உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرناٹک : وزیراعلی سدارمیا نے پیش کیا سالانہ بجٹ ، اقلیتوں کو خوش کرنے کی بھرپور کوشش

    کرناٹک کے وزیراعلی سدارمیا نے آج ریاست کا سالانہ بجٹ پیش کیا۔ اسمبلی انتخابات کے پیش نظربجٹ کے ذریعہ کرناٹک کی کانگریس حکومت نے ہر طبقہ کو خوش کرنے کی کوشش کی ۔

    کرناٹک کے وزیراعلی سدارمیا نے آج ریاست کا سالانہ بجٹ پیش کیا۔ اسمبلی انتخابات کے پیش نظربجٹ کے ذریعہ کرناٹک کی کانگریس حکومت نے ہر طبقہ کو خوش کرنے کی کوشش کی ۔

    کرناٹک کے وزیراعلی سدارمیا نے آج ریاست کا سالانہ بجٹ پیش کیا۔ اسمبلی انتخابات کے پیش نظربجٹ کے ذریعہ کرناٹک کی کانگریس حکومت نے ہر طبقہ کو خوش کرنے کی کوشش کی ۔

    • ETV
    • Last Updated :
    • Share this:
      بنگلورو : کرناٹک کے وزیراعلی سدارمیا نے آج ریاست کا سالانہ بجٹ پیش کیا۔ اسمبلی انتخابات کے پیش نظربجٹ کے ذریعہ کرناٹک کی کانگریس حکومت نے ہر طبقہ کو خوش کرنے کی کوشش کی ۔ اقلیتوں کی فلاح وبہبودی کے لئے تقریبا تین ہزارکروڑروپئے بجٹ میں الاٹ کئے گئے ہیں جبکہ کرناٹک میں پچھلےسال اقلیتی محکمہ کیلئے ریاستی حکومت نے 2 ہزار750 کروڑ روپئے فراہم کئےتھے۔
      کرناٹک کے وزیراعلی سدا رمیا نے ریاست کی اسمبلی میں سال 2018-19 کا سالانہ بجٹ پیش کیا۔ وزیرخزانہ کی حیثیت سے سدارمیا کا یہ 13واں بجٹ اور وزیراعلی کی حیثیت سے پانچوں بجٹ تھا۔ اپنے بجٹ میں وزیراعلی نے زراعت اور تعلیمی ترقی کی جانب خاص توجہ دی ہے۔ وزیراعلی نے ریاست کے تمام طلبہ کو مفت بس پاس دینے، سرکاری کالجوں میں داخلے لینے والی لڑکیوں کی فیس معاف کرنے جیسے تعلیمی شعبہ میں کئی اعلانات بجٹ میں کئے ۔
      اقلیتی کارپوریشن کے ذریعہ چھوٹے تاجروں کوسبسیڈی لون کی نئی اسکیم کے لئے 30کروڑمختص کیا گیا ہے تو وہیں اقلیتی خواتین کوصنعتی میدان میں آگے لانے کیلئے15کروڑ کی اسٹارٹ اپ اسکیم کا اعلان کیا گیا ہے ۔ جبکہ عیسائی طبقہ کی ترقی کے لئے200کروڑاور جین اور سکھ طبقوں کی ترقی کیلئے 80 کروڑ روپئے مختص کیے گئے ہیں ۔
      دارالعلوم سبیل الرشاد میں ایوان اشرف کی تعمیر کیلئے10کروڑ اور کرناٹک کے امیرشریعت مرحوم اشرف علی کی یاد میں ایون اشرف کی تعمیرکا بھی اعلان کیاگیا ہے۔ مرحوم عزیزسیٹھ کی یاد میں میسور میں3 کروڑکی لاگت سے ایک میموریل ہال کی تعمیر ہوگی۔ مدرسہ ماڈرنائزیشن اسکیم کے لئے15کروڑ ، کرناٹک وقف کونسل کیلئے 20کروڑ فراہم کرنے کے ساتھ ہی 25 نئے مرارجی دیسائی رہائشی اسکول کا قیام عمل میں لایا جائے گا ۔
      بجٹ کے مطابق طلبہ کے لئے25 نئے ہاسٹل اور ملازمت پیشہ خواتین کیلئے 10نئے ہاسٹل تعمیر کئے جائیں گے۔ بی ایڈ اور ڈی ایڈ کورسوں کے طلبہ کو 25 ہزارروپئے کی مراعات اور وقف املاک کے تحفظ کیلئے15کروڑروپئے فراہم کرنے کا اعلان بھی بجٹ میں کیا گیا ۔ اقلیتوں کی کثیرتعداد والے علاقوں میں بنیادی سہولیات کی فراہمی کے لئے800 کروڑ روپئے رکھے گئے ہیں۔
      کرناٹک کے وزیراقلیتی بہبود اور اوقاف تنویرسیٹھ اور وزیرحج وشہری ترقیات آرروشن بیگ نےبجٹ پراطمینان کا اظہار کیا ہے۔
      First published: