ہوم » نیوز » وطن نامہ

چیف الیکشن کمشنر کے ساتھ ایکسکلوزیو بات چیت ، 'بنگال میں غیر جانبدارانہ الیکشن کروانے کی تیاری'

چیف الیکشن کمشنر سنیل اروڑہ نے کہا کہ کسی چیز پر حلف نامہ تو ہم نہیں دیتے ، ہماری کوشش یہی ہے کہ آزادانہ اور غیرجانبدارانہ انتخابات منعقد کرائیں ۔ ابھی تک بھگوان نے کامیابی دی ہے ۔ الیکشن کمیشن کی کوششوں کو امید کرتے ہیں کہ مستقبل میں بھی کامیابی ملے گی ۔

  • Share this:
چیف الیکشن کمشنر کے ساتھ ایکسکلوزیو بات چیت ، 'بنگال میں غیر جانبدارانہ الیکشن کروانے کی تیاری'
چیف الیکشن کمشنر سنیل اروڑہ ۔ فائل فوٹو ۔

نیرج کمار


اگلے سال ملک کی پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات ہونے والے ہیں ، جن میں سے سب سے اہم مغربی بنگال کا اسمبلی الیکشن مانا جارہا ہے ۔ مغربی بنگال میں سیاسی تشدد کا بھی امکان ظاہر کیا جارہا ہے ۔ کچھ دنوں پہلے ہی بی جے پی کے قومی صدر جے پی نڈا کے قافلہ پر مغربی بنگال میں حملہ ہوا تھا ۔ بی جے پی نے موجودہ ممتا حکومت پر تشدد کی حمایت کرنے کا الزام لگایا تھا ۔ ان سب کے درمیان چیف الیکشن کمشنر سنیل اروڑہ نے نیوز 18 کے ساتھ خاص بات چیت کی اور انتخابات سے متعلق سوالات کے کھل کر جواب دئے ۔


گفتگو کی کچھ خاص اہم باتیں


سوال : سال 2020 میں دنیا جب کورونا کا قہر جھیل رہی تھی تو سوال تھا کہ کیا الیکشن ہوپائیں گے ۔ ایسے میں بہار اسمبلی انتخابات کا فیصلہ کیا گیا ۔ کورونا کا قہر اب بھی جاری ہے اور اگلے سال پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات ہونے والے ہیں ۔ آپ لوگ کہتے تھے کہ بہار اسمبلی انتخابات کرانے کا فیصلہ کورونا دور میں صحیح فیصلہ ہے اور اس کو آپ لوگوں نے ثابت بھی کیا ۔ پانچ ریاستوں کے اسمبلی انتخابات کی کیسی تیاری ہے؟ ۔

اس سوال کے جواب میں چیف الیکشن کمشنر سنیل اروڑہ نے کہا کہ دیکھئے جو ہمارا سسٹم ہوتا ہے ، کافی بیک گراونڈ ہوم ورک ہوتا ہے ۔ ہمارے سکریٹری جنرل نے بنگال سمیت پانچ ریاستوں کو لے کر سی بی ایس سی کے لوگوں کے ساتھ میٹنگ کی ہے تاکہ بچوں کے امتحانات کے بارے میں جانکاری حاصل کی جاسکے اور الیکشن کے وقت کے ساتھ کوئی ٹکراو نہ ہو ۔ وزارت داخلہ کے افسران کے ساتھ بھی سیکورٹی کو لے کر میٹنگ ہوئی ہے ، یہ سارے مراحل ختم ہوچکے ہیں ۔

بنگال کے ڈپٹی الیکشن کمشنر پہلے بنگال کے دور پر گئے ۔ پیر کو تمل ناڈو اور پڈوچیری بھی افسران جائیں گے ۔ الیکشن کمیشن کا جو پہلا مرحلہ ہوتا ہے کہ ایک مرتبہ افسر جاکر آتے ہیں ، پھر انتخابات منعقد کئے جاتے ہیں ، اس کی شروعات ہوچکی ہے ۔

سوال : انتخابی تیاری کا عمل شروع ہوچکا ہے ۔ بنگال کے الیکشن کو جس طرح سے دیکھا جارہا ہے کہ یہ کہا جاسکتا ہے کہ بہت جارحانہ الیکشن ہوگا ۔ سیاسی طور پر بی جے پی کے صدر پر حملہ ہوا ، بی جے پی کا ایک وفد بھی آپ سے ملا ، آپ سے نیم فوجی دستہ کی تعیناتی اور فورا انتخابی ضابطہ اخلاق نافذ کرنے کا مطالبہ کیا گیا ، آپ کیا کہیں گے ؟

جواب میں چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ سیاسی نقطہ نظر سے کیا کیا پریشانیاں ہیں ، اس پر نظر آپ لوگ رکھتے ہیں اور سرخیاں بھی بناتے ہیں ۔ کئی مرتبہ نہ بھی ہوتا ہے تو آپ لوگ سرخیاں بنادیتے ہیں ، لیکن اس میں تھا تو آپ نے سرخی بنائی ۔ بی جے پی کا وفد ہمارے پاس آیا تھا ۔ انہیں ہم نے الیکشن کمیشن کے اختیارات کے دائرے کے بارے میں بتایا ۔ بنگال سے وابستہ ڈی ای سی دورے کے بعد جو جانکاری دیں گے اس کے بعد قانون کے مطابق ہم فیصلہ کریں گے ۔

اس سوال کے جواب میں کہ کیا مغربی بنگال میں تشدد سے پاک انتخابات ہوں گے اس بات کا آپ کو یقین ہے ؟ چیف الیکشن کمشنر سنیل اروڑہ نے کہا کہ کسی چیز پر حلف نامہ تو ہم نہیں دیتے ، ہماری کوشش یہی ہے کہ آزادانہ اور غیرجانبدارانہ انتخابات منعقد کرائیں ۔ ابھی تک بھگوان نے کامیابی دی ہے ۔ الیکشن کمیشن کی کوششوں کو امید کرتے ہیں کہ مستقبل میں بھی کامیابی ملے گی ۔

یہ پوچھے جانے پر کہ کتنے مراحل میں انتخابات ہوں گے اور کب اعلان ہوگا؟ چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ پریس کانفرنس میں الیکشن کا اعلان کریں گے ۔ آپ کو بھی مدعو کریں گے تب پتہ چلے گا کہ کتنے مراحل میں الیکشن ہوگا ۔

جموں و کشمیر میں اسمبلی انتخابات کو لے کر پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے جموں و کشمیر میں لوک سبھا انتخابات بھی کرائے تھے ۔ کچھ حلقوں میں تو تین مراحل میں انتخابات کرانے پڑے تھے ۔ جب الیکشن کمیشن کی ذمہ داری آئے گی تو الیکشن کمیشن نہ کبھی ذمہ داری سے پیچھے ہٹا ہے اور نہ ہٹے گا ۔ ہم لوگ اپنی ذمہ داری پورا کریں گے ۔

اس سوال کہ جواب میں کہ ایک ملک ایک الیکشن کو لے کر وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ ہے اب بات چیت کی ضرورت نہیں اب یہ ملک کی ضرورت ہے ، الیکشن کمیشن کتنا تیار ہے ؟ چیف الیکشن کمشنر سنیل اروڑہ نے کہا کہ ہم اس کیلئے تیار ہیں ۔ سبھی ترمیمات جو لیجسلیچر کرتا ہے اگر ہوتی ہیں تو الیکشن کمیشن تیار ہے ۔ الیکشن کمیشن نہ اس کیلئے مجاز ہے اور نہ کرتا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Dec 21, 2020 02:46 PM IST