உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرناٹک انتخابات: سدارمیا نے مودی، امت شاہ اور یدی یورپا کو 100 کروڑ کے ہتک عزت کا نوٹس بھیجا

    فائل فوٹو

    کرناٹک کے وزیراعلیٰ سدارامیا نے بی جے پی ، وزیراعظم نریندر مودی اور بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ اور وزیراعلیٰ امیدوار بی ایس یدی یورپا کے خلاف 100 کروڑ روپئے کا ہتک عزت کا قانونی نوٹس بھیجا ہے۔

    • Share this:
      میسور: کرناٹک کے وزیراعلیٰ سدارامیا نے بی جے پی ، وزیراعظم نریندر مودی اور بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ اور وزیراعلیٰ امیدوار بی ایس یدی یورپا کے خلاف 100 کروڑ روپئے کا ہتک عزت کا قانونی نوٹس بھیجا ہے۔

      سدارمیا کا کہنا ہے کہ ان لوگوں نے جان بوجھ کر اور بری نیت سے ان کے خلاف غلط اور قابل اعتراض بیان دیا اور ان پر بدعنوانی کے جھوٹے الزامات لگائے۔

      سدارامیا نے اپنے ہتک عزت کے نوٹس میں وزیراعظم مودی کے 10 فیصد سرکار والے تبصرہ کا ذکر کیا ہے، جس میں وزیراعظم نریندر مودی نے کہاتھا کہ سدارمیا سرکار ریاستمیں کسی بھی کام کے لئے 10 فیصد کمیشن لیتی ہے۔ سدارمیا نے نوٹس میں کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی نے کرناٹک میں انتخابی تشہیر کے دوران اپنی تقریر میں کئی قابل توہین اور جھوٹے الزامات لگائے ہیں۔

      سدارمیا نے اپنے اس نوٹس میں %10 سرکار والے تبصرہ کے علاوہ مودی کی اس تقریر کا بھی ذکر کیا، جس میں انہوں نے کرناٹک سرکارپر ’از آف ڈوئنگ مرڈرس‘ کا الزام لگایا تھا۔

      سدارمیا نے مطالبہ کیا ہے کہ بی جے پی اور اس کے لیڈر الیکٹرانک، پرنٹ اور سوشل میڈیا وغیرہ کے ذریعہ عوامی طور پرمعافی مانگیں اور مستقبل میں اس طرح بیان دینے سے خود کو روکیں۔

      کرناٹک کے وزیراعلی نے اپنی قانونی نوٹس میں آگے کہا کہ اگر وزیراعظم نریندر مودی اوربی جے پی کے دوسرے لیڈر معافی نہیں مانگتے تو انہیں ہتک عزت کے روپئے میں 100 کروڑ روپئے دینا ہوگا۔

      واضح رہے کہ کرناٹک میں محض 5 دن بعد 12 مئی کو اسمبلی الیکشن ہونے ہیں۔ ریاست میں بی جے پی اور کانگریس دونوں جنگی پیمانے پر انتخابی تشہیر میں مصروف ہیں اور ایک دوسرے پر طرح طرح کے الزامات لگارہے ہیں۔

       

       
      First published: