ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

ناجائز تعلقات کا الزام لگاتا تھا شوہر ، نیند کی گولی کھلا کر بیوی نے بیٹے کے ساتھ مل کر کیا ایسا خوفناک کام، سبھی رہ گئے دنگ

رات میں محمد حنظلہ کو نیند کی 6 گولیاں دی گئیں۔ کھانے میں نیند کی گولیوں کی ملاوٹ کی گئی ، جس کے بعد حنظلہ بے ہوش ہوگیا ۔ بے ہوشی کے عالم میں اسے بیڈ روم میں لے جایا گیا ، جہاں تکیہ سے منہ دبا کر قتل کردیا گیا ۔

  • Share this:
ناجائز تعلقات کا الزام لگاتا تھا شوہر ، نیند کی گولی کھلا کر بیوی نے بیٹے کے ساتھ مل کر کیا ایسا خوفناک کام، سبھی رہ گئے دنگ
ناجائز تعلقات کا الزام لگاتا تھا شوہر ، نیند کی گولی کھلا کر بیوی نے بیٹے کے ساتھ مل کر کیا ایسا خوفناک کام، سبھی رہ گئے دنگ

بنگلورو کے راج گوپال نگر پولیس کو قتل کی ایک واردات کا پردہ فاش کرنے میں بڑی کامیابی ملی ہے ۔ پولیس نے ماں اور بیٹے سمیت 5 افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔ ان ملزمین نے قتل کے واقعہ کو خودکشی کا نام دینے کی ہر ممکن کوشش کی ، لیکن تفتیش کے بعد یہ بات صاف ہوئی کہ 52 سالہ محمد حنظلہ کی موت خود کشی سے  نہیں قتل کی وجہ سے ہوئی ہے۔ دراصل یہ دل دہلانے والا واقعہ 10 فروری 2021 کو بنگلورو کے ہیگن ہلی میں پیش آیا ہے ۔


سروری بیگم نے اپنے بیٹے شفیع الرحمن کے ساتھ مل کر شوہر محمد حنظلہ کے قتل کی سازش رچی تھی ۔ بتایا جارہا ہے کہ مقتول محمد حنظلہ اپنی بیوی پر ناجائز تعلقات رکھنے کا بار بار الزام لگاتا آرہا تھا۔ اس وجہ سے گھر میں شوہر اور بیوی کے درمیان  ہر ہمیشہ تکرار اور جھگڑا ہوتا تھا ۔ نیز چند اور گھریلو مسائل میاں بیوی میں ان بن کا سبب تھے۔ آخرکار بیوی سروری بیگم نے اپنے بیٹے کے ساتھ ملکر شوہر کا قصہ تمام کرنے کا فیصلہ کیا ۔ شوہر کے قتل کیلئے 4 لاکھ پانچ ہزار روپے کی سپاری دی۔ آفتاب، محمد سیف اور سید آویز پاشاہ کو قتل کی سپاری دی ۔


10 فروری کی رات محمد حنظلہ کو نیند کی 6 گولیاں دی گئیں۔ کھانے میں نیند کی گولیوں کی ملاوٹ کی گئی ، جس کے بعد محمد حنظلہ بے ہوش ہوگیا ۔ بے ہوشی کے عالم میں اسے بیڈ روم میں لے جایا گیا ، جہاں تکیہ سے منہ دبا کر قتل کیا گیا ۔ اس کے بعد سروری بیگم اور بیٹے شفیع الرحمن نے اپنے پڑوسیوں اور رشتہ داروں میں یہ خبر پھیلا دی کہ دل کا دورہ پڑنے سے محمد حنظلہ کی موت ہوئی ہے ۔ انہوں نے رشتہ داروں اور پڑوسیوں کو ساتھ لے کر راج گوپال نگر کے قبرستان میں تدفین کا بھی کام انجام دیا ۔


محمد حنظلہ کی تدفین کے چند دنوں بعد ایک شخص نے پولیس اسٹیشن پہنچ کر شکایت درج کرائی۔ شکایت کنندہ محمد حنظلہ کا رشتہ دار تھا ، جسے اس بات کا سراغ ملا کہ حنظلہ کی موت خود کشی سے نہیں قتل سے ہوئی ہے۔ آخرکار راج گوپال نگر پولیس نے شکایت قبول کرتے ہوئے تفتیش شروع کی۔ پولیس نے جائے واردات کا دورہ کیا اور سروری بیگم اور دیگر افراد سے پوچھ گچھ کی۔ آخر کار پولیس کو ٹھوس ثبوت ملنے شروع ہوئے ۔ پولیس کی تفتیش کے دوران سروری بیگم اور شفیع الرحمن نے اپنے جرم کا اقرار کیا ۔

اس پورے معاملہ میں پولیس نے محمد حنظلہ کی بیوی سروری بیگم بیٹے شفیع الرحمن، سپاری لیکر قتل کی کارروائی انجام دینے والے آفتاب، محمد سیف اور سید آویز پاشاہ کو 28 فروری اور یکم اپریل 2021 کو گرفتار کرلیا ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 02, 2021 11:47 PM IST