ہوم » نیوز » No Category

گلبرگہ کے مسلم اکثریتی علاقوں میں ڈ ینگو مچھر کے ڈنک کا شکار بن رہےعوام

گلبرگہ۔ گلبرگہ کے مسلم اکثریتی علاقوں میں ڈ ینگو کے معاملے سامنے آ رہے ہیں۔

  • ETV
  • Last Updated: Sep 01, 2016 05:45 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
گلبرگہ کے مسلم  اکثریتی علاقوں میں ڈ ینگو مچھر کے ڈنک کا شکار بن رہےعوام
گلبرگہ۔ گلبرگہ کے مسلم اکثریتی علاقوں میں ڈ ینگو کے معاملے سامنے آ رہے ہیں۔

گلبرگہ۔  گلبرگہ کے مسلم  اکثریتی علاقوں میں ڈ ینگو کے معاملے سامنے آ رہے ہیں۔ شہر کے مومن پورہ اور بلال آباد سے ڈینگو کے سات کیس رجسٹر کئے گئے ہیں۔ ان میں پانچ کا تعلق ایک ہی گھر سے ہے ۔ معاملے کی سنگینی کے پیش نظر محکمہ صحت  نے مومن پورہ اور بلا ل آباد کے متاثرہ عوام کا بلڈ اور یورین ٹیسٹ کرنے کیلئے ٹیمیں روانہ کر دی ہیں۔ ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر، گلبرگہ ڈاکٹر سجن شیٹی نے عوام کو ڈینگو کے تعلق سے محتاط رہنے اور اپنے آس پاس میں صفائی رکھنے کا مشورہ دیا ہے۔


 کسی گھر کے پانچ تو کسی میں دو، کسی میں ایک فرد بخار کا شکار ہے ۔ مسلم اکثریتی علاقوں مومن پورہ اور بلال آباد کے ہر گھر میں اس وقت بخار کے مریض موجود ہیں۔ ۔  گزشتہ دو چار دنوں میں  گلبرگہ شہر میں ڈینگو کے نو معاملے منظر عام پر آئے ہیں۔ ان میں دو متاثرین ابتدائی علاج کے بعد اب گھر پر ہیں جبکہ سات متاثرین ابھی بھی گلبرگہ کے بسویشور ہاسپٹل میں زیر علاج ہیں۔  یہ گلبرگہ کے بسویشور ہاسپٹل میں زیر علاج ہیں۔ وہیں متاثرین کے رشتہ دار،  گلبرگہ سرکاری ہسپتال میں ڈینگو کا علاج نہ ہونے کی بھی شکایت کر رہے  ہیں ۔ متاثرین کے رشتہ داروں کا کہنا ہے کہ ڈینگو کے دوران خون میں  پلیٹلیٹس  کی تعداد کم ہونے کا علاج کرنےکا  ایکئوپمنٹ نہ ہونے کا بہانہ بنا کر سرکاری ہسپتال کے ذمہ داران نے انھیں پرائیوٹ ہاسپٹل روانہ کر دیا۔


اس دوران ڈینگو کے معاملے منظر عام پر آتے ہی محکمہ صحت بھی چوکس ہو گیا۔ محکمہ صحت نے مومن پورہ اور بلال آباد کے لئے ٹیمیں روانہ کر دی ہیں اور  مشتبہ افراد کے بلڈ اور یورین کے  نمونے جمع کئے جا رہے ہیں۔  دوسری جانب  گلبرگہ ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر سجن شیٹی سرکاری ہسپتال میں سہولتیں نہ ہونے کے الزامات کو مسترد کر رہے  ہیں ۔ ساتھ ہی ساتھ ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ  ڈینگو کے متاثرین پرائیوٹ ہسپتالوں کا رخ کرنے کے بجائے سرکاری ہسپتال کا رخ کریں۔

First published: Sep 01, 2016 05:45 PM IST