ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک : ایک ہندو کی ٹیپو سلطان سے عقیدت و محبت ، جانئے کیا ہے حقیقت

واٹال ناگراج سابق ایم ایل اے، سوشل ایکٹویسٹ اور کنڑ تحریک کے ایک بڑے لیڈر ہیں۔ کنڑ زبان کے ساتھ ہونے والی ناانصافیوں، کرناٹک کے ساتھ ہونے والے امتیازی سلوک کے خلاف وقت وقت پر احتجاجی مظاہرے منعقد کرتے رہتے ہیں۔ کنڑی زبان کی نمائندہ شخصیت ہونے کے ساتھ ساتھ واٹال ناگراج ٹیپو سلطان کے بھی بڑے شیدائی ہیں۔

  • Share this:
کرناٹک : ایک ہندو کی ٹیپو سلطان سے عقیدت و محبت ، جانئے کیا ہے حقیقت
ایک ہندو کی ٹیپو سلطان سے عقیدت و محبت ، جانئے کیا ہے حقیقت

واٹال ناگراج سابق ایم ایل اے، سوشل ایکٹویسٹ اور کنڑ تحریک کے ایک بڑے لیڈر ہیں۔ کنڑ زبان کے ساتھ ہونے والی ناانصافیوں، کرناٹک کے ساتھ ہونے والے امتیازی سلوک کے خلاف وقت وقت پر احتجاجی مظاہرے منعقد کرتے رہتے ہیں۔ کنڑی زبان کی نمائندہ شخصیت ہونے کے ساتھ ساتھ واٹال ناگراج ٹیپو سلطان کے بھی بڑے شیدائی ہیں۔ گزشتہ 18 سالوں سے واٹال ناگراج پابندی کے ساتھ ٹیپو سلطان کا جنم دن مناتے آرہے ہیں ۔ ہرسال ماہ نومبر میں بنگلورو میں موجود ٹیپو سلطان سمر پیلیس کے روبرو تقریب منعقد کرتے ہوئے ٹیپو سلطان کو یاد کرتے ہیں ۔ اتنا ہی نہیں بنگلورو کے قریب واقع دیونہلی جو ٹیپو سلطان کی جائے پیدائش ہے ، وہاں پہنچ کر واٹال ناگراج شیر میسور ٹیپو سلطان کی نشانیوں پر گلہائے عقیدت پیش کرتے ہیں۔


ہمیشہ سر پر کالی ٹوپی پہننے والے واٹال ناگراج ٹیپو سلطان کی تصویر پر پوجا پاٹ کرتے ہوئے ٹیپو جینتی یعنی ٹیپو سلطان کا یوم پیدائش پوری عقیدت و محبت کے ساتھ مناتے ہوئے آرہے ہیں۔ بنگلورو کے خلاصی پالیہ علاقے میں ٹیپو سلطان کا لکڑی کا محل موجود ہے۔ موسم گرما میں جب بھی ٹیپو سلطان بنگلورو آتے تھے ، اس محل میں آرام کرتے تھے۔ اس لئے آج بھی اس لکڑی کے محل کو ٹیپو سمر پیلیس کے نام سے جانا جاتا ہے۔ 1791 میں تعمیر ٹیپو سلطان سمر پیلیس انڈو اسلامک طرز تعمیر کا ایک بہترین نمونہ ہے۔


واٹال ناگراج نے ٹیپو جینتی کو سرکاری سطح پر منسوخ کرنے کے موجودہ بی جے پی حکومت کے فیصلے پر افسوس کا اظہار کیا۔
واٹال ناگراج نے ٹیپو جینتی کو سرکاری سطح پر منسوخ کرنے کے موجودہ بی جے پی حکومت کے فیصلے پر افسوس کا اظہار کیا۔


واٹال ناگراج نے ہر سال کی طرح اس بار بھی ٹیپو سمر پیلیس کے روبرو تقریب منعقد کرتے ہوئے ٹیپو سلطان کی قربانیوں اور کارناموں پر روشنی ڈالی۔ واٹال ناگراج کہتے ہیں کہ شیر میسور ٹیپو سلطان ایک عظیم مجاہد وطن تھے۔ ریاست میسور اور ملک کی ترقی کیلئے کئی کارنامے انجام دئے۔ وطن کی حفاظت کیلئے انگریزوں کے ہاتھوں شہید ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ تاریخ کی اس عظیم شخصیت کو حکومتوں نے ہمیشہ نظر انداز کیا ہے۔ واٹال ناگراج نے کہا کہ ٹیپو سلطان کو کنڑ مخالف قرار دینا ایک نادانی ہے۔ انہوں نے کہا ٹیپو سلطان کے دور حکومت میں کنڑ زبان میں تحریر کئے گئے مکتوب آج بھی موجود ہیں۔

کنڑ تحریک کے لیڈر واٹال ناگراج نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا کہ ٹیپو سلطان کا مجسمہ پارلیمنٹ کے سامنے تعمیر کیا جائے۔ انہوں نے ریاستی حکومت سے مانگ کی ہے کہ دیونہلی میں موجود ٹیپو سلطان کی جائے پیدائش کو ایک بڑے سیاحتی مقام میں تبدیل کیا جائے۔ دیونہلی میں ٹیپو سلطان لائبریری اور ریسرچ سینٹر قائم کئے جائیں۔

واٹال ناگراج نے ٹیپو جینتی کو سرکاری سطح پر منسوخ کرنے کے موجودہ بی جے پی حکومت کے فیصلے پر افسوس کا اظہار کیا۔ واضح رہے کہ سابق وزیر اعلی سدارامیا نے اپنی حکومت کے دوران ٹیپو سلطان کا یوم پیدائش پہلی مرتبہ سرکاری سطح پر منانے کا سلسلہ شروع کیا تھا۔ اس کے بعد کمار سوامی کی مخلوط حکومت میں بھی یہ سلسلہ جاری رہا۔ لیکن یدی یورپا کی قیادت والی بی جے پی حکومت نے سرکاری سطح پر ٹیپو جینتی منائے جانے کو منسوخ کیا ہے۔ جس کے سبب گزشتہ دو سالوں سے کرناٹک میں حکومت کی سطح پر ٹیپو سلطان کی یاد میں کوئی تقریب منعقد نہیں ہورہی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Nov 30, 2020 09:25 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading