ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کیرالہ کے گورنر عارف محمد خان نے کہا۔ آئینی نہیں ہے اسمبلی میں سی اے اے کے خلاف پاس تجویز

کیرالہ اسمبلی میں دو دن پہلے شہریت ترمیمی قانون 2019 کے خلاف تجویز پاس ہوئی جس پر ریاست کے گورنر عارف محمد خان نے کہا ہے کہ اس پاس کردہ تجویز کا نہ تو کوئی قانونی جواز ہے اور نہ ہی یہ آئینی ہے۔

  • Share this:
کیرالہ کے گورنر عارف محمد خان نے کہا۔ آئینی نہیں ہے اسمبلی میں سی اے اے کے خلاف پاس تجویز
کیرالہ کے گورنر عارف محمد خان

نئی دہلی۔ کیرالہ اسمبلی میں دو دن پہلے شہریت ترمیمی قانون 2019 ( سی اے اے) کے خلاف تجویز پاس ہوئی۔ اب کیرالہ کے گورنر عارف محمد خان نے کہا ہے کہ اس پاس کردہ تجویز کا نہ تو کوئی قانونی جواز ہے اور نہ ہی یہ آئینی ہے۔ انہوں نے جمعرات کو کہا کہ شہریت مرکزی حکومت کا موضوع ہے۔ اس سے ریاست کو کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ اس سے پہلے بدھ کو مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے کہا تھا کہ ریاستوں کو شہریت قانون نافذ کرنا ہی ہو گا۔ اس دوران انہوں نے ریاستی حکومتوں کے لئے آئینی التزام بھی بتائے۔ وہیں، کیرالہ کے وزیر اعلیٰ پی وجین نے کہا کہ ریاستی اسمبلیوں کے اپنے خصوصی استحقاق ہیں۔


کیرالہ کی حکومت نے 31 دسمبر 2019 کو شہریت قانون کے خلاف ریاستی اسمبلی میں تجویز پیش کی۔ یہ تجویز وزیر اعلیٰ پی وجین اور کانگریس لیڈر اور ایوان میں اپوزیشن لیڈر رمیش چنیتھلا نے پیش کی تھی جو پاس بھی ہو گئی۔


سی اے اے کے خلاف ملک بھر میں احتجاج جاری ہے: فائل فوٹو


اس دوران وجین نے کہا تھا ’’ کیرالہ میں سیکولرزم، یونانیوں، رومن اور عربوں کی ایک طویل تاریخ ہے۔ ہر کوئی ہماری سرزمین پر پہنچ گیا۔ عیسائی اور مسلمان آغاز میں کیرالہ پہنچے۔ ہماری روایت سب کو ساتھ لے کر چلنے کی ہے۔ میں یہ واضح کر دینا چاہتا ہوں کہ کیرالہ میں کوئی حراستی مرکز نہیں بنے گا‘‘۔ اسمبلی میں کانگریس اور مارکسوادی کمیونسٹ پارٹی نے وجین کی پیش کردہ تجویز کی حمایت کی۔
First published: Jan 02, 2020 01:37 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading