உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Bengaluru Heavy Rain: بارش سے بے حال بنگلورو، لیکن الیکٹرانک سٹی کو کیوں نہیں ہوا نقصان؟

    Bengaluru Heavy Rain: بارش سے بے حال بنگلورو، لیکن الیکٹرانک سٹی کو کیوں نہیں ہوا نقصان؟

    Bengaluru Heavy Rain: بارش سے بے حال بنگلورو، لیکن الیکٹرانک سٹی کو کیوں نہیں ہوا نقصان؟

    Bengaluru Heavy Rain: کرناٹک کی راجدھانی اور سلی کان سٹی بنگلورو میں ایک ہفتے سے بھاری بارش جاری ہے ۔ تین دن سے شہر بھر میں پانی بھرا ہوا ہے ۔ سڑکیں، اسکول، کالونیاں اور ہائی وے سب پانی میں ڈوبے ہیں ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Karnataka | Bangalore | Mysore
    • Share this:
      (روہنی سوامی کی رپورٹ)

      بنگلورو: کرناٹک کی راجدھانی اور سلی کان سٹی بنگلورو میں ایک ہفتے سے بھاری بارش جاری ہے ۔ تین دن سے شہر بھر میں پانی بھرا ہوا ہے ۔ سڑکیں، اسکول، کالونیاں اور ہائی وے سب پانی میں ڈوبے ہیں ۔ محکمہ موسمیات نے بنگلورو میں بارش کا ریڈ الرٹ جاری کیا ہے ۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ اگلے پانچ دنوں تک لگاتار بھاری بارش ہوسکتی ہے ، جس سے حالات مزید خراب ہونے کا اندیشہ ہے ۔ بارش میں بنگلورو کا آوٹر رنگ روڈ بری طرح سے متاثر ہے ۔

      آوٹر رنگ روڈ، جسے اب ڈاکٹر پنیت راج کمار روڈ کا نام دیا گیا ہے، شہر کا سب سے طویل ٹیکنالوجی کاریڈور ہے ۔ یہ 17 کلومیٹر سے زیادہ تک پھیلا ہے اور اچانک سیلاب کا مرکز بن گیا ہے ۔ مانیتا ٹیک پارک اور آر ایم زیڈ ایکو اسپیس جیسے آئی ٹی پارک جھیلوں کے قریب بنائے گئے ہیں ۔ کئی عمارتیں بھی جھیلوں کے بفر زون میں بنی ہیں، یہ سبھی بارش سے سب سے بری طرح متاثر ہیں ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : آزاد اور ان کی سیاسی پارٹی جموں و کشمیر کے سیاسی منظر نامہ پر کتنا ہوسکتی ہے اثر انداز؟


      انڈین انسٹی ٹیوٹ آف سائنس بنگلورو کے ذریعہ لینڈ یوز لینڈ کوور ڈائنیمکس پر ایک پیپر کے مطابق بنگلورو نے 1973 اور 2016 کے درمیان شہری تعمیر شدہ علاقہ میں 1005 فیصد کا اضافہ دیکھا ہے ۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ نئے آئی ٹی پارک ایک طرح کی زمین پر کھڑے ہیں، جس کا مطلب ہے کہ یہاں پانی کا بہاو رک رہا ہے اور ایسے میں سیلاب کا زیادہ خطرہ ہے ۔


      انفوسس کے سابق ڈائریکٹر موہن داس پئی بنگلورو میں کئی عوامی مسائل کو حل کرنے کیلئے سرگرمی سے کام کررہے ہیں ۔ انہوں نے بارش کے دوران پانی جمع  کی پریشانی کو ختم کرنے کا سب سے آسان طریقہ بتایا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں صرف نالیوں کو صاف رکھنا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: حجاب پر پابندی کیس: سپریم کورٹ کا تبصرہ: آپ اس کو غیرمنطقی انجام تک نہیں لے جاسکتے


      موہن داس پئی نے نیوز18 کو بتایا کہ الیکٹرانک سٹی کو ایسی پریشانیوں کا سامنا نہیں کرنا پڑتا ہے ، کیونکہ وہاں اچھی نالیاں ہیں ۔ ہم سبھی ( کمپنیاں) اپنے نالوں کی مستقل صفائی کراتے ہیں ۔ انفوسس اور دیگر ایسی کمپنیاں اس بات کو یقینی بناتی ہیں کہ دو کلو میٹر نالیوں کی صفائی کی جائے ۔ پہلے پانی جمع ہوجاتا تھا، لیکن اب یہ مستقل رکھ رکھاو کی وجہ سے گھنٹوں میں صاف ہوجاتا ہے ۔ انفوسس کے سابق سی ایف او نے شہر کے ملرس ٹینک بنڈ علاقہ میں 1986 کے سیلاب کا تذکرہ کیا ۔

      انہوں نے کہا کہ اس وقت کئی دفتروں میں پانی بھر گیا تھا، لیکن پانی طویل عرصہ تک نہیں رہا ، اس کو جلد سے نکالا گیا ۔ سرکار کو یہ یقینی بنانا چاہئے کہ سبھی نالوں کی مستقل طور پر صفائی کی جائے ۔ راج کالوے (طوفان کے پانی کی نالیاں) کو ان کی اصل سائز میں پھیلا جائے ۔ غیر قانونی تعمیر کو جنگ سطح پر ہٹایا جائے، تبھی چیزیں ٹھیک ہوپائیں گی ۔

      انگریزی میں اس خبر کو پورا پڑھنے کیلئے اس لنک پر کلک کریں ۔

      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: