உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرناٹک اسمبلی انتخابات 2018 لائیو : حکومت سازی کیلئے جے ڈی ایس کو حمایت دے گی کانگریس

    بنگلورو۔ کرناٹک کی 224 رکنی اسمبلی میں سے 222 سیٹوں پر ہوئی ووٹنگ کے لئے ووٹوں کی گنتی کل صبح آٹھ بجے سے شروع ہو جائے گی۔

  • News18 Urdu
  • | May 15, 2018, 14:58 IST
    facebookTwitterLinkedin
    LAST UPDATED 4 YEARS AGO

    AUTO-REFRESH

    HIGHLIGHTS

    15:26 (IST)

    گوااور منی پور کے واقعات سے سبق لیتے ہوئے کانگریس نے کرناٹک اسمبلی انتخابات کے رجحانات کی بنیاد پر ہی جنتادل ایس کو نئی حکومت تشکیل دینے کے لئے حمایت کا اعلان کردیا۔ کانگریس جنرل سکریٹری غلام نبی آزاد نے آج یہاں یہ اعلان کرتے ہوئے کہا کہ جنتادل ایس کے رہنما ایچ ڈی دیوے گوڑا اور انکے بیٹے ایچ ڈی کمارسوامی کے ساتھ اس بارے میں ٹیلی فون پر بات چیت ہوئی ہے اورانھوں نے کانگریس کی طرف سے حمایت دینے کی تجویز قبول کرلی ہے ۔انھوں نے کہا کہ شام کودونوں پارٹیوں کے رہنما گورنر وجو بھائی والا سے ملکر ریاست میں نئی حکومت بنانے کا دعوی پیش کریں گے ۔

    14:57 (IST)

    سدا رمیا آج شام 4 بجے گورنر سے ملاقات کریں گے اور گورنر کو اپنا استعفی پیش کریں گے۔ 

    14:56 (IST)

    کانگریس نے جے ڈی ایس کو اپنی حمایت کرنے کا اعلان کردیا ہے ۔ کانگریس کا کہنا ہے کہ ریاست میں حکومت کی قیادت جے ڈی ایس کرے گی ۔ اس کا مطلب ہے کہ جے ڈی ایس کے وزیراعلی ہوں گے ۔ 

    14:11 (IST)

    بی جے پی کے سینئر لیڈر رام مادھو نے الزام لگایا ہے کہ ان کی پارٹی کی سابق حلیف تلگودیشم پارٹی کے صدر و آندھراپردیش کے وزیراعلی این چندرابابو نائیڈو نے کرناٹک کے تلگو رائے دہندوں کو بی جے پی کی حمایت سے روکنے کی کافی کوشش کی ۔ انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کرناٹک کے حیدرآباد کرناٹک خطہ میں جہاں لوگوں کی اکثریت تلگو زبان بولنے والوں کی ہے، میں بی جے پی کی نشستوں میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہاکہ عوام نے چندرابابونائیڈو کی سیاست کو مستردکردیا ہے۔انہوں نے واضح کیا کہ اس علاقہ میں بی جے پی کی چھ نشستیں تھیں جو اب 20سے زائد ہوگئی ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ بی جے پی نے ، جنوب کی سمت مارچ شروع کردیا ہے۔

    14:11 (IST)

    مرکزی وزیرداخلہ راج ناتھ سنگھ نے کرناٹک میں بی جے پی کی کامیابی کو وزیراعظم کی بصیرت انگیز ،حیران کن قیادت کی تصدیق اور پارٹی کے صدر امیت شاہ کی تنظیمی صلاحیت اورفراست قرار دیا ۔ انہوں نے جنوبی ہند کی اس ریاست میں پارٹی کی کامیابی پر دونوں کو اپنے ٹوئیٹ کے ذریعہ مبارکباد پیش کی۔انہوں نے ساتھ ہی بی جے پی کے کارکنوں کی سخت محنت پر بھی مبارکباد دی جنہوں نے کرناٹک میں اس غیرمعمولی کامیابی کے لئے بے تکان کام کیا۔انہوں نے ریاست کے عوام کا بھی شکریہ اد کیا

    14:10 (IST)

    کانگریس کے یو ٹی عبد القادر نے منگلور اسمبلی حلقہ سے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے سنتوش کمار رائے بوليارو کو 19739 ووٹوں سے شکست دی۔کانگریس نے یہ سیٹ برقرار رکھی۔ کانگریس امیدوار کو 80813 جبکہ بی جے پی امیدوار کو 61074 ووٹ ملے۔

    14:8 (IST)
    14:3 (IST)
    13:40 (IST)

    کرناٹک کے تازہ نتائج اور رجحانات سے معلق اسمبلی کے آثار نظر آرہے ہیں۔ موجودہ رحجان ایسا ہی رہا تو بی جے پی کو حکومت بنانے کیلئے جے ڈی ایس کی حمایت کی ضرورت پڑے گی ۔ حالانکہ جے ڈی ایس سپریمو دیوے گوڑا انتخابی نتائج پر قریبی نظر رکھے ہوئے ہیں۔ ان سے جب مستقبل کے قدم کو لے کر سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ حتمی نتائج کے بعد ہی فیصلہ کروں گا۔ 

    13:35 (IST)

    کرناٹک میں بی جے پی واضح اکثریت کے اعدادو شمار سے تھوڑی دور ہوتی ہوئی نظر آرہی ہے ۔ یہاں بی جے پی فی الحال 61سیٹیں جیت چکی ہے جبکہ 44پر آگے چل رہی ہے ۔ اس طرح اس کے کھاتے میں 105 سیٹیں جاتی ہوئی نظر آرہی ہیں ۔ جبکہ کانگریس کے کھاتے میں 76 اور جے ڈی ایس کے کھاتے میں 39 سیٹیں جاتی ہوئی نظر آرہی ہیں۔ 


    بنگلورو۔ کرناٹک کی 224 رکنی اسمبلی میں سے 222 سیٹوں پر ہوئی ووٹنگ کے لئے ووٹوں کی گنتی ہورہی ہے۔ اب تک کے رجحانات کے مطابق بی جے پی کی جیت تقریبا طے ہے جبکہ کانگریس کافی پچھڑتی ہوئی نظر آرہی ہے۔ خیال رہے کہ کرناٹک میں گزشتہ 12 مئی کو پولنگ ہوئی تھی۔ ووٹوں کی گنتی کے لئے سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔

    الیکشن کمیشن کے مطابق، 12 مئی کو ہوئی ووٹنگ میں 70 فیصد سے بھی زیادہ لوگوں نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا تھا۔ تمام نیوز چینلوں اور دیگر سروے ایجنسیوں نے کرناٹک الیکشن پر اپنا ایگزٹ پول پیش کیا تھا ۔ تاہم ایک مرتبہ پھر وہ ناکام رہے ، کیونکہ سبھی پول  پر نظر ڈالیں تواکثریت کے اعدادو شمار 112 سیٹ تک نہ تو کانگریس اور نہ ہی بی جے پی پہنچتی نظر آ رہی تھی ، مگر نتائج اور رجحانات کی بات کریں تو بی جے پی اکثریت تک پہنچتی ہوئی نظر آرہ ہے ۔

    کرناٹک انتخابات سے متعلق لائیو اپ ڈیٹس کیلئے ہمارے سے جڑے رہیں۔