உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    E-Shram Card:کیا سچ میں فری ہے ای۔شرم کارڈ! جانیں اس کے فائدے

    یہ پورٹل غیر منظم محنت کشوں کا پہلا نیشنل ڈیٹا بیس ہے۔

    یہ پورٹل غیر منظم محنت کشوں کا پہلا نیشنل ڈیٹا بیس ہے۔

    16 سے 59 سال کی عمر کے درمیان کے محنت کش/مزدور ای شرم پورٹل پر اپنا رجسٹریشن کراسکتے ہیں۔ ای شرم پورٹل پر رجسٹریشن کرنے کے بعد مزدوروں کو ایک یونیورسل اکاونٹ نمبر (UAN) کارڈ حاصل ہوگا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: غیر منظم شعبوں کے محنت کشوں/مزدوروں کی ترقی کے لئے وزارت محنت و روزگار (Ministry of Labour and Employment)کی جانب سے 26 اگست،2021 کو ای شرم کارڈ (E-Shram Card) لانچ کیا گیا تھا۔ مرکزی حکومت غیر منظم شعبے کے 38 کروڑ محنت کشوں/مزدوروں کو ای شرم پورٹل (E-Shram Portal) کے ذریعے رجسٹر کرنا چاہتی ہے۔ حال ہی میں ای شرم پورٹل پر غیر منظم شعبے کے محنت کشوں کے رجسٹریشن کے اعدادوشمار 10 کروڑ کو پار کرگیا ہے۔ یہ پورٹل غیر منظم محنت کشوں کا پہلا نیشنل ڈیٹا بیس ہے۔

      کیسے کرسکتے ہیں رجسٹریشن؟
      16 سے 59 سال کی عمر کے درمیان کے محنت کش/مزدور ای شرم پورٹل پر اپنا رجسٹریشن کراسکتے ہیں۔ ای شرم پورٹل پر رجسٹریشن کرنے کے بعد مزدوروں کو ایک یونیورسل اکاونٹ نمبر (UAN) کارڈ حاصل ہوگا۔ ان رول کرنے کے لئے اُن کے پاس آدھار سے جڑا موبائل نمبر اور ایک بینک اکاونٹ ہونا چاہیے۔ جن کے پاس آدھار سے جڑا موبائل نمبر نہیں ہے، وہ نزدیکی کامن سروس سینٹر (CSC) میں بائیومیٹرک اتھنٹیکیشن کے ذریعے رجسٹریشن کرواسکتے ہیں۔

      ای شرم پورٹل پر رجسٹریشن کرانے والے محنت کشوں کو ایک ای شرم کارڈ جاری کیا جاتا ہے۔ ای شرم کارڈ پر یونیورسل اکاونٹ نمبر ہوتا ہے، جو پورے مل میں تسلیم شدہ ہے۔ اس کارڈ کی مدد سے محنت کش/مزدور ملک میں کہیں بھی اور کبھی بھی تمام سوشل سیکورٹی اسکیم کا فائدہ اُٹھا سکتے ہیں۔ eshram.gov.in کے مطابق، ای شرم کارڈ سبھی کے لئے فری ہے، حالانکہ کارڈ پر ڈیٹا اپ ڈیٹ کرنے کے لئے 20 روپے کا خرچ آئے گا۔

      رجسٹریشن سے ملتے ہیں یہ فائدے
      ای شرم کارڈ کی مدد سے محنت کشوں/مزدوروں کو ملک میں کہیں بھی اور کبھی بھی تمام سوشل سیکورٹی اسکیموں کا فائدہ مل سکتا ہے۔ کسی دیگر مقام پر جانے کی صورت میں بھی وہ سوشل سیکورٹی فائدے کے مستحق رہتے ہیں۔ رجسٹرڈ محنت کشوں/مزدوروں کی موت ہونے یا اُن کے ہمیشہ کے لئے معذور ہوجانے پر دو لاکھ روپے کی رقم دی جائے گی۔ عارضی طور پر معذور ہونے پر ایک لاکھ روپے کی رقم دی جائے گی۔


      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: