اپنا ضلع منتخب کریں۔

    لڑکی کے ساتھ بس میں سفر کرنا پڑا بھاری، لڑکے کے ساتھ شرپسندوں نے کی یہ حرکت

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    میڈیا رپورٹ کے مطابق مقتول کی شناخت 20 سالہ سید راسیم عمر (Seyad Raseem Ummar) کے نام سے ہوئی ہے۔ ٹوئٹر پر شیئر کی گئی ایک ویڈیو میں اس شخص کو پولیس اسٹیشن کی طرف گھسیٹتے ہوئے دیکھا جا رہا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Karnataka | Mumbai | Jammu | Delhi | Lucknow
    • Share this:
      کرناٹک کے منگلورو کے نانتھور علاقے میں 24 نومبر کو لوگوں کے ایک گروپ نے ایک مسلمان شخص کو مبینہ طور پر ایک ہندو لڑکی کے ساتھ بس میں سفر کرنے پر پیٹا۔ ان پیٹا والوں کا تعلق مبینہ طور پر بجرنگ دل سے بتایا گیا ہے۔ سیاست ڈاٹ کام کے مطابق مقتول کی شناخت 20 سالہ سید راسیم عمر (Seyad Raseem Ummar) کے نام سے ہوئی ہے۔ ٹوئٹر پر شیئر کی گئی ایک ویڈیو میں اس شخص کو پولیس اسٹیشن کی طرف گھسیٹتے ہوئے دیکھا جا رہا ہے۔

      متاثرہ نے منگلورو ایسٹ پولس میں شکایت درج کرائی اور الزام لگایا کہ اسے بجرنگ دل کی جانب سے جان سے مارنے کی دھمکیاں ملی ہیں۔ تعزیرات ہند (آئی پی سی) کی مختلف دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا جس میں 323 (رضاکارانہ طور پر چوٹ پہنچانا)، 324 (خودکارانہ طور پر خطرناک ہتھیاروں کے ذریعہ چوٹ پہنچانا)، 504 (امن کی خلاف ورزی پر اکسانے کے ارادے سے جان بوجھ کر توہین کرنا) 506 (مجرمانہ دھمکی) اور 34 (مشترکہ مفاد کو نقصان) شامل ہیں۔



      یہ بھی پڑھیں: 


      بجرنگ دل کے کچھ ممبران خوشی مناتے ہوئے اور راسیم عمر کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کرتے نظر آ رہے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: