ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

سات برس تک ہر روز نئے جوتے پہننے کا ریکارڈ، حیدرآباد کی اصفیہ قادری کو

سات برس تک ہر روز نئے جوتے پہننے کا ریکارڈ بنانے والی حیدرآباد کی اصفیہ قادری کو 18میڈلس اور 21اسنادپیش کئے گئے ۔

  • UNI
  • Last Updated: Jul 21, 2018 01:07 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سات برس تک ہر روز نئے جوتے پہننے کا ریکارڈ، حیدرآباد کی اصفیہ قادری کو
تصویر تیلنگانہ ٹوڈے

حیدرآباد: سات برس تک ہر روز نئے جوتے پہننے کا ریکارڈ بنانے والی حیدرآباد کی اصفیہ قادری کو 18میڈلس اور 21اسنادپیش کئے گئے ۔ساتھ ہی ان کے جوتوں کے ریکارڈ کلکشن کی نمائش بھی کی گئی۔ گولڈن بک آف ورلڈ ریکارڈس، ایشیاء بک آف ریکارڈس اورانڈیا بک آف ریکارڈس کی جانب سے اصفیہ قادری کو ان کے عالمی ریکارڈ کے لئے مختلف زمروں میں جملہ 18میڈلس اور 21توصیفی اسنادات سے نوازا گیا۔


اصفیہ قادری کے 1251 اسکولی جوتوں، موزوں اور متعلقہ اشیاء کی حیدرآباد کے مینار گارڈن میں نمائش کی گئی جس میں گولڈ بک آف ورلڈ ریکارڈ کے مسٹر منیش وشنوئی، ایشیا بک آف ریکارڈس اور انڈیا بک آف ریکارڈس کی مسز وسودا رانی، اسسٹ بک آف ریکارڈس کے ڈاکٹر سی ارون کے علاوہ باٹا انڈیا کے ریجنل منیجر مسٹر مرلی دھرن اور روزری کانونٹ اسکول کی پرنسپل سسٹر لنڈا نے شرکت کی۔ انہوں نے اپنی تقاریر میں اصفیہ قادری کے انوکھے اور منفرد ریکارڈس کے لئے انہیں اور ان کے ساتھ ان کے والدین ڈاکٹر علیم قادری اور عرشیہ علیم قادری کو مبارکباد پیش کی جنہوں نے نہ صرف اپنی ہونہار بیٹی کے لئے سات برس تک ہر روز ایک نئے جوتے موزے کے خریدنے کا اہتمام کیا بلکہ اس سے زیادہ ا ہمیت اس بات کی ہے کہ ہر خریدی کے بل سے لے کر اس کی پیاکنگ کے ساز و سامان تک 27برس سے سنبھال کر رکھا جو خود اپنی جگہ ایک ریکارڈ ہے۔



اس موقع پر ڈاکٹر اصفیہ قادری نے اپنی تقریر میں کہا کہ انہیں ملنے والے اعزازات کے لئے اللہ رب العزت اور اس کے بعد اپنے والدین کے شکر گذار ہیں۔ انہوں نے اس عزم کا ارادہ کیا کہ وہ اپنے آباء و اجداد کی طرح قوم و انسانیت کی خدمت کرتی رہیں گی۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ حیدرآباد کی اصفیہ قادری نے مسلسل 1251 دن تک ہر روز ایک نیا اسکول شو (جوتا) سفید موزے پہننے کا جو عالمی ریکارڈ قائم کیا تھا وہ 20برس سے برقرار ہے اور ابھی تک کسی نے اس ریکارڈ کو توڑنے کی کوشش نہیں کی۔ اصفیہ قادری جس نے روزری کانونٹ اسکول کی ایک طالبہ کے طور پر یہ ریکارڈ قائم کیا تھا اب ڈاکٹر ہیں‘ اور ایم ایس کے لئے کوشش کررہی ہیں۔

 
First published: Jul 21, 2018 12:53 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading