உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Hyderabad: کرمان گھاٹ میں تنازعہ، مویشیوں کی غیرقانونی منتقلی کےالزام میں سات افرادگرفتار

    سیاست ڈاٹ کام کے مطابق پولیس نے علاقے میں اضافی دستے بھیجے اور منگل کی رات حالات کو قابو میں کیا۔ علاقے میں ہڑتالی ٹیموں سمیت پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی ہے۔ عبادت گاہ پر حملے کی افواہیں سوشل میڈیا کے ذریعے پھیل گئیں جس سے کشیدگی بڑھ گئی۔

    سیاست ڈاٹ کام کے مطابق پولیس نے علاقے میں اضافی دستے بھیجے اور منگل کی رات حالات کو قابو میں کیا۔ علاقے میں ہڑتالی ٹیموں سمیت پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی ہے۔ عبادت گاہ پر حملے کی افواہیں سوشل میڈیا کے ذریعے پھیل گئیں جس سے کشیدگی بڑھ گئی۔

    سیاست ڈاٹ کام کے مطابق پولیس نے علاقے میں اضافی دستے بھیجے اور منگل کی رات حالات کو قابو میں کیا۔ علاقے میں ہڑتالی ٹیموں سمیت پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی ہے۔ عبادت گاہ پر حملے کی افواہیں سوشل میڈیا کے ذریعے پھیل گئیں جس سے کشیدگی بڑھ گئی۔

    • Share this:
      تلنگانہ پولیس (Telangana police) نے سات افراد کو گرفتار کیا جن پر تنازعہ اور مویشیوں کی غیر قانونی نقل و حمل کا الزام ہے جس سے کرمان گھاٹ میں فرقہ وارانہ کشیدگی پیدا ہوئی تھی۔ کچھ لوگوں کی جانب سے مویشیوں کی آمدورفت روکنے کی کوشش کے بعد علاقے میں کشیدگی پھیل گئی جس کے نتیجے میں دو گروپوں میں تصادم ہوگیا۔

      سیاست ڈاٹ کام کے مطابق پولیس نے علاقے میں اضافی دستے بھیجے اور منگل کی رات حالات کو قابو میں کیا۔ علاقے میں ہڑتالی ٹیموں سمیت پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی ہے۔ عبادت گاہ پر حملے کی افواہیں سوشل میڈیا کے ذریعے پھیل گئیں جس سے کشیدگی بڑھ گئی۔ سینئر پولیس افسران نے علاقے میں پہنچ کر ہجوم کو منتشر کیا، جو حملے کے بارے میں پیغامات ملنے کے بعد جمع ہوئے تھے۔


      تلنگانہ کے ڈی جی پی انجنی کمار (DGP Anjani Kumar ) نے دیگر افسران کے ساتھ کل رات جائزہ میٹنگ کی۔ پولیس کے پریس نوٹ میں ڈی جی پی کمار کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ یہ طے کیا گیا ہے کہ فرقہ وارانہ مجرموں اور ریاست میں فرقہ وارانہ صورتحال کو خراب کرنے کی کوشش کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ سی پی راچہ کونڈہ نے پہلے ہی اس سلسلے میں 5 مقدمات درج کیے ہیں اور بہت سے مجرموں کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

      اس میں کہا گیا ہے کہ کسی فرد یا گروہ کو قانون نافذ کرنے والے اداروں کو اپنے ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ یہ افراد یا گروہوں کی ذمہ داری ہے کہ اگر کوئی اطلاع آئے تو پولیس کو اطلاع دیں۔ پولیس فوری کارروائی کرے گی۔ ہسٹری شیٹ اور فرقہ وارانہ پرچہ قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کھولا جائے گا۔‘‘


      یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب نوجوانوں کے ایک گروپ نے 'گاؤ رکھشک' (گائے کے محافظ) ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے منگل کو یہاں مویشیوں کو لے جانے والے ٹرک کا پیچھا کرنے کی کوشش کی۔ کار میں سوار نوجوانوں نے الزام لگایا کہ ٹرک نے جان بوجھ کر ان کی گاڑی کو ٹکر ماری۔ دونوں گاڑیوں میں سوار افراد میں تصادم ہوا جس کے باعث صورتحال کشیدہ ہوگئی۔


      گاؤ رکھشکوں نے الزام لگایا کہ مویشیوں کو لے جانے والے لوگوں نے ان پر حملہ کیا۔ حملہ آوروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج کیا۔ کچھ شرپسندوں نے عبادت گاہ پر حملے کی افواہ پھیلائی۔ سینئر پولیس افسران نے علاقے میں پہنچ کر وہاں جمع ہونے والے ہجوم کو پرسکون کیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ صورتحال کو فوری طور پر قابو میں کر لیا گیا اور کسی ناخوشگوار واقعے کی اطلاع نہیں ملی۔

      کرمان گھاٹ میں پولیس پر گاؤ رکھشکوں کے پتھراؤ سے ایس آئی زخمی

      ونستھلی پورم پولیس اسٹیشن کے ایک سب انسپکٹر (ایس آئی) کو کرمان گھاٹ میں دائیں بازو کی بریگیڈ کے ارکان کی طرف سے پتھراؤ کے بعد اس کے سر میں شدید چوٹیں آئیں۔ کہا جاتا ہے کہ ایس آئی مادھوا ریڈی کے سر کو بے دردی سے مارا گیا تھا۔ حملے کے بعد پولیس اہلکار کو نیورو سرجری میں لے جایا گیا۔

      ایل بی نگر کے ڈی سی پی سنپریت سنگھ نے سیاست ڈاٹ کام کو بتایا کہ ریڈی فی الحال کامینی اسپتال میں زیر علاج ہیں اور ونستھلی پورم کے انسپکٹر کے ستیہ نارائنا کے بیانات کے مطابق ریڈی کو معمولی سرجری کے بعد چھٹی دے دی جائے گی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: