உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Karnataka Budget 2022: کرناٹک بجٹ 23-2022 میں کیا رہاخاص؟ جانیے تفصیلات اور خاص جھلکیاں

    Youtube Video

    Karnataka Budget 2022 Details and Highlights: کرناٹک بجٹ 23-2022 میں سرکاری ہائی اسکولوں اور پی یو کالجوں میں فرنیچر کے لیے 100 کروڑ روپے مقرر کیے گئے ہیں۔ ریاست کے سرکاری اسکولوں میں بنیادی ڈھانچے کی ترقی کے لیے 500 کروڑ روپے مقرر وہیں دو سال میں 1000 گرام پنچایتوں کو مکمل طور پر گرام پنچایتوں میں تبدیل کیا جائے گا۔ ریاست بھر میں ڈیجیٹل لائبریریاں قائم کی جائیں گی۔

    • Share this:
      کرناٹک کا بجٹ 23-2022 (Karnataka Budget 2022-23) جمعہ 4 مارچ 2022 کو کرناٹک حکومت (Karnataka government) نے 2022 کے لیے اپنا بجٹ جاری کیا ہے۔ بجٹ کا حجم 2,65,720 کروڑ ہے۔ سی ایم بسواراج بومائی (CM Basavaraj Bommai) نے اسمبلی میں بجٹ پیش کیا۔ جس کے بعد اب ریاست بھر میں اس پر عمل آواری شروع ہوگی۔

      بجٹ 23-2022 کی جھلکیاں یہ ہیں:

      درمیانی درجے کسانوں کی مدد کے لیے رائتھا شکتی یوجنا (Raitha Shakthi Yojana) کو 500 کروڑ روپے کا فنڈ

      یلہنکاٹ یلہنکا کے قریب 350 ایکڑ پر مشتمل اٹل بہاری واجپائی پارک، بنگلورو میں سبز جگہ کو بڑھانے کے لیے مقرر

      بھیڑوں اور بکریوں کی حادثاتی موت کا معاوضہ 2500 روپے سے بڑھا کر 3500 روپے کیا جائے۔

      کرناٹک حکومت نے 100 نئے ویٹرنری اسپتال قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

      Telangana Budget 2022: تلنگانہ حکومت ’جمبو بجٹ‘ کی پیشگی کیلئے تیار، آخر کیا ہے خاص بات؟



      ریاست بینک میں 100 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری بھی کرے گی۔

      حکومت گاؤ شالوں کے لیے 50 کروڑ روپے بھی مختص کرتی ہے۔

      میکیڈاتو پروجیکٹ کے لیے 1000 کروڑ روپے کا فنڈ مقرر کیا گیا ہے۔

      پروجیکٹ سے متعلق کاموں کے لیے 3000 کروڑ روپے کا فنڈ مختص کیا گیا ہے۔

      تین لاکھ کسانوں کو 24,000 کروڑ روپے فارم لون کے طور پر ملے ہیں۔

      پشچیماواہنی پروجیکٹ کے پہلے مرحلے کے لیے 500 کروڑ روپے۔

      کھارلینڈ پروجیکٹ کے لیے 1500 کروڑ روپے مختص کیے گئے ہیں۔

      بنگلورو اربن، دیہی، تماکورو اور چکبالا پور اضلاع میں 234 جھیلیں بھری جائیں گی اس کے لیے 864 کروڑ روپے مختص کیے گئے ہیں۔

      Telangana Budget 2022: تلنگانہ میں گورنر کےخطاب کےبغیر بجٹ اجلاس پر تنازعہ، TRS اور BJP میں آپسی نوک چھوک



      کے سی ویلی پروجیکٹ کے دوسرے مرحلے کے لیے 455 کروڑ روپے کی منظوری دی گئی ہے۔

      سو بنیادی صحت کی دیکھ بھال کے مراکز کو بہتر بنانے کے لیے 1,000 کروڑ روپے۔ ڈاکٹر بی آر امبیڈکر ہاسٹل کے لیے 750 کروڑ روپے مقرر

      کناکداسا ہاسٹل کے لیے 165 کروڑ روپے طئے کیے گئے۔

      سرکاری ہائی اسکولوں اور پی یو کالجوں میں فرنیچر کے لیے 100 کروڑ روپے مقرر

      ریاست کے سرکاری اسکولوں میں بنیادی ڈھانچے کی ترقی کے لیے 500 کروڑ روپے مقرر

      دو سال میں 1000 گرام پنچایتوں کو مکمل طور پر گرام پنچایتوں میں تبدیل کیا جائے گا۔ ریاست بھر میں ڈیجیٹل لائبریریاں قائم کی جائیں گی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: