உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Bipin Rawat Helicopter Crash: CDS بپن راوت کی موت پر سابق ایئرفورس چیف نے کہا -20 منٹ کی فلائٹ میں کیا ہوا بتانا مشکل

    کہا جارہا ہے کہ Mi17 اس سیریز کا لیٹسٹ ماڈل ہے۔ اسے 2008 اور 2018 کے درمیان خریدا اور شامل کیا گیا تھا۔

    کہا جارہا ہے کہ Mi17 اس سیریز کا لیٹسٹ ماڈل ہے۔ اسے 2008 اور 2018 کے درمیان خریدا اور شامل کیا گیا تھا۔

    یہ حادثہ آخر کیسے ہوا اس کو لے کر ایکسپرٹس الگ الگ رائے رکھ رہے ہیں۔ اس ہیلی کاپٹر کو شامل کرنے والے انڈین ایئرفورس کے فارمر چیف ایئر چیف مارشل فلی ایچ میجر کے مطابق 20-25 منٹ کے دوران حادثہ کیسے ہوا یہ بتانا فی الحال مشکل ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ملک کے پہلے سی ڈی ایس جنرل بپن راوت، اُن کی اہلیہ مدھولیکا اور فوج کے 11 دیگر عہدیداروں کی بدھ کو ہیلی کاپٹر حادثے میں موت (GN Bipin Rawat Helicopter Crash) ہوگئی۔ حادثے کو لے کر جانچ کے احکامات دے دئیے گئے ہیں۔ یہ حادثہ آخر کیسے ہوا اس کو لے کر ایکسپرٹس الگ الگ رائے رکھ رہے ہیں۔ اس ہیلی کاپٹر کو شامل کرنے والے انڈین ایئرفورس کے فارمر چیف ایئر چیف مارشل فلی ایچ میجر کے مطابق 20-25 منٹ کے دوران حادثہ کیسے ہوا یہ بتانا فی الحال مشکل ہے۔

      این ڈی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے فلی ایچ میجر نے کہا کہ ویلنگٹن میں ہیلی پیڈ کی اونچائی بھی زیادہ نہیں ہے۔ یہ 5000 فٹ کی اونچائی پر واقع ہے۔ اُن کے مطابق ایسے حالات میں لینڈنگ کو لے کر کوئی پریشانی نہیں ہوئی ہوگی۔ انہوں نے آگے کہا، ’سولور سے ویلنگٹن کے لئے اُڑان کا وقت صرف 20 سے 25 منٹ ہے۔ اتنی کم اُڑان کی مدت میں کیا غلط ہوسکتا ہے، یہ بتانا فی الحال بہت مشکل ہے۔‘

      بہت محفوظ مانا جاتا ہے Mi17 ہیلی کاپٹر
      بتادیں کہ Mi17 ہیلی کاپٹر ہندوستان نے روس سے خریدا ہے۔ کہا جارہا ہے کہ یہ اس سیریز کا لیٹسٹ ماڈل ہے۔ اسے 2008 اور 2018 کے درمیان خریدا اور شامل کیا گیا تھا۔ ان ہیلی کاپٹر کو ’بہترین‘ اور ’محفوظ‘ بتاتے ہوئے، سابق فوجی عہدیداروں اور ڈیفنس ایکسپرٹس کا کہنا ہے کہ سیاچن گلیشیئر جیسے چیلنجنگ حالات اور مقامات میں اُن کا استعمال سینکڑوں گھنٹوں سے کیا جارہا ہے۔ ان پر بھروسہ اور سیکورٹی نے اسے صدر اور وزیراعرظم سمیت وی آئی پی کے لئے پسندیدہ ہیلی کاپٹر بنادیا ہے۔

      جانچ کے احکامات
      فضائیہ کے سابق سربراہ ایئر چیف مارشل فلی ایچ میجر کے مطابق ہیلی کاپٹر میں وائس ریکارڈر اور فلائٹ ڈیٹا ریکارڈ ہے۔ اس سے حادثے کے بارے میں صحیح وجوہات کا پتہ لگ پائے گا۔ بتادیں کہ حادثے کو لے کر پہلے ہی جانچ کے احکامات دے دئیے گئے ہیں۔ بتادیں کہ تمل ناڈو کے کننور کے پاس کہرے کی وجہ سے فوج کا ہیلی کاپٹر بدھ کو حادثے کا شکار ہوگیا تھا۔ حادثے میں جنرل رات سمیت 13 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ راوت ویلنگٹن میں واقع ڈیفنس سروسز اسٹاف کالج میں لیکچر دینے جارہے تھے۔


      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: