گلستان بنگلورو میں پوری خوشیوں ، شادمانیوں ، مسرتوں کے ساتھ منایا گیا جشن میلاد

بنگلورو میں کورونا وبا کے درمیان جشن عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ و سلم پوری خوشیوں ، شادمانیوں ، مسرتوں کے ساتھ  منایا گیا ۔ حالانکہ گزشتہ سال کے مقابلے اس بار شہر میں اسلامی نشانیوں کی نمائش کچھ کم نظر آئی ۔ سڑکوں پر سجاوٹ بھی کم تھی ، اس کے باوجود عاشقان رسول صلی اللہ علیہ و سلم نے پورے جوش و جذبہ کے ساتھ آقا کی آمد کا جشن منایا ۔ مسلمانوں کی کثیر تعداد والے علاقے شیواجی نگر، چامراج پیٹ ، ٹیانری روڈ، ناگوار، آر ٹی نگر، شانتی نگر اور چند دیگر علاقوں میں خاص رونق دیکھنے کو ملی ۔ یہاں جگہ جگہ اسلامی نشانیوں کی نمائش دیکھنے کو ملی ۔ سڑکوں، چوراہوں کو سجاتے ہوئے، مٹھائیاں تقسیم کرتے ہوئے جشن میلاد منایا گیا ۔


حکومت کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے کہیں بھی جلوس برآمد نہیں ہوئے ۔ لیکن شہر کی تمام مسجدوں میں عید میلاد النبی کی پرنور محفلیں منعقد ہوئیں ۔ آج چونکہ جمعہ کا دن بھی تھا تو فرزندان توحید نے دوہری خوشی محسوس کرتے ہوئے جشن ولادت مصطفی صلی اللہ علیہ و سلم منایا ۔ جمعہ کے خطبوں کے موقع پر علما کرام نے سیرت النبی صلی اللہ علیہ و سلم پر روشنی ڈالی ۔ اس موقع پر شہر کی اہم درگاہوں کو بھی سجایا گیا تھا اور یہاں بھی درود و سلام کی محفلیں منعقد ہوئیں ۔ مسجد قمر، مسجد غریب نواز اور چند ایک مقامات پر موئے پاک کی زیارت کا بھی اہتمام کیا گیا۔


حکومت کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے کہیں بھی جلوس برآمد نہیں ہوئے ۔ لیکن شہر کی تمام مسجدوں میں عید میلاد النبی کی پرنور محفلیں منعقد ہوئیں ۔
حکومت کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے کہیں بھی جلوس برآمد نہیں ہوئے ۔ لیکن شہر کی تمام مسجدوں میں عید میلاد النبی کی پرنور محفلیں منعقد ہوئیں ۔


دوسری جانب بنگلورو کے ڈی جے ہلی اور کے جی ہلی علاقے میں چند علما کرام اور مقامی سماجی کارکنوں نے مل کر تحریک پیغام رحمت العالمین کا آغاز کیا ۔ اس تحریک کے ذریعہ برادران وطن میں اسلامی لٹریچر تقسیم کیا جارہا ہے ۔ حضرت محمد صلی اللہ علیہ و سلم پر انگریزی اور کنڑا زبانوں میں کتابچے تقسیم کئے جارہے ہیں ۔ آج جشن میلاد کے موقع پر سڑکوں سے گزرنے والے ہندو بھائیوں کو مٹھائی کے ساتھ اسلام کا لٹریچر پیش کیا گیا ، جسے انہوں نے بڑی خوشی کے ساتھ قبول کیا ۔ واضح رہے کہ ڈی جے ہلی اور کے جی ہلی میں رسول اکرم صلی اللہ علیہ و سلم کی شان میں گستاخی کے بعد تشدد پھوٹ پڑا تھا۔ موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے علاقے کے علما کرام نے خصوصی مہم شروع کی ہے ۔ اسلام کے پیام امن و انصاف اور حضرت محمد صلی اللہ علیہ و سلم کی تعلیمات کو عام کرنے کی نمایاں کوشش یہاں دیکھنے کو ملی ۔

جشن میلاد النبی صلی اللہ علیہ و سلم کے موقع پر مسجد اویسی قرنی میں شجرکاری کی مہم شروع کی گئی ۔ چند ایک جگہوں پر شربت اور شیرنی کی تقسیم عمل میں آئی ۔ جگہ جگہ عوام کیلئے ضیافت کا انتظام کیا گیا تھا ۔ مسجدوں میں منعقدہ جلسوں میں موجودہ حالات کی روشنی میں علما کرام نے خطاب کیا ۔

پیغمبر اسلام کی سیرت اور تعلیمات پر عمل کرنے اور انہیں دوسروں تک پہنچانے کی تلقین کی گئی ۔
پیغمبر اسلام کی سیرت اور تعلیمات پر عمل کرنے اور انہیں دوسروں تک پہنچانے کی تلقین کی گئی ۔


پیغمبر اسلام کی سیرت اور تعلیمات پر عمل کرنے اور انہیں دوسروں تک پہنچانے کی تلقین کی گئی ۔ علما نے کہا کہ غریبوں، مزدوروں، یتیموں، بیواؤں، مظلوموں کے حقوق ادا کرنے کی  آپ صلی اللہ علیہ و سلم کی تعلیمات سے دنیا میں حق اور انصاف قائم ہو سکتا ہے۔ نبی پاک کی تعلیمات پر عمل کرتے ہوئے دنیا میں حق اور انصاف قائم کیا جاسکتا ہے ۔ سیرت النبی کے جلسوں کے ذریعہ دنیا میں امن و امان ، ملک کی ترقی اور خوشحالی ، کورونا وبا کے خاتمے کیلئے خصوصی طور پر دعائیں مانگی گئیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Oct 30, 2020 11:42 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading