உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سعودی عرب میں ہندستانی خاتون پر تشدد، خاتون کی موت، موت سے قبل سنائی تھی تشدد کی داستان

    حیدرآباد۔ سعودی عرب میں ایک 25 سالہ ہندستانی خاتون کی موت کا معاملہ سامنے آیا ہے۔

    حیدرآباد۔ سعودی عرب میں ایک 25 سالہ ہندستانی خاتون کی موت کا معاملہ سامنے آیا ہے۔

    حیدرآباد۔ سعودی عرب میں ایک 25 سالہ ہندستانی خاتون کی موت کا معاملہ سامنے آیا ہے۔

    • Share this:
      حیدرآباد۔ سعودی عرب میں ایک 25 سالہ ہندستانی خاتون کی موت کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ اسے جسمانی اذیت پہنچا کرمارا گیا ہے۔ ملی جانکاری کے مطابق خاتون کام کی تلاش میں سعودی عرب گئی تھی۔ عورت کی شناخت حیدرآباد کی رہنے والی عاصمہ خاتون کے طور پر ہوئی ہے جو سعودی میں نوکرانی کا کام کرتی تھی۔ خبروں کے مطابق اسے غیر قانونی طریقے سے ویزا ختم ہونے کے بعد بھی وہاں رکھا گیا تھا۔

      عاصمہ کے خاندان والوں نے دعوی کیا ہے کہ چند ہفتے پہلے ہی ان کی عاصمہ سے بات ہوئی تھی جس میں اس نے بتایا تھا کہ اسے جسمانی اور ذہنی طور پر پریشان کیا جا رہا ہے۔ اس نے گھر والوں سے اپنی واپسی کا انتظام کرنے کی فریاد کی تھی۔ عاصمہ کے ہی خاندان کے ایک رکن کا کہنا ہے کہ اس نے بتایا تھا کہ وہ جس کے گھر کام کرتی تھی وہ اسے ایک کمرے میں رکھتے تھے اور کھانے کو بھی کچھ نہیں دیتے تھے۔ عاصمہ نے کسی بھی قیمت پر اسے ملک واپس لانے کی بات کہی تھی۔ وہیں تلنگانہ  حکومت نے اس معاملے میں وزارت خارجہ کو خط لکھ  کرمعاملے میں دخل دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

      تلنگانہ پولیس نے سعودی حکام کو خط لکھ کر عاصمہ کی موت پر جواب مانگا ہے۔ انسپکٹر رمیش کا کہنا ہے کہ عاصمہ کام کے سلسلے میں وہاں گئی تھی۔ وہاں اس نے 4 ماہ تک کام کیا اس کے بعد وہاں کچھ صحت سے متعلق اسے پریشانی ہونے لگی تھی۔ انہوں نے کہا کہ ابھی ہم جواب کا انتظار کر رہے ہیں۔
      First published: