உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia-Ukraine War: ہندوستانی یوکرائنی جوڑا کی قدرت نےکی اس طرح مدد، روسی حملےسے1دن پہلےحیدرآبادآمد!

    Youtube Video

    ہندوستان نے یوکرین میں پیدا ہونے والی فوری اور دباؤ والی انسانی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (UN Security Council) میں بتایا کہ اپنے شہریوں کو نکالنے کے علاوہ نئی دہلی یوکرین میں پھنسے پڑوسی اور ترقی پذیر ممالک کے لوگوں کی مدد کے لیے تیار ہے اور ان کی مدد کی ضرورت ہے۔

    • Share this:
      حیدرآباد کے ایک شخص نے یوکرین کی ایک عورت سے شادی کی اور وہ روسی حملے سے ایک دن پہلے ہی ملک چھوڑ کر ہندوستان میں اپنے شہر حیدرآباد کو واپس لوٹے تھا۔ انڈیا ٹوڈے کی ایک رپورٹ کے مطابق پرتیک اور لیوبوف (Prateek and Lyubov) ہندوستان میں اپنے استقبالیہ تقریب کے لیے یوکرین سے روانہ ہوئے۔ اس کے اگلے ہی دن یعنی 25 فروری 2022 سے روسی افواج کی جانب سے یوکرین پر حملہ شروع کیے گئے۔ اگلے دن روسی فوجوں نے ملک پر حملہ کر دیا۔

      تاہم اس خوش نصیب جوڑے نے جنگ کی وجہ سے اپنی شادی کی تقریبات کو متاثر نہیں ہونے دیا۔ حیدرآباد کے مشہور چلکور بالاجی مندر (Chilkur Balaji temple in Hyderabad) کے چیف پجاری سی ایس رنگراجن (CS Rangarajan) نے تقریب میں شرکت کی اور جوڑے کو آشیرواد دیا۔

      چیف پجاری سی ایس رنگراجن نے یہ بھی دعا کی کہ جنگ جلد ختم ہو اور امن بحال ہو۔ پجاری نے کہا کہ جنگ نے عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) سے دنیا پہلے ہی متاثر ہے۔ اس کے بعد اس جنگ نے تباہ حال دنیا میں خونریزی اور ہنگامہ آرائی کو بڑھاوا دیا ہے۔

      حیدرآباد کے ایک صحافی نے شادی کی ایک ویڈیو ٹویٹ کی اور یوں لکھا کہ جب یوکرین #RussianInvasion کی وجہ سے ٹوٹ رہا تھا، یہ ایک خوش کن کہانی ہے۔ لیوبوف کو حیدرآبادی پرتیک سے پیار ہو گیا اور یوکرین میں شادی کر لی۔ وہ جنگ سے عین قبل ولیمہ کے لیے ہندوستان روانہ ہوئے۔ چلکور بالاجی کے چیف پجاری رنگراجن نے جوڑے کو آشیرواد دیا اور #Ukraine میں امن کے لیے دعا کی۔

      واضح رہے کہ ہندوستان نے یوکرین میں پیدا ہونے والی فوری اور دباؤ والی انسانی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (UN Security Council) میں بتایا کہ اپنے شہریوں کو نکالنے کے علاوہ نئی دہلی یوکرین میں پھنسے پڑوسی اور ترقی پذیر ممالک کے لوگوں کی مدد کے لیے تیار ہے اور ان کی مدد کی ضرورت ہے۔


      روسی افواج کی جانب سے لگاتار حملوں کی وجہ سے یوکرین میں ایک فوری اور دباؤ والی انسانی صورتحال پیدا ہو رہی ہے۔ تنازعات کے ایسے وقت میں ہندوستان عام شہریوں بالخصوص خواتین، بچوں اور بوڑھوں کی حفاظت اور بہبود کو سب سے زیادہ ترجیح دیتا ہے۔ اقوام متحدہ کے سفیر میں ہندوستان کے مستقل نمائندے ٹی ایس ترومورتی نے پیر کو یوکرین میں انسانی صورتحال پر سلامتی کونسل کے اجلاس میں کہا کہ ہمارا خیال ہے کہ انسانی امداد کے بنیادی اصولوں کا مکمل احترام کیا جانا چاہیے۔

      ترومورتی نے یوکرین میں پھنسے ہزاروں ہندوستانی شہریوں بشمول طلبا کی حفاظت اور سلامتی کے لیے گہری تشویش کا اظہار کیا۔ ترومورتی نے کہا کہ ہماری انخلا کی کوششیں سرحدی کراسنگ پر زمینی ترقی سے بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: