ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

یونیورسٹی آف حیدرآباد کے طلبہ کی بھوک ہڑتال جاری ، روہت کی والدہ کی طبیعت خرا ب ، اسپتال میں داخل

حیدرآباد: یونیورسٹی آف حیدرآباد میں دلت ریسرچ اسکالر روہت ویمولا کی خودکشی کے واقعہ پر مرکزی وزرا سمرتی ایرانی ، بنڈارو دتاتریہ اور وائس چانسلر اپا راؤ کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے طلبہ کا احتجاج جاری ہے۔ ان طلبہ نے روہت کے خاندان کو 50لاکھ روپئے معاوضہ دینے کا بھی مطالبہ کیا ۔

  • UNI
  • Last Updated: Jan 25, 2016 04:14 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
یونیورسٹی آف حیدرآباد کے طلبہ کی بھوک ہڑتال جاری ، روہت کی والدہ کی طبیعت خرا ب ، اسپتال میں داخل
حیدرآباد: یونیورسٹی آف حیدرآباد میں دلت ریسرچ اسکالر روہت ویمولا کی خودکشی کے واقعہ پر مرکزی وزرا سمرتی ایرانی ، بنڈارو دتاتریہ اور وائس چانسلر اپا راؤ کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے طلبہ کا احتجاج جاری ہے۔ ان طلبہ نے روہت کے خاندان کو 50لاکھ روپئے معاوضہ دینے کا بھی مطالبہ کیا ۔

حیدرآباد: یونیورسٹی آف حیدرآباد میں دلت ریسرچ اسکالر روہت ویمولا کی خودکشی کے واقعہ پر مرکزی وزرا سمرتی ایرانی ، بنڈارو دتاتریہ اور وائس چانسلر اپا راؤ کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے طلبہ کا احتجاج جاری ہے۔ ان طلبہ نے روہت کے خاندان کو 50لاکھ روپئے معاوضہ دینے کا بھی مطالبہ کیا ۔


مختلف شعبہ جات کے سات طلبہ کی بھوک ہڑتال دوسرے دن میں داخل ہوگئی ہے جنہوں نے روہت کے خاندان سے انصاف کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔ ان طلبہ نے الزام لگایا کہ ان کے ساتھ امتیاز کیا جارہا ہے ۔ اسی دوران ملک بھر سے طلبہ کی بڑی تعداد ان طلبہ سے یگانگت کے اظہار کیلئے یونیورسٹی آف حیدرآباد پہونچے ۔ یونیورسٹی میں پولیس کا سخت بندوبست کیا گیا تاکہ کوئی بھی ناگہانی واقعہ پیش نہ آئے ۔


دلت ریسرچ اسکالر روہت ویمولا کی خودکشی کے واقعہ کے خلاف طلبہ کے احتجاج کے دوران سینہ میں درد کی شکایت پر اسپتال میں کل داخل کرائی گئی روہت کی ماں کو ڈاکٹرس کی نگرانی میں رکھا گیا ہے ۔ کل انہیں احتجاجی کیمپ سے یونیورسٹی کے ہیلت سنٹر منتقل کیا گیا تھا ۔


ہیلتھ سنٹر کے ڈاکٹر رویندر کمار نے ان کی صحت کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ روہت کی ماں کے ای سی جی اور دوسرے طبی معائنے کرائے گئے ۔ وہ پہلے سے ہی ہائپرٹنشن اور بی پی کی مریض ہیں انہیں یونیورسٹی کے ہیلت سنٹر سے پرائیویٹ اسپتال منتقل کیا گیا جہاں آئی سی یو میں ڈاکٹرس کی نگرانی میں انہیں رکھا گیا ہے ۔


یونیورسٹیز کے طلبہ بھی پہنچے


احتجاجی طلبہ سے یگانگت کے اظہار کیلئے مختلف یونیورسٹیز کے طلبہ یونیورسٹی آف حیدرآباد پہونچے ۔ ان طلبہ نے ہاتھوں میں سیاہ جھنڈیاں اور پلے کارڈس لے کر حکومت کے خلاف نعرے لگائے اور خودکشی کرنے والے دلت اسکالر روہت ویمولا سے انصاف کا مطالبہ کیا ۔ بعض طلبہ نے شکایت کی کہ کیمپس میں جانے سے انہیں روکا جارہا ہے ۔ ان طلبہ نے وائس چانسلراپاراو کے چیمبر تک مارچ بھی کیا اور وارننگ دی کہ اپا راؤ کے خلاف کارروائی تک احتجاج جاری رہے گا ۔

First published: Jan 25, 2016 04:13 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading