ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک انتخابات: ریڈی برادران کی وجہ سے امت شاہ نے منسوخ کی بلّاری کی ریلی

بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ نے ریڈی برادران کی وجہ سے جمعہ کو بلاری ضلع کے اپنے مقررہ دورہ کو منسوخ کردیا۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
کرناٹک انتخابات: ریڈی برادران کی وجہ سے امت شاہ نے منسوخ کی بلّاری کی ریلی
بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ نے ریڈی برادران کی وجہ سے جمعہ کو بلاری ضلع کے اپنے مقررہ دورہ کو منسوخ کردیا۔

میسور: بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ نے جمعہ کو بلاری ضلع کے اپنے مقررہ دورہ کو منسوخ کردیا۔  ذرائع کے مطابق امت شاہ کانکنی مافیا ریڈی  برادران کے ساتھ اسٹیج شیئر نہیں کرنا چاہتے ہیں۔ واضح رہے کہ ریڈی برادران اور ان کے خاص متعلقین کے سات لوگوں کو بی جے پی نے ٹکٹ دیا ہے۔ پارٹی کے اس فیصلے سے بی جے پی کے کئی لیڈر ناراض ہوگئے ہیں۔


ریڈری برادران پر بی جے پی کے ریاستی صدر اور پارٹی کے وزیراعلیٰ عہدہ کے امیدوار بی ایس یدی یورپا کے بیان نے آگ میں گھی ڈالنے کاکام کیا ہے۔ انہوں نے گزشتہ دنوں کہا تھا کہ ریاست کے مفاد میں انہوں نے ریڈی برادران کو معاف کردیا ہے۔ سدارمیا نے یدی یورپا کے اس بیان پر سخت حملہ کیا ہے۔ انہوں نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کئی سوال اٹھائے ہیں۔


کانکنی مافیا کے ماسٹر مائنڈ جناردن ریڈی سینٹرل کرناٹک میں بی جے پی کی انتخابی تشہیر کی قیادت کررہے ہیں، ایسے میں بدعنوانی کے موضوع پر الیکشن لڑ رہی بی جے پی کو زبردست نقصان اٹھانا پڑ سکتاہے جبکہ کانگریس کو اس کا فائدہ ہورہا ہے۔


نیوز 18سے بات کرتے ہوئے سدارمیا نے کہا "ریڈی برادران کرناٹک کی تاریخ میں سب سے بڑے مجرم ہیں۔ بی جے پی نے انہیں پھر سے گلے لگا لیا ہے، ان کے 7 لوگوں کو بی جے پی نے ٹکٹ دیا ہے۔ یدی یورپا کے اپنے بیٹے کو ٹکٹ نہیں ملا ہے، یعنی کوئی آسانی سے سمجھ سکتا ہے کہ اگر بی جے پی اقتدار میں آتی ہے تو ریاست میں ریڈی برادران ہی اقتدار پر قابض رہیں گے، یہ ایک اور بات ہے کہ بی جے پی کبھی کرناٹک میں اقتدارمیں نہیں آئے گی"۔

وزیراعلیٰ  سدارمیا کو جواب دیتے ہوئے یدی یورپا نے کہا "جناردن ریڈی کو چھوڑ کر باقی ریڈی برادران ہمارے ساتھ ہیں۔ جناردن نے اسمبلی انتخابات کے لئے کوئی ٹکٹ نہیں مانگا ہے اور ہم ٹکٹ نہیں دے رہے ہیں۔ وہ بلاری اور کچھ دیگر اضلاع میں مدد کرنے جارہے ہیں، جہاں ہم جناردن کی وجہ سے آسانی سے 20-15 سیٹیں جیت سکتے ہیں، لوگ خوش ہیں کہ وہ ہماری حمایت کررہے ہیں"۔

حیران کرنے والی بات یہ ہے کہ کچھ ہفتہ قبل امت شاہ نے عوامی طور پر کہا تھا کہ ان کی پارٹی کا ریڈی برادران سے کوئی لینا دینا نہیں ہے، لیکن پھر بھی پارٹی کی طرف سے جاری کی گئی امیدواروں کی فہرست میں ریڈی برادران میں سے سب سے بڑی جی کروناکر ریڈی کو پارٹی نے ہراپن ہلّی سیٹ سے انتخابی میدان میں اتار دیا ہے، اس کے علاوہ ریڈی برادران کے کاروباریوں میں بی شری راملو (مولاکلمرو سیٹ) جی سوم شیکھر ریڈی (بلّاری سٹی سیٹ) ، شری راملو کے رشتہ دار سنا پکیرپا (بلاری رورل سیٹ) اور ٹی ایچ سریش بابو (کنپلی سیٹ) کو بھی ٹکٹ دیئے گئے ہیں۔ اتنا ہی نہیں بی جے پی نے ایکٹر اور جناردن ریڈی کے قر یبی سائی کمار کو بھی باگے پلّی سے ٹکٹ دیا ہے۔

جناردن ریڈی نے کہا ہے کہ وہ بادامی میں سدارمیا کے خلاف انتخابی تشہیر کریں گے۔ یہاں سے بی شری راملو بی جے پی کے امیدوار ہیں۔ مقامی بی جے پی لیڈروں کو خوف ہے کہ ریڈی کے تشہیر کرنے سے انہیں نقصان ہوسکتا ہے۔ کانگریس صدر راہل گاندھی نے بھی ریڈی برادران کو لے کر بی جے پی پر تنقید کی ہے۔

 

 

 
First published: Apr 27, 2018 04:01 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading