ہوم » نیوز » No Category

اے پی حکومت ریاست کو خصوصی درجہ دلانے میں ناکام:جگن

حیدرآباد۔ وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے سربراہ وائی ایس جگن موہن ریڈی نے آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ ‘ روزگار کے مواقع اور ریاست کی ترقی کے مسائل پر ضلع تروپتی میں ریلی سے خطاب کیا ۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 15, 2015 03:47 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اے پی حکومت ریاست کو خصوصی درجہ دلانے میں ناکام:جگن
حیدرآباد۔ وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے سربراہ وائی ایس جگن موہن ریڈی نے آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ ‘ روزگار کے مواقع اور ریاست کی ترقی کے مسائل پر ضلع تروپتی میں ریلی سے خطاب کیا ۔

حیدرآباد۔  وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے سربراہ وائی ایس جگن موہن ریڈی نے آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ ‘ روزگار کے مواقع اور ریاست کی ترقی کے مسائل پر ضلع تروپتی میں ریلی سے خطاب کیا ۔پی ایل آر کنونشن ہال میں منعقدہ اس ریلی میں ایس وی یونیورسٹی چتور کے علاوہ ریاست کے دیگر مقامات کے طلبہ کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔



یہ ریلی ایس وی یونیورسٹی تروپتی میں منعقد ہونے والی تھی تاہم حکام کی جانب سے اس کی اجازت نہ دینے پر اس کے مقام کو تبدیل کردیاگیا ۔ جگن نے اس ریلی سے خطاب کرتے ہوئے نوجوانوں پرزور دیا کہ وہ اے پی کو خصوصی درجہ دلانے کے لیے جدوجہد کریں ۔انہوں نے نوجوانوں کو مشورہ دیا کہ وہ تلگودیشم اور مرکز کو سبق سکھائیں۔انہوں نے کہاکہ حکومت اس ریلی کو روکنے کے لیے ایمرجنسی جیسی صورتحال پیداکرنے کی کوشش کر رہی تھی۔



انہوں نے کہاکہ اس یونیورسٹی میں ماضی میں تلگودیشم کے لیڈروں اور یہاں تک نریندرمودی کو بھی ریلیوں کی اجازت دی گئی تاہم یونیورسٹی میں ان کی پارٹی کی ریلی کی اجازت نہیں دی گئی ۔انہوں نے کہاکہ عوام وزیراعلی چندرابابو نائیڈو کی حرکتوں کو دیکھ رہے ہیں اور وہ مناسب وقت پر ان کی پارٹی کو سبق سکھائیں گے۔انہوں نے کہاکہ سال 2014میں تمام جماعتوں نے ریاست کی تقسیم کے لیے سازش کی تھی اور پارلیمنٹ میں اس پر گڑبڑدیکھی گئی تھی ہم نے اے پی کی تقسیم کی مخالفت کی تھی۔



انہوں نے کہاکہ اُس وقت کی حزب اختلاف بی جے پی اور تلگودیشم نے دس سال تک اے پی کوخصوصی درجہ دینے کا وعدہ کیا تھا تاہم وہ اب اس وعدے سے منحرف ہوگئے ہیں۔
انہوں نے سوال کیا کہ پارلیمنٹ میں کروائی گئی یقین دہانی کی کوئی اہمیت ہے بھی یا نہیں؟انہوں نے کہاکہ اے پی کو خصوصی درجہ کے لیے تلگودیشم مرکز پر دباو نہیں ڈال رہی ہے۔

انہوں نے سوال کیا کہ تلگودیشم پارٹی مرکز ی حکومت کی حمایت سے کیوں دستبردارنہیں ہورہی ہے؟انہوں نے الزام لگایا کہ نوٹ کے بدلے ووٹ معاملہ کے سبب چندرابابو نائیڈو خاموش ہیں۔



انہوں نے حکومت کی غلطیوں کی نشاندہی کی اور الزام لگایا کہ حکومت آندھراپردیش ریاست کو خصوصی ریاست کا درجہ دلانے میں ناکام ہوگئی ہے ۔قبل ازیں جگن کی آمد پر طلبہ تنظیموں اور پارٹی کے لیڈروں کی جانب سے ان کا شاندار استقبال کیا گیا ۔

First published: Sep 15, 2015 03:47 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading